news title here

 پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف نے کہا ہے کہ راہزنوں سے سوال ہی نہیں کیا گیا تب ہی ملک میں بار بار جمہوریت پٹری سے اترتی رہی کیا کبھی پرویز مشرف کو کٹہرے میں لایا گیا؟ کوئی عدالتی فیصلہ میرا اور عوام کا تعلق نہیں توڑ سکتا منتخب نمائندوں کے ساتھ کیا ہوتا رہا اور آئین لوٹنے والوں کے ساتھ کیا ہوا، ان سوالات کے جواب جج ہی دے سکتے ہیں  مائنس نوازشریف کہنے والے سن لیں نوازشریف ایک نظرئیے کا نام ہےیہی نظریہ میں پاکستان میں انقلابی تبدیلی لیکر آئےگا انمول ہیروں سے بنائی گئی جے آئی ٹی کی حقیقت ایک دن سب کے سامنے آجائے گی موت سے ڈرتا ہوں نہ ہی جیل سے پاکستانیوں کی آنے والی نسلوں کے بہتر مستقبل کےلئے آخری سانس تک خدمت کرتے رہیں گےاربوں درخت لگانے والے اربوں کھاگئے  عوام حسا ب لینگے ۔اتوار کو  جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نے کہا کہ مجھے 2013یاد آرہا ہے یہی جذبہ تھا کس منہ سے آپ کا شکریہ ادا کروں  آپ کی محبت کےلئے بڑا احسان مند ہوں  آپ کی محبت ثابت کرتی ہے کہ نوازشریف اور ایبٹ آباد کے عوام کا گہرا رشتہ اور تعلق ہے انشا اللہ اس تعلق کو کوئی چھین نہیں سکتا  کوئی عدالتی فیصلہ اس تعلق کو نہیں توڑ سکتا  نواز شریف تب بھی بھائی اور دوست تھا آج بھی دوست ہے  ایبٹ آباد کے عوام نوازشریف کے جگری دوست ہیں  بھائی ہیں ۔نواز شریف نے کہاکہ میں 2013 میں کچھ وعدے کئے تھے  یہی جذبہ تھا  یہی لوگ تھے،ملک میں دہشتگردی کی انتہاتھی  دہشتگردی ہر جگہ پر عام تھی لوگ روزانہ شہید ہوتے تھے اللہ کے کرم وفضل سے لوڈشیڈنگ سب کو خدا حافظ کہہ رہی ہے  ملک میں دہشتگردی ختم ہورہی ہے پاکستان ترقی کی منزلیں طے کررہا ہے انہوں نے کہا کہ میں نے وعدہ نہیں کیا تھاکہ موٹر وے بنائونگا لیکن میں نے آپ کی محبت میں ہزارہ موٹر بنانے کا اعلان کیا  چند ہفتو ں تک حویلیاں تک موٹر وے مکمل ہو نے والی ہے نوازشریف وزیر اعظم نہیں ہے لیکن موٹروے انشا اللہ مکمل ہو جائیگی حویلیاں سے ایبٹ آباد موٹر وے آرہی ہے  ٹنل بن رہے ہیں سرنگیں بن رہی ہیں اورانشا اللہ  چھ لائن موٹروے مانسہرہ جائیگی  پشاور سے کراچی تک چھ لائن انشا اللہ مکمل ہو رہی ہے  ہم نے پاکستان کے عوام کی خوشحالی کےلئے بے پناہ کام کیا ہے ۔ایبٹ آباد کے سب لوگ ایک نظرئیے کا نام ہے اور انشا اللہ یہ نظریہ پاکستان میں انقلابی تبدیلی لیکر آئےگا ایبٹ آباد کے عوام میرے ساتھ قدم سے قدم ملا کرچلیں گے انہوں نے کہاکہ ہم ایک طرف ترقی اور خوشحال کے کاموں لگے ہوئے تھے دوسری طرف دھرنے  جلوس تھے گالیاں تھیں الزامات تھے  سڑکوں پر تماشے تھے جس میں کے پی کے کی حکومت والوں کا سربراہ تھا اور ان کے ساتھ طاہر القادربھی تھا ۔انہوںنے کہاکہ نوازشریف ہارنے والا نہیں ہے  انشا اللہ آپ کو نہیں چھوڑونگاآپ کا وعدہ ہے آپ نواز شریف کو نہیں چھوڑینگے ۔انہوں نے کہاکہ آپ کے سامنے پاناما کا سب سے بڑا تماشا لگا  جس درخواست کو پہلے فضول سمجھ کر فارغ کیا گیا بعد میں اس کو مقدس سمجھ کر مقرر کر لیا گیا  مجھے اور میرے خاندان کو کٹہرے میں کھڑا کر دیا گیا اور اس کےلئے بڑے انمول ہیرے تلاش کئے گئے ان پر مبنی ایک جے آئی ٹی بنائی گئی جس کے سامنے میں بھی پیش ہوا  جس کے سامنے مریم نواز شریف بھی پیش ہوئیں حسن حسین نواز پیش ہوئے  جے آئی ٹی کی پوری کہانی کسی دن قوم کے سامنے آ جائیگی ۔انہوں نے کہاکہ دنیا بھر کے سیر سپاٹے کے باوجود نوازشریف کےخلاف ایک پائی کی کرپشن کا کوئی الزام نہیں لگاایک ڈھیلے کی کرپشن کا کوئی الزام نہیں لگا جب ساری کوششیں ناکام ہوگئیں تو کہا گیا کہ نوازشریف نے اپنے بیٹے سے تنخواہ نہیں لی لہذا نواز شریف تم نا اہل قرار دیئے جاتے ہو انہوںنے کہاکہ میں نے فیصلے پر عمل کر نے میں کوئی دیر نہیں کی وزارت عظمیٰ کا عہدہ چھوڑ کر گھر آگیاکیا آپ نے یہ فیصلہ تسلیم کیا ہے ؟ جس پر جلسے میں شریریک لوگوں نے نہیں میں جواب دیا ۔نوازشریف نے کہا کہ  پاکستان کے عوام بھی فیصلہ سن لیں  منتخب ووزیر اعظم کو اٹھا کر باہر پھینک دیا گیاٖیہ کرپشن پر نہیں بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر باہر کیا ۔نوازشریف نے شرکا کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آپ کو نوازشریف کا ساتھ دینا ہوگا ۔میری طاقت عوام ہیں بیس کروڑ عوام میری عدالت ہے ۔انہوں نے کہا کہ  آئین کو توڑکر طاقت کے زور پر قبضہ کرنے والوں کے ساتھ کیا سلوک ہوتا رہا ؟ اس سوال کا جواب رہبری کر نے ورالے نہیں رہبری کر نے والے کا سوال کا جواب یہی دے سکتے ہیں یہی جج دے سکتے ہیں جو منصب بنے ہوئے اب خلق خدا گونگی نہیں ہے کوئی اندھا اور بہرہ نہیں ہے  سب دیکھ رہے ہیں اور ایک ایک چیز کا حساب لیں گے  ایبٹ آباد کے لوگ ایک ا یک چیز کا حساب لینگے ۔انہوں نے کہاکہ ایبٹ آباد کے عوام کے پاس نظر ثانی کی درخواست لیکر آیا ہوں ا صل اپیل آپ کی عدالت میں دائر کر نے آیا ہوں  نظر ثانی اپیل کا فیصلہ آپ نے دینا ہے پوری پاکستان کے عوام نے دینا ہےنوازشریف نے جلسے کے شرکائ کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ انشا اللہ آپ فکر نہ کریں نوازشریف جہاں بھی ہے انشا اللہ آپ کےساتھ ہے 2018 کے الیکشن میں پھر آئونگا آپ کے ساتھ نئے وعدے کرونگا اور آپ جانتے ہیں الحمد اللہ جو وعدہ کر تاہے اسے پورا کرتا ہےووٹ کے تقدس کو بحال کر انا ہے ورنہ بچے ڈگریاں ہاتھ میں لئے پھرتے رہ جائیں گے  یہاں پھر بے روز گار ی ہوگی  غربت کا خاتمہ نہیں ہوگا ووٹ کے تقدس کو بحال کر انا ہےووٹ کے تقدس کو بحال کر انے کےلئے نوازشریف کا ساتھ دیں گے جس پر شرکا نے ہاں میں جواب دیا ۔  

news title here
news title here
news title here
  وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں دھرنا دینے والوں سے مذاکرات جاری ہیں ، پرامید ہیں جلد خوشخبری مل جائے گی، خوشی ہے جید علمائے کرام بھی ملک میں امن و امان کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کو تیار ہیں، دھرنے کے شرکا وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کے استعفے کا مطالبہ کر رہے ہیں،  ٹھوس شواہد کے بغیر کسی سے بھی استعفیٰ نہیں لیا جا سکتا۔ صحافیوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکم دیا تھا کہ دھرنا ختم کریں اور انتظامیہ کو بھی کہا تھا کہ جگہ کو فوری طور پر خالی کرایا جائے، دھرنے کو ختم کرنے کے لئے تمام کوششیں بروئے کار لائے اور جید علمائے کرام کے ساتھ مذاکرات کے دور چلتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے دھرنے کو پرامن طریقے سے ختم کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے ، دھرنے سے لاکھوں شہریوں کو روزانہ پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے  ، عوامی دبائو  بڑھ رہا ہے کہ حکومت کوئی کارروائی کرے لیکن ہم کشیدگی کی صورت حال سے بچنا چاہتے ہیں اور چاہتے ہیں کہ معاملہ بات چیت کے ذریعے ختم کر دیا جائے، ہمیں بیرونی خطرات کا بھی سامنا ہے اور ایسی صورت حال میں اندرونی خطرات کے کسی بھی طور پر متحمل نہیں ہو سکتے ، جو قانون ختم نبوت کے حوالے سے پارلیمنٹ نے منظور کیا ہے، اس پر تو ہمیں مبارکباد دینی چاہئے،  عدالت سے بھی درخواست کروں گا کہ ہمیں مزید ایک دو روز کی مزید مہلت دی جائے تاکہ ہم سب اس مسئلے کو پرامن طریقے سے حل کرنے میں کامیاب ہو جائیں۔
news title here
 ربیع الاول 1439 ہجری کا چاند نظر آگیا ہے اور عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم یکم دسمبر کو منائی جائے گی۔ربیع الاول 1439 ہجری کے چاند کی رویت کے حوالے سے مفتی منیب الرحمان کی زیر  صدارت مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس کراچی میں ہوا، اس کے علاوہ صوبائی دارالحکومتوں اور زونل کمیٹیوں کے الگ الگ اجلاس بھی منعقد ہوئے۔ اجلاس میں چاند کی رویت کے حوالے سے ملنے والی اطلاعات کا جائزہ لیا گیا۔ملک بھر سے ملنے والی اطلاعات کو پرکھنے کے بعد چیئرمین رویت ہلال کمیٹی نے اعلان کیا کہ ربیع الاول کا چاند نظر آگیا ہے اور عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم یکم دسمبر بروز جمعہ کو مذہبی عقیدت و احترام سے منائی جائے گی۔  

عرب لیگ نے ایران کو خطے کے لیے خطرہ قرار دے دیا، ایران کی جانب سے خطے کو لاحق خطرات تمام حدیں پار کر چکے ہیں۔ مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں سعودی عرب کی درخواست پر بلائے گئے عرب لیگ کے ہنگامی اجلاس میں سیکریٹری جنرل احمد ابو الغیط نے کہا کہ ایران خطے خصوصاً سعودی عرب اور خلیجی ممالک کے لیے خطرہ بنتا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاض ایئرپورٹ پر مارا جانے والا بیلسٹک میزائل ایرانی ساختہ تھا لہٰذا سعودی عرب کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں اور قومی سلامتی کے لیے کیے جانے والے سعودی عرب کے ہر اقدام کے ساتھ ہیں۔ خیال رہے کہ سعودی عرب نے یمن سے ریاض کی جانب بیلسٹک میزائل حملے کے بعد عرب وزرائے خارجہ کا ہنگامی اجلاس بلانے کی درخواست کی تھی۔ عرب لیگ کے ہنگامی اجلاس میں ایران کی سرگرمیوں سے عرب دنیا کی سلامتی و امن کے معاملے پر غور کیا گیا۔ سعودی عرب اور ایران کے درمیان عرب لیگ کے دو رکن ممالک لبنان کی سیاسی صورت حال اور قطر کے تنازعے کی وجہ سے شدید کشیدگی پائی جاتی ہے۔ سعودی عرب نے یمن سے ریاض کی جانب بیلسٹک میزائل حملے کے بعد عرب وزرائے خارجہ کا ہنگامی اجلاس بلانے کی درخواست کی تھی۔

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
news title here

بھارت ٹیسٹ اور ون ڈے لیگ میں پاکستان کیخلاف سیریز سے بچنے کیلئے راہ فرار ڈھونڈنے لگا۔ آئی سی سی کے اکتوبر میں نیوزی لینڈ میں ہونے والے اجلاس میں9 ٹیموں پر مشتمل ٹیسٹ چیمپئن شپ اور 13 ٹیموں پر مشتمل ون ڈے لیگ شروع کرنے کی منظوری دی گئی تھی۔ دونوں لیگز بالترتیب 2019 اور 2020 میں شروع ہونا ہیں، ان کے شیڈول کی تیاری پر کام شروع ہوچکا ہے۔ بھارتی میڈیا نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ اس سلسلے میں اسے آئی سی سی کی جانب سے گرین سگنل بھی مل چکا ہے، اس قسم کا فیوچر ٹور پروگرام تیار کیا جا رہا ہے، جس میں پاکستان کے ساتھ کھیلنا ہی نہ پڑے جب کہ بی سی سی آئی کے سیکرٹری امیتابھ چودھری  کہا کہ ہم تمام تر معاملات کو مدنظر رکھنے کے بعد ہی اپنا پروگرام تشکیل دے رہے ہیں، کسی بھی عالمی مقابلے یا چیمپئن شپ میں اگر 20 ٹیمیں شریک ہیں تو سب کا ایک دوسرے کیخلاف کھیلنا ممکن ہی نہیں ، پاکستان اور بھارت کے درمیان سیریز نہ ہونے کے انٹرنیشنل کرکٹ پر وسیع تناظر میں کیا اثرات ہوتے ہیں، اس کو مدنظر رکھ کر ہم کوئی پلاننگ نہیں کر رہے، جیسا کہ میں نے پہلے کہا کہ کسی بھی چیمپئن شپ میں شریک ہر ٹیم کا دوسرے سے کھیلنا ضروری نہیں ہوتا، ہم اسی تناظر میں اپنا ایف ٹی پی تیار کر رہے ہیں۔ واضح رہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ کا خصوصی عام اجلاس یکم دسمبر کو دہلی میں ہوگا، جس سے قبل ایف ٹی پی پلان سے تمام ممبران کو آگاہ کر دیا جائیگا۔ یاد رہے کہ بھارت عالمی سطح پر بھی پاکستان کا سامنا کرنے سے گریزاں ہے، اس نے ہی دبائو ڈال کر سری لنکا کو اپنے 70 ویں یوم آزادی پر شیڈول چار قومی سیریز سے پاکستان ٹیم کو باہر کرنے پر مجبور کیا تھا، اب سہ ملکی سیریز آئندہ برس 8 سے 20 مارچ تک کھیلی جائیگی، اسکے تمام میچز کولمبو میں ہی ہوں گے، تیسری ٹیم بنگلہ دیش ہے۔

news title here

 انگلینڈ کی وومن کرکٹ ٹیم نے دوسرے ٹی 20 انٹرنیشنل میں آسٹریلیا کو 40 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز ایک ایک سے برابر کر دی۔  تفصیلات کے مطابق منوکا اوول، کینبرا میں کھیلے گئے سیریز کے دوسرے ٹی 20 میچ میں انگلینڈ وومن ٹیم نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 152 رنز بنائے۔ نیتلی سکیور 40 ، کیتھرین برنٹ ناٹ آئوٹ رہتے ہوئے32 اور سیرا ٹیلر 30 رنز کے ساتھ نمایاں رہیں۔ میگان شوٹ نے دو وکٹیں حاصل کیں۔ آسٹریلین  وومن ٹیم  مطلوبہ ہدف حاصل نہ کر سکی اور پوری ٹیم 18 اوورز میں 112 رنز بناکر آئوٹ ہوگئی۔ علیزا ہیلی 24  جبکہ بیتھ مونی اور ڈیلیسا کمینس 17 ، 17 رنز کے ساتھ ٹاپ سکورر رہیں۔ جینی گن نے تباہ کن بائولنگ کی اور 13 رنز کے عوض 4 کھلاڑیوں کو آئوٹ کیا۔

news title here

ڈیوڈ گوفن سات بار چیمپئن راجر فیڈرر کو شکست دے کر اے ٹی پی فائنلز کے فائنل میں پہنچ گئے۔ لندن میں جاری سال کے اختتامی ٹینس ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل میں بیلجیئم کے ڈیوڈ گوفن نے 19 گرینڈ سلیم کے فاتح سوئس ٹینس سٹار راجر فیڈرر کو دلچسپ مقابلے کے بعد 2-6، 6-3 اور 6-4 سے ہرا کر فائنل تک رسائی حاصل کی۔ گوفن کی یہ فیڈرر کے خلاف سات میچ کھیل کر پہلی کامیابی ہے۔ فیصلہ کن معرکے میں ڈیوڈ گوفن کو بلغاریہ کے گریگور دیمتروف کے چیلنج کا سامنا ہوگا جنہوں نے ٹورنامنٹ کے پہلے سیمی فائنل میں امریکا کے جیک سوک کو شکست دی۔ * 

news title here

  بی پی ایل لیگ میں ٹیم چٹا گانگ وکنگز نے کپتان مصباح الحق کو ہی باہر بٹھا دیا۔ چٹا گانگ وکنگز نے نیا کمبی نیشن تشکیل دینے کے لئے کپتان مصباح الحق سمیت دلشان مناویرا اور سباسیش رائے کو باہر بٹھا دیا جب کہ ان کی جگہ ستیان وین زیل، نجیب اللہ زدران اور الامین کو پلیئنگ الیون میں شامل کیا گیا جب کہ انگلش پلیئر لیوک رونچی نے مصباح کی جگہ ٹیم کی قیادت کی تاہم یہ تدبیر کارگر ثابت نہ ہوئی اور کھلنا ٹائٹینز کے خلاف میچ میں اسے 5 وکٹ سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ چٹا گانگ وکنگز نے پہلے کھیلتے ہوئے 5 وکٹ پر 160 رنز جوڑے، ٹائٹینز نے 10 گیندیں قبل 5 وکٹیں کھو کر ہدف عبور کرلیا۔ کھلنا اس فتح کے ساتھ 2 قیمتی پوائنٹس حاصل کرتے ہوئے دوسرے نمبر پر آ گئی ہے جب کہ وکنگز شکست کے بعد اسی پوزیشن پر برقرار ہے۔ واضح رہے کہ میچ سے قبل کھلنا کی ٹیم 5 پوائنٹس کے ساتھ چوتھے اور چٹاگانگ 3 پوائنٹس کے ساتھ چھٹی پوزیشن پر موجود تھی۔

news title here
news title here
بھارت میں ایک ادارے کی جانب سے حجاب پہننے اور مسلمان  دکھنے پر مسلم لڑکی کو نوکری دینے سے انکار کر دیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق متاثرہ مسلمان لڑکی ندال زویا نے بتایا کہ انہیں دارالحکومت نئی دہلی کے یتیم خانے میں صرف اس لیے نوکری نہیں دی گئی کیونکہ وہ حجاب پہنتی ہیں اور حلیے سے مسلمان دکھتی ہیں۔ ندال نے بتایا کہ یتیم خانے میں نوکری کے لیے ای میل پر سب کچھ ٹھیک چل رہا تھا لیکن کچھ روز پہلے مجھے ایک ای میل موصول ہوئی جس میں تحریر تھا کہ ہم معذرت خواہ ہیں کیونکہ آپ ایک کلو میٹر دور سے بھی ایک مسلمان خاتون معلوم ہوتی ہیں۔ اکتوبر میں ندال زویا کو دہلی میں لڑکیوں کے یتیم خانے میں سوشل ورکر کے طور پر منتخب کیے جانے کے بعد یتیم خانے کے صدر اور سی ای او ہریش ورما کی جانب سے آن لائن ٹیسٹ دینے اور اپنی تصویر بھیجنے کا کہا گیا۔ ہریش ورما کی جانب سے زویا کو مشورہ بھی دیا گیا کہ اگر وہ اس نوکری کے عمل کو آگے بڑھانا چاہتی ہیں تو حجاب پہننا چھوڑ دیں۔ زویا کو بعد ازاں آگاہ کیا گیا کہ ان کی جگہ ایک اور آزاد خیال اور مذہبی رجحانات سے پاک مسلمان لڑکی کو نوکری پر رکھ لیا گیا ہے۔

news title here
news title here
news title here
موبائل فون ہماری زندگی کا ایک اہم ترین حصہ بن گیا ہے اور اس سے متعلق نت نئی خبریں سامنے آنے کا سلسلہ جاری ہے۔ موبائل فون کو کھولنے یا اَن لاک کرنے کے لیے سب سے پہلے پاس ورڈ متعارف کرایا گیا، بعد ازاں فنگر پرنٹ، آئی پرنٹ اور آخر میں چہرے کے یعنی فیس پرنٹ کا طریقہ سامنے آیا۔ برطانوی اخبار کے مطابق اس حوالے سے تازہ ترین خبر یہ ہے کہ آئندہ 5 برسوں سے بھی کم عرصے کے دوران آپ اپنا سمارٹ فون پسینے کی بو کے ذریعے کھول سکیں گے۔ بالکل اسی طرح جیسے ابھی فنگر یا فیس پرنٹ کا استعمال کرتے ہیں۔ واضح رہے کہ ہر انسان کے پسینے کے ذرات کا نقش منفرد نوعیت کا ہوتا ہے ، اس کو سمارٹ فون کے حامل شخص کی شناخت کے واسطے استعمال میں لایا جا سکتا ہے۔ نیویارک کی ایلبانے یونی ورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر جان ہیلامک نے بتایا کہ یہ طریقہ ذاتی موبائل کو ہیکروں سے محفوظ رکھنے کے حوالے سے محفوظ ترین ہے، اس لیے کہ پسینے کے نقش کو کاپی کرنا انتہائی دشوار ہے، ہم سکیورٹی کی ایک نئی صورت پر کام کر رہے ہیں جو صارف کی تصدیق کے عمل کو یکسر تبدیل کر سکتی ہے، پسینے کو صارف کی شناخت کے لیے استعمال کرنا ایسا طریقہ ہے جس کو ہیکر آسانی سے نہیں جان سکتے۔ 

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
ہاورڈ یونیورسٹی کی تحقیق کے دوران دو لاکھ سے زائد افراد کا جائزہ تین دہائیوں تک لیا گیا اور معلوم ہوا کہ ہر طرح کی گریاں امراض قلب کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتی ہیں۔ تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ اخروٹ، بادام، کاجو، مونگ پھلی یا پستے سمیت ہر قسم کی گریاں کھانے کی عادت موٹاپے کا باعث نہیں بنتیں ۔  ہفتے میں دو بار گریوں کو کھانا صحت میں ڈرامائی حد تک بہتری لاتا ہے۔ جو افراد تین قسم کی گریاں ہفتے میں دو یا اس سے زائد بار کھاتے ہیں، ان میں امراض قلب یا خون کی شریانوں کے مسائل کا امکان 15 سے 23 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔ اسی طرح مونگ پھلیاں کھانے کی عادت یہ خطرہ 13 سے 15 فیصد تک کم کر دیتی ہے۔ ہفتے میں ایک یا اس سے زائد بار اخروٹ کھانا امراض قلب اور خون کی شریانوں کے مسائل کا خطرہ بالترتیب 21 اور 19 فیصد تک کم کر دیتا ہے۔ موجودہ تحقیق گریوں کے فوائد کو جاننے کے لیے ہونے والی سب سے بڑی اور طویل ترین تھی اور نتائج سے یہ بھی معلوم ہوا کہ امراض قلب سے ہٹ کر انہیں کھانا سنگین امراض بشمول کینسر، ذیابیطس، سانس کی بیماریاں اور دماغی تنزلی سے بھی تحفظ دیتا ہے۔  اخروٹ اور مونگ پھلی کھانا فالج کا خطرہ بھی کم کرتا ہے۔  نتائج طبی جریدے جرنل آف دی امریکن کالج آف کارڈ یالوجی میں شائع ہوئے۔
news title here
چیف ایگزیکٹو آفیسر میو ہسپتال و پروفیسر آف آپتھمالوجی ڈاکٹر اسد اسلم خان نے کہا ہے کہ  شوگر کنٹرول نہ کرنے کے باعث مستقل اندھے پن کا مرض لاحق ہو سکتا ہے تاہم بروقت تشخیص کی صورت میں لیزر یا انجکشن کی مدد سے مریض کو اندھے پن سے بچایا جا سکتا ہے ، 54فیصد ا ندھے پن کا سبب سفید موتیا ہے جبکہ قرنیہ میں سفیدی آنے کی وجہ سے 14فیصد مریض آنکھوں کی بیماریوں میں مبتلا ہور ہے ہیں ، کے پی کے اور پنجاب کے 9اضلاع میں ککروں کی بیماری زیادہ پائی گئی ہے ، جس کے لیے ڈبلیو ایچ او کی گائیڈ لائن کے مطابق علاج شروع کر دیا گیا ہے ۔  جہان پاکستان کو انٹرویو دیتے ہوئے  انہوں نے کہا کہ آلودگی کی وجہ سے آنکھوں میں خارش اور الرجی ہو جاتی ہے، جس کو مصنوعی آنسو ڈراپس کے ذریعے روکا جا سکتا ہے، سموگ کے باعث سانس کی بیماریوں میں اضافہ ہو سکتا ہے خاص طور پر دمہ کے مرض میں مبتلا افراد کے لئے سموگ خطرناک ہے  تاہم یہ بہت زیادہ خطر ناک نہیں ہے۔،  کالے چشمے اور ماسک کا استعمال اس سے بچائو کا واحد طریقہ ہے جبکہ اسکے برعکس شوگر کا مرض مریضوں کے لیے زیادہ خطرناک ہے ، شوگر اکثر اوقات200 سے زیادہ رہنے کی صورت میں متعلقہ شخص کی آنکھیں مستقل طور پر آندھی ہو سکتی ہیں ، اگر بروقت تشخیص ہو جائے تو لیزر یا انجکشن کے استعمال سے اندھے پن پر قابو پایا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آنکھوں کی بیماریوں میں مبتلا افراد میں سے 54فیصد سفید موتیے ،14فیصد قرینہ میں سفید ی اترنے ،7فیصد کالا موتیا اور چار فیصد نظر کمزور ہونے کی وجہ سے اس مرض میں مبتلا ہوتے ہیں ، دو فیصد لوگ عمر جبکہ باقی شوگر کی وجہ سے آنکھوں کی بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں ،  آنکھ کا کینسر دو قسم کا ہوتا ہے ایک بوڑھوں میں دوسرا بچوں میں  تاہم بوڑھے افراد میں یہ کینسر کی شرح بہت کم ہوتی ہے اور بچوں میں آنکھ کا کینسر زیادہ ہوتا ہے ، اس کینسر کی تشخیص اگر شروع میں ہو جائے جب یہ 2سے 3ملی میٹر تک ہو تو اسکو کیمو تھراپی اور لیز لگا کر روکا جا سکتا ہے ۔، ککروں کی بیماری ایک خاص جراثیم سے ہوتی اور ان علاقوں میں ہوتی ہے جہاں مناسب صفائی نہ ہو، مکھیاں وغیرہ بہت زیادہ ہوں ، اس بیماری کے حوالے سروے کیا گیا ہے جس کے مطابق کے پی کے اور پنجاب کے 9اضلاع میں بیماری زیادہ ہے، آنکھوں کی بیماریوں سے محفوظ رہنے کے لیے تین سٹیج پر چیک اپ لازمی کروانا چاہے ، بچوں میں 5اور 12سال کی عمر میں جبکہ بوڑھوں کو سال میں ایک بار لازمی چیک اپ کروانا چاہئے تاکہ بروقت تشخیص کے بعد علاج کیا جا سکے ۔

عوامی سروے

سوال: متحدہ اورپی ایس پی کےاتحاد سے سندھ میں پی پی پی کی سیاست پرکیااثرات مرتب ہوتے؟