مفتی اعظم نے خطبہ حج دیتے ہوئے کہا کہ اسلام کی حقیقی تصویر اعلیٰ اخلاق ہے، اللہ غرور اور تکبر کرنے والوں کو پسند نہیں کرتا، آج مسلمانوں کو اپنے سیاسی اور معاشی حالات دین کے مطابق ڈھالنے کی ضرورت ہے۔مفتی اعظم ڈاکٹر شیخ حسین بن عبدالعزیز الشیخ نے مسجد نمرہ سے خطبہ حج دیتے ہوئے کہا اللہ تقویٰ اختیار کرنے والوں کو پسند کرتا ہے، تقویٰ اختیار کرو تا کہ تم فلاح پاؤ، اللہ سے ڈرو اور کسی کو اسکا شریک نہ ٹھہراؤ۔ اسلام اور دین کی عظمت کی بنیاد توحید ہے، تقویٰ اللہ اور رسول کے احکامات پر عمل سے مشروط ہے، مسلمانوں کو حکم ہے اللہ اور اس کے رسول کی اطاعت کرو، اللہ سے شریک ٹھہرانے والوں کا انجام برا ہوگا۔ خ تمہارے لیے جو بھی نعمت دی گئی وہ اللہ کی طرف سے ہے، اللہ کے احکامات پر عمل کرنا حضورﷺ کی تعلیمات ہیں۔ تمام انبیا نے اللہ کی وحدانیت کی تعلیم دی، اللہ کی وحدانیت پر یقین اور عبادت تقویٰ کا اہم ستون ہے، ہمیں ہر حال میں اللہ پر توکل کرنا چاہیئے۔ مفتی اعظم نے خطبہ حج میں کہا کہ اسلام کی تاریخ یہی ہے کہ آپؐ اللہ تعالیٰ کے رسول ہے، اللہ سے ڈرنے والا حق اور سچائی کے راستے پر رہتا ہے، تقویٰ اختیار کرنے والا کامیاب ہوگا، قرآن مجید میں بھی نماز کا حکم دیاگیا ہے، مفتی اعظم نے خطبہ حج میں کہا اللہ کا حکم ہے کہ ہم نے تم پر روزے فرض کیے ہیں، اللہ نے حکم دیا جو شخص استطاعت رکھتا ہو وہ حج کرے، نماز قائم کرنے کا حکم دیا گیا ہے، نماز برائی سے دور رکھتی ہے، ایمان لانے والوں کیلئے آخرت میں ہمیشہ کیلئے جنت ہوگی۔ 20 لاکھ کے لگ بھگ عازمین میدان عرفات میں موجود ہیں، خطبہ حج کے بعد عازمین بعد نماز ظہر اور عصر ایک ساتھ ادا کی جائے گی۔ بعدازاں عازمین حج غروب آفتاب کے ساتھ ہی مزدلفہ روانہ ہوں گے جہاں وہ نماز مغرب اور عشا قصر کے ساتھ ایک ساتھ پڑھیں گے، عازمین رات بھر کھلے آسمان تلے قیام کریں گے اور رمی کے لیے کنکریاں چنیں گے۔ دس ذی الحج کو طلوع آفتاب کے بعد حجاج کرام مزدلفہ سے رمی کے لیے جمرات جائیں گے پھر قربانی کے بعد سر منڈوا کر احرام کھول دیں گے اور طواف زیارت کریں گے۔ آج صبح مکہ مکرمہ میں غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب منعقد ہوئی، غلاف کعبہ کی تیاری میں 120 کلو سونا اور 100 کلو چاندی استعمال کی گئی۔ واضح رہے کہ اس سال سعودی حکام نے فرزندان اسلام کے لیے خصوصی سہولیات فراہم کی ہیں، تاکہ مناسک حج کی ادائیگی کے دوران کسی قسم کی دشواری کا سامنا نہ ہو، اس سلسلے میں ایک ہیلپ لائن کے قیام کے ساتھ ساتھ خصوصی حج ایپلی کیشن بھی متعارف کروائی گئی ہے۔

مزید پڑھیں
ویڈیوز

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟