19 دسمبر 2018
تازہ ترین

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان ہمیشہ کے لیے بدلنے والا ہے اور ہمارا مقصد ملک کو ایک حقیقی فلاحی ریاست بنانا ہے۔عمران خان سے ڈیرہ غازی خان ڈویژن سے تعلق رکھنے والے پاکستان تحریک انصاف کے ممبران قومی اسمبلی کی وزیراعظم آفس میں ملاقات کی۔ ممبران قومی اسمبلی نے وزیراعظم کو اپنے حلقوں میں عوامی مسائل،جنگلات و زراعت کی ترقی اور فلاحی و ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے آگاہ کیا۔ارکان قومی اسمبلی کا عمران خان کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وزیراعظم کی مخلص اور دیانتدار قیادت میں ملک ترقی اور خوشحالی کی طرف گامزن ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کی پسماندگی دور کرنے اور وہاں ترقی و خوشحالی کا سفر شروع کرنے کے لیے جو وژن وزیراعظم نے دیا ہے پہلے کسی حکومت نے نہیں دیا جس کے لیے ہم وزیراعظم کے تہہ دل سے مشکور ہیں۔ ملاقات میں جنوبی پنجاب میں انتظامی خود مختاری کے امور کے حوالے سے پیشرفت کا جائزہ لیا گیا اور وزیراعظم نے جنوبی پنجاب کے حوالہ سے اپنے روڈ میپ کی تکمیل کے عزم کا اعادہ کیا۔ اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا اظہار خیال کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان ہمیشہ کے لیے بدلنے والا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد پاکستان کو حقیقی فلاحی ریاست بنانا ہے جس میں نچلے طبقے کو اوپر لایا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اللہ تعالی نے ہمیں قدرتی و معدنی وسائل سے مالا مال کیا ہے لیکن بدقسمتی سے ماضی میں ملک کی ترقی اور وسائل کو بروئے کار لانے کی کوئی کوشش نہیں کی گئی۔وزیراعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت جنوبی پنجاب کو ترقی یافتہ بنانے کے لیے پُر عزم ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ جنوبی پنجاب کے عوام نے پاکستان تحریک انصاف کے نظریے پر 2018 کے الیکشن میں بھرپور اعتماد کا اظہار کیا، انشاءاللہ جنوبی پنجاب ایک ترقی یافتہ خطہ بنے گا۔ ملاقات میں ممبران قومی اسمبلی کے حلقوں میں ترقیاتی منصوبوں اور عوامی مسائل کے فوری حل کے لیے وزیراعظم آفس میں سینئر افسر کے تحت پبلک افیئرز ونگ کو فعال بنانے کا فیصلہ کیا گیا جو صوبوں سے بھی مستقل رابطے میں ہو گا۔ملاقات میں اس بات کا بھی فیصلہ کیا گیا کہ ڈویژنل سطح پر ارکان قومی اسمبلی کی کمیٹی تشکیل دی جائے گی جو عوامی مسائل کا مقامی قیادت کی مشاورت اور صوبائی حکومت کے تعاون سے حل یقینی بنائے گی  

مزید پڑھیں
ویڈیوز

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟