04 جولائی 2020

اہور(خبرنگار)دی یونیورسٹی آف لاہور نے پاکستان کی پہلی تھرڈ جنریشن کوویڈ 19پی سی آر کٹ تیارکرلی ہے۔ اس کٹ کی مدد سے کرونا وائرس کی درست تشخیص کی جاسکے گی۔ تھرڈ جنریشن کوویڈ 19پی سی آر کٹ رواں ماہ کے آخر تک مارکیٹ میں دستیاب ہوگی۔ چیئرمین بورڈ آف گورنرز دی یونیورسٹی آف لاہور اویس رﺅف کا تھرڈ جنریشن کوویڈ 19پی سی آر کٹ کی تیاری پر کہنا ہے کہ دی یونیورسٹی آف لاہور کی تیار کی گئی کٹ سے 3جینز ٹارگٹ ہوں گی جبکہ اس سے پہلے موجود کٹس میں 2جینز ٹارگٹ استعمال کیاجاتا تھا۔ اس کے متعلق دیگر لیبارٹریز سے بھی فیڈ بیک لیا جائے گا۔ یہ پاکستان کی پہلی تھرڈ جنریشن کوویڈ 19پی سی آر کٹ ہے جو بین الاقوامی معیار پرپورا اترے گی۔ دی یونیورسٹی آف لاہورکی اپنی بھی پی سی آر لیب ہے جبکہ دیگر لیب کے ساتھ اس کٹ پر ٹرائل کیے جارہے ہیں، جو اسی مہینے میں مکمل ہوجائیں گے۔دی یونیورسٹی آف لاہور کرونا وائرس سے صحت مند ہونے والے افراد کا پلازما لینے کی بجائے صرف اینٹی باڈیز کو الگ کرے گی اس سے نقصانات نہ ہونے کے برابر ہوں گے۔ مریض کے اندر ایک سرنج کے برابر اینٹی باڈیز داخل کیے جائیں گے جس سے اس کی ریکوری کا بہت زیادہ امکان ہے۔ علاوہ ازیں دی یونیورسٹی آف لاہور کرونا وائرس کی تشخیص کے لئے مکمل پیکیج بھی فراہم کررہی ہے۔ جس میں وائرس کی سمپلنگ کا طریقہ کار، وائرس کا آر این اے نکالنا اور اس کی تشخیص شامل ہے۔

مزید پڑھیں
ویڈیوز

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟