18 اگست 2018

 عمران خان نے پاکستان کے 22 ویں وزیراعظم کے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔ ایوان صدر میں ہونے والی تقریب حلف برداری سے پہلے قومی ترانہ بجایا گیا، جس کے بعد کابینہ سکریٹری نے صدر مملکت سے تقریب شروع کرنے کی اجازت طلب کی۔ تقریب حلف برداری کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ جس کے بعد صدر مملکت ممنون حسین نے عمران خان سے وزیراعظم کے عہدے کا حلف لیا۔ حلف برداری کے بعد وزیراعظم عمران خان نے حلف کی دستاویز پر دستخط کئے۔ تقریب کے بعد نو منتخب وزیراعظم کو وزیراعظم ہائوس میں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ گارڈ آف آنر کے بعد عمران خان نے سٹاف سے مصافحہ کیا۔ واضح رہے کہ عمران خان نے وزیراعظم ہائوس میں نہ رہنے کا فیصلہ کیا ہے، وہ وزیراعظم ہائوس کی کالونی میں واقع ملٹری سیکریٹری کے ایک چھوٹے مکان میں رہیں گے۔ وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں ان کی اہلیہ خاتون اول بشریٰ بی بی بھی ایوان صدر آئیں۔ تقریب حلف برداری میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر حیات، سپیکر اور ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی، چیئرمین سینیٹ، پی ٹی آئی رہنما شاہ محمود قریشی، جہانگیر ترین، نعیم الحق، مراد سعید، ابرار الحق اور دیگر اہم سیاسی شخصیات نے بھی شرکت کی۔ عمران خان کی تقریب حلف برداری میں 1992 کا ورلڈ کپ جیتنے والی قومی ٹیم کے ہیروز، سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو، سابق کرکٹر وسیم اکرم اور اداکار جاوید شیخ بھی شریک ہوئے۔ تقریب سے قبل آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو نے ایک دوسرے سے مصافحہ کیا اور گلے بھی ملے۔ واضح رہے کہ نوجوت سنگھ سدھو عمران خان کی حلف برداری کی تقریب میں خصوصی طور پر بھارت سے پاکستان تشریف لائے ہیں۔ خیال رہے کہ ملک بھر میں 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف سب سے بڑی جماعت بن کر سامنے آئی۔ گزشتہ روز پاکستان کے 22 ویں وزیراعظم کے لئے قومی اسمبلی میں ہونے والے انتخابات میں عمران خان 176 ووٹ لے کر قائد ایوان منتخب ہوئے۔

مزید پڑھیں
ویڈیوز

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟