18 اگست 2017
تازہ ترین

عوامی سروے

سوال: آپ کے خیال میں کونسی سیاسی یا مذہبی جماعت صحیح معنوں میں نظریہ پاکستان کی محافظ اور عوامی فلاح و بہبود میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے؟

news title here

 میاں نواز شریف نے کہا ہے کہ اداروں کے درمیان تصادم کو روکنے کی ذمہ داری صرف ان کی نہیں ہے۔ بی بی سی اردو کو ایک انٹرویو میں سابق وزیر اعظم نے ایک مرتبہ پھر اپنے اس عزم کو دہرایا کہ وہ عوام کے ووٹ کے تقدس کو مجروح نہیں ہونے دیں گے اور اس کے لیے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ ایک سوال پر کہ دنیا میں ایسی مثالیں موجود ہیں جہاں عوامی مینڈیٹ کو پامال کیا گیا تو عوام ٹینکوں کے سامنے آئے اور انہوں نے فوج کو پیچھے دھکیل دیا جس کی حالیہ مثال ترکی کی ہے، کیا پاکستان بھی ایسے ہی ٹکراؤ کی جانب بڑھ رہا ہے تو نواز شریف نے کہا کہ وہ اداروں کے مابین ٹکراؤ کے حق میں نہیں ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ٹکرائو کے خلاف صرف مجھے ہی نہیں ہونا چاہیے۔ سب کو ہونا چاہیے اور ٹکرائو کی کیفیت پیدا نہیں ہونی چاہیے نواز شریف نے کہا کہ یہ تاثر ٹھیک نہیں ہے کہ ان کی فوج کے تمام سربراہوں کے ساتھ مخالفت رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ جرنیلوں کے ساتھ یقیناً بنی بھی ہے، اچھی بنی ہے۔ اور میں یہ نے کبھی آئین سے انحراف نہیں کیا، جو قانون کہتا ہے اس کے مطابق چلا ہوں۔اگر کوئی قانون کی حکمرانی یا آئین پر یقین نہیں کرتا تو میں اس سے اتفاق نہیں کرتا۔ نواز شریف نے کہا کہ جب پرویز مشرف نے مارشل لا لگایا تھا، مشرف میرے خلاف تھا، مشرف کے کچھ ساتھی میرے خلاف تھے لیکن باقی فوج میرے خلاف نہیں تھی۔ باقی فوج کو تو پتہ ہی نہیں تھا کہ مارشل لا لگ چکا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اب وہ ووٹ کے تقدس کی بحالی کے لیے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ احتجاج نہیں ہے بلکہ ایک مہم ہے، میں یہ اس لیے نہیں کر رہا کہ میں دوبارہ منتخب ہو کر وزیراعظم کی کرسی پر بیٹھوں،انھوں نے کہا کہ وزیراعظم کی کرسی پر بیٹھنا بذات خود ایک قربانی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان سے متعلق ایک سوال کے جواب میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ عمران خان صاحب کے بارے میں کیا کہوں، ان کی باتوں کا جواب نہ دینا ہی اچھا ہے۔ آصف علی زرداری کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ میں نے ان سے کچھ نہیں مانگا اور نہ کوئی مانگنے کا ارادہ ہے۔ اداروں کے مابین گرینڈ ڈائیلانگ کے حوالے سے سینیٹ چیئرمین رضا ربانی کی تجویز پر نواز شریف نے کہا کہ یہ ڈائیلاگ وقت کی ضرورت ہے۔ نواز شریف کا کہنا تھا کہ  ہم نے چارٹر آف ڈیموکریسی پر دستخط کیے تھے اور آج تک اس کی خلاف ورزی نہیں کی ہے، اس کی ایک خلاف ورزی ہوئی تھی جو ایک این آر او سائن ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی میں شامل لوگ  بدترین مخالفینٴ میں سے تھے۔ اس جے آئی ٹی کے سامنے ہمارا پورا خاندان پیش ہوا۔ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی تیسرے نمبر پر تھی اور اس نے دھاندلی دھاندلی کی رٹ شروع کر دی جس میں طاہرالقادری بھی شامل ہوگئے۔ انہوں نے کہا کہ دھرنوں سے ترقی کا پہیہ تقریبا جام ہوگیا اور دھرنے والے وزیراعظم ہاؤس، پارلیمان کی گیٹ اور دیگر اداروں کے سامنے پہنچ گئے تھے اور کہتے تھے کہ ہم وزیراعظم کو گلے میں رسہ ڈال کر وزیراعظم ہائوس سے باہر نکالیں گے۔انہوں نہ کہا کہ یہ دھرنا ختم توا تو پاناما کا معاملہ سامنے آگیا جس میں انہوں نے دوبارہ دھرنا دینے کی کوشش کی۔ ان دنوں سی پیک کا معاملہ بڑی بری طرح متاثر ہوا اس کے باجود ملک نے ترقی کی ہے۔

news title here
news title here
news title here
 پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیرمین آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ نوازشریف اور ان کے خاندان کو آئندہ سیاست میں نہیں دیکھ رہا۔ لاہور میں بلاول بھٹو زرداری کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران آصف زرداری کا کہنا تھا کہ لوگوں کو غلط فہمی ہے کہ ہم نے آخری بار نواز شریف کا ساتھ دے کر حکومت کا ساتھ دیا تھا تاہم ہم نے حکومت کا ساتھ کبھی نہیں دیا، ہم نے پارلیمنٹ کا ساتھ دیا تھا اور جمہوریت بچائی تھی اور اب جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہے، اس سے پہلے ہمارے وزیراعظم کو نا اہل کیا گیا اور ہم نے دوسرا وزیراعظم بنالیا، جلاوطنی کے دور میں ہمارے تعلقات تھے اور اس کی تردید نہیں کرتا لیکن اگر بھائی سے 4 سال تعلقات نہ ہوں، اس کے بعد فون کریں تو وہ بھی فون نہیں اٹھائے گا،  نواز شریف نے اب اپنے الفاظ واپس لے لیے ہیں تاہم اب وقت گزر چکا ہے۔ آصف زرداری نے کہا کہ  جمہوریت کے علاوہ پاکستان کے پاس کوئی راستہ نہیں لیکن نواز شریف اور ان کے خاندان کو آئندہ سیاست میں نہیں دیکھ رہا، نواز شریف سے کبھی کوئی فائدہ لیا ہے اور نہ لوں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ سیاست میں کوئی آخری بات نہیں ہوتی لیکن ابھی کسی بھی پارٹی کے ساتھ مفاہمت کی بات قبل از وقت ہے، عمران خان ابھی فل ٹاس پر کھیل رہے ہیں جب نو بال پر آئیں گے تو دیکھیں گے جب کہ میری ان سے ملاقات ہوئی نہ ہو سکتی ہے۔ بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہم آج بھی اور کل بھی جمہوریت کے ساتھ ہیں تاہم اب  شریف خاندان کو پی پی سے کوئی ریلیف نہیں مل سکتا۔
news title here
 آرمی چیف جنر ل قمر جاوید باوجوہ نے کہا ہے کہ نوجوان طلبا سوشل میڈیا پر معائدانہ بیانیے اور داعش سے منسلک تنظیموں سے بہت زیادہ محتاط رہیں، پائیدار امن کے لیے ہم میں سے ہر ایک کو اپنا کردار ادا کرنا ہے ،پاکستان کا مستقبل نوجوانوں کے ساتھ وابستہ ہے ، نوجوان کامیابی کے لیے شارٹ کٹس کی طرف نہ جائیں بلکہ میرٹ اور قانون کی حکمرانی پر عمل کریں، پاکستانی نوجوان ملک کو امن و خوشحالی کی طرف لے جائیں گے۔پاک فوج کے محکمہ تعلقات عامہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار آرمی چیف نے آئی ایس پی آرکے ڈائریکٹوریٹ کا دورہ کرتے ہوئے انٹرن شپ کر نے والے طلبا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہر پاکستانی شہری آپریشن ردالفساد کا سپاہی ہے اور مجھے پوری طرح سے یقین ہے کہ پاکستانی نوجوانوں کو اپنی صلاحیتوں کا ادراک ہے اور اپنے ملک کا مقام بلند کر نے کے لیے کوشاں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پڑھے لکھے نوجوان داعش کا بڑا ہدف ہیں اور ہمارے نوجوانوں کو ان سے بہت زیادہ محتاط رہتے ہوئے حقیقت میں ملک اور قوم کی فلاح اور ترقی کے لئے کام کرنا ہو گا تاکہ ہم ملک کو امن و خوشحالی کی طرف لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو تشدد ، دہشت گردی سے نجات دلانے میں پاک فوج نے عظیم کامیابی حاصل کی ، پاک فوج ایک محفوظ اور مستحکم پاکستان کے قیام کا عزم کیے ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ ،پاکستانی فوج اندرونی ، بیرونی خطرات سے نمٹنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے اور اس کے لئے بھر پور کاوشیں جا ری ہیں ۔
news title here
news title here
news title here

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
بھارتی انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ نے بالی وڈ کے شہنشاہ امیتابھ بچن سمیت بھارت کی 33 بڑی شخصیات کے خلاف پاناما لیکس میں تفتیش کا آغاز کر دیا۔  پاناما لیکس میں بھارت کے سپر  سٹار امیتابھ بچن پر بھی آف شور کمپنی اور اکائونٹس بنانے کا الزام عائد کیا گیا تھا جس کے جواب میں امیتابھ بچن نے اپنے اوپر لگنے والے تمام الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان پر لگنے والے تمام الزامات بے بنیاد ہیں  اور انہیں جس آف شور کمپنی کا ڈائریکٹر ظاہر کیا گیا ہے ان کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے، تمام ٹیکس ادا کئے ہیں اور اگر ان کے نام پر پیسہ باہر بھیجا بھی گیا ہے تو وہ غیر قانونی طریقے سے نہیں بلکہ قانونی طریقے سے بھیجا گیا ہے۔ بھارتی انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ کے ایک سینئر آفیسر کے مطابق تحقیقات میں کوئی کمی نہیں رکھی جائے گی ، ہم پاناما پیپرز میں شامل افراد کے خلاف تیزی سے معلومات جمع کر رہے ہیں ، جن لوگوں کے نام آف شور کمپنیوں میں موجود ہوں گے انہیں کڑی سزا دی جائےگی، امیتابھ کا شمار بالی ووڈ کے سپر اسٹارز میں ہوتا ہے لیکن اس کا اثر تفتیش پر نہیں پڑے گا اور ان کے خلاف غیر جانبدارانہ طریقے سے تفتیش کی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امیتابھ بچن فی الحال پاناما کاغذات میں بتائی گئی کسی فرم کے مالک نہیں ہیں لہٰذا ہم بنا کسی ٹھوس ثبوت کے مقدمہ درج نہیں کر سکتے اس لیے ان کے خلاف معلومات جمع کی جارہی ہیں تاکہ ہم سے کسی قسم کی کوئی کوتاہی سرزد نہ ہوجائے۔
news title here
 بھارتی ملیالم فلم انڈسٹری کے نامور ہدایت کار چلاپاٹھی راؤ اور اداکار سروجن لوکیش نے تیلگو اداکارہ کو چلتی گاڑی میں زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی تاہم اداکارہ اپنی جان بچانے میں کامیاب ہوگئی اور فرار ہوگئی۔بھارت میں خواتین کے ساتھ زیادتی یا زیادتی کی کوششوں جیسے واقعات میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے، یہاں تک کہ عام خواتین کے ساتھ بالی ووڈ جیسی طاقتور انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی اداکارائیں بھی محفوظ نہیں ہیں ، حالیہ برسوں میں فلم انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی متعدد اداکاراؤں کے ساتھ ہدایت کار و پروڈیوسرز کی جانب سے زیادتی کا نشانہ بنائے جانے کے کئی واقعات منظر عام پر آئے ہیں جس سے بھارت کا مکروہ چہرہ کھل کر سب کےسامنے آیا ہے، پے درپے زیادتی جیسے واقعات رپورٹ ہونے کے باوجود بھارتی قانون آج تک خواتین کے تحفظ سے متعلق موثر اقدامات نہیں کرسکا ہے۔حال ہی میں ایک اور اداکارہ ہدایت کار چلاپاٹھی اور ساتھی اداکار سروجن کی ہوس کا شکار ہونے سے بال بال بچ گئی، بھارتی میڈیا کے مطابق ملیالم فلم انڈسٹری کی نامور اداکارہ جن کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے نے ہدایت کار چلاپاٹھی اور ساتھی اداکار سروجن کے خلاف چلتی گاڑی میں زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کے خلاف مقدمہ درج کروایا ہے۔اداکارہ کا موقف ہے کہ وہ لوگ دو روز قبل شوٹنگ کی غرض سے بھارتی ریاست   آندھرا  پردیش کے ضلع مغربی گوداوری جارہے تھے کہ گاڑی میں ان کے ساتھ موجود ہدایت کار اور اداکار نے انہیں نامناسب طریقے سے چھونے کی کوشش کی تاہم اداکارہ کی جانب سے مزاحمت کیے جانے پر کار سامنے سے آنے  والی تیز رفتار گاڑی سے ٹکراگئی جس کے باعث اداکارہ وہاں سے بھاگنے میں کامیاب ہوگئیں۔۔
news title here

پاکستان سپر لیگ لیگ سکینڈل کی  تحقیقات کرنیوالے ٹربیونل نے اپنی سفارشات مرتب کرنا شروع کر دیں، قومی کرکٹرز شرجیل خان، خالد لطیف، شاہ زیب حسن کیخلاف ٹھوس شواہد کی روشنی میں انکے خلاف پانچ سال سے تاحیات پابندی عائد ہونے کے امکانات ہے۔ تفصیلات کے مطابق تحقیقاتی ٹربیونل قومی کرکٹر  شرجیل خان پر پانچ سال جبکہ  خالد لطیف اور شاہ زیب حسن پر دس، دس سال پابندی عائد کر سکتا ہے  جبکہ  تینوں کرکٹرز پر قومی و کلب سطح پر کرکٹ کھیلنے پر بھی پابندی لگائی جائے گی۔

news title here

انگلش کائونٹی کرکٹ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر ایسیکس کے پاکستانی فاسٹ بالر محمد عامر کو جولائی کے بہترین کھلاڑی کے ایوارڈ سے نوازا گیا، انہوں نے جولائی میں نیٹ ویسٹ ٹی ٹونٹی بلاسٹ کے 9 میچوں میں حصہ لیا جہاں ان کی کارکردگی انتہائی غیر معمولی رہی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق کلب کی جانب سے کرائی گئی رائے شماری میں انہیں 69 فیصد ووٹ ملے، انہیں کلب آفیشل نے سادہ سی تقریب میں ان کے ایک میچ کا فریم فوٹو پیش کیا۔ محمد عامر کا کہنا تھا کہ وہ اچھی پرفارمنس پر خوش اور کلب میں ہر ایک کے تعاون پر مشکور اور ممنون ہیں۔

news title here

نیٹ ویسٹ ٹی ٹونٹی کرکٹ ٹورنامنٹ میں لنکا شائر نے وورسیسٹر شائر کو 7 وکٹوں سے شکست دے کر کوارٹر فائنل میں پہنچنے کی امید زندہ کر لی، جوز بٹلر نے ناقابل شکست 52 رنز بنا کر اور جنید خان نے عمدہ بائولنگ کا مظاہرہ کر کے ٹیم کو فتح دلائی۔ مانچسٹر میں کھیلے گئے میچ میں وورسیسٹر نے پہلے کھیلتے ہوئے مقررہ اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 127 رنز بنائے، بریٹ ڈی اولیویرا 30 رنز بنا کر نمایاں رہے، جنید خان نے 2 وکٹیں لیں، جواب میں لنکا شائر نے مطلوبہ ہدف 17.3 اوورز میں 3 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کیا، جوز بٹلر 52 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے۔

news title here

 اسپاٹ فکسنگ کے الزامات میں معطل کرکٹر ناصر جمشید کیس کی ٹریبیونل میں سماعت ہوئی جس میں کرکٹر کے وکیل نے ٹریبیونل پر اعتراضات اٹھا دیے ہیں جب کہ کیس کی مزید سماعت 22 اگست تک ملتوی کر دی گئی۔کرکٹر کے وکیل نے کہا کہ ٹریبیونل کس طرح غیرجانبدار رہ سکتا ہے جب ٹریبیونل کے سربراہ کیس کے فریق پی سی بی سے تنخواہ لیتے ہیں، معلوم ہے ٹرییبونل کی طرف سے کیا فیصلہ آنا ہے۔ کرکٹ بورڈ کے پاس اگر ناصر جمشید کے خلاف شواہد ہیں تو وہ میڈیا کے سامنے پیش کرے، انہوں نے کہا کہ پی سی بی کے کوڈ آف کنڈکٹ پر بھی اعتراضات دائر کیے ہیں۔پی سی بی کے وکیل تفضل رضوی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ناصر جمشید کیس کی ڈسپلنری پینل اور ٹریبیونل کے سامنے سماعت ہوئی، ٹرییبونل میں پی سی بی کی جانب سے دو گواہان نے پیش ہونا تھا جن میں سے ایک پیش نہیں ہو سکے، جس کی وجہ سے کرکٹر کے وکیل نے کہا کہ دونوں گواہان پر ایک ہی سماعت میں جرح کرنا چاہتے ہیں، جس پر سماعت 22 اگست تک ملتوی کر دی گئی ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ کیس کی کارروائی کو طول دینا چاہتے ہیں تاکہ اس کا فیصلہ نہ ہو سکے۔ اگر اعتراض ہے تو عدالت جا کر چیلنج کریں، یہاں کیوں پیش ہو رہے ہیں۔پی سی بی کی جانب سے انتقامی کارروائی کے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کرکٹرز بورڈ کو بہت عزیز ہیں اور ہمیشہ ان کیلیے نرم گوشہ رکھا لیکن جو غلطی کرے گا تو اس کے خلاف ضرور قانونی کارروائی ہوگی۔۔

news title here
news title here
 بھنگ کا نشہ کرنے والوں میں، ہائی بلڈ پریشر سے ہلاک ہونے کا خطرہ ان لوگوں کے مقابلے میں تین گنا زیادہ ہوتا ہے جنہوں نے یہ نشہ کبھی نہ کیا ہو،امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق حال ہی شائع ہونے والی ایک سائنسی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ بھنگ پینے والوں میں ہائی بلڈ پریشر سے ہلاک ہونے کے خطرے میں ہر سال مزید اضافہ ہو جاتا ہے، سائنسدانوں نے بھنگ کے انسانی صحت پر اثرات پر تحقیق کے سلسلے میں لگ بھگ 1200 افراد کا مطالعہ کیا جن کا تعلق امریکہ اور کئی دوسرے ملکوں سے تھا،کئی امریکی ریاستوں نے بھنگ کے استعمال کو قانونی حیثیت دے دی ہے اور کئی دوسری ریاستیں اسے قانونی حیثیت دینے پر غور کر رہی ہیں جبکہ دنیا کے کئی ملکوں میں بھنگ کا نشہ کرنے کو جرم نہیں سمجھا جاتا، امریکی ریاست جارجیا کی جارجیا سٹیٹ یونیورسٹی کے شعبہ صحت عامہ کی تحقیق کے مطابق بھنگ کا استعمال فائدہ مند ہے اور بھنگ سے صحت کو نقصان نہیں پہنچتا،ان کا کہنا تھا کہ یہ طے کرنا ضروری ہے کہ آیا بھنگ کے فوائد، صحت اور سماجی خطرات کے مقابلے میں زیادہ ہیں، اگر بھنگ کے استعمال کا جائزہ دل کی بیماریوں اور ہلاکتوں کے تناظر میں کیا جائے تو پھر طبی شعبے اور پالیسی سازوں کے لیے ضروری ہو جاتا ہے کہ وہ عوام کے تحفظ کو اہمیت دیں۔بھنگ پینے سے اعصابی نظام کی فعالیت بڑھ جاتی ہے، جس سے دل کی دھڑکنوں میں اضافہ ہوتا ہے، خون کا دباؤ بڑھتا ہے اور جسم کے لیے آکسیجن کی طلب بڑھ جاتی ہے۔  

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
 ایک نئی کریم تیزی سے مقبول ہو رہی ہے اور اسے بنانے والوں کا دعویٰ ہے کہ اسے جسم اور ہاتھوں پر ملنے سے پرسکون نیند حاصل ہو سکتی ہے۔ریڈاِٹ اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر اس کریم کے چرچے ہیں جسے ’سلیپی‘ کا نام دیا گیا ہے۔ ویب سائٹ پر درجنوں افراد نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کریم سے ان کی بے خوابی ختم ہو گئی ہے، ان میں سے بعض افراد کئی برس سے بے خوابی کے شکار تھے۔سلیپی کریم کو لش کمپنی نے بنایا ہے جس کی ویب سائٹ پر 60 سے زائد افراد نے کریم سے بے خوابی دور کرنے کے اپنے تجربات بیان کئے ہیں۔ صارفین کے مطابق وہ کئی برس نیند سے محروم رہے تھے لیکن اب سلیپی کریم سے وہ سونے کے قابل ہو چکے ہیں۔سلیپی کریم میں کوکو مکھن، دلیے کا باڈی لوشن، سیم کے بیج، لیونڈر آئل اور لنگ لنگ آئل ملایا گیا ہے۔ کمپنی کے مطابق پہلے اسے محدود تعداد میں تیار کیا گیا تھا لیکن عوام کی بے پناہ فرمائش کے بعد کمپنی نے اسے اپنی مستقل مصنوعات میں شامل کرلیا ہے۔ایک صارف نے ویب سائٹ پر کہا کہ وہ بے خوابی کی وجہ سے شدید درد اور نفسیاتی عوارض کے شکار تھے لیکن سلیپی نے انہیں دہشتناک بے نیند راتوں سے نجات دلائی ہے۔  ایک اور صارف نے کہا کہ یہ نیند لانے والی ایک مؤثر لوشن ہے۔کچھ لوگوں نے اعتراف کیا ہے کہ لوشن لگانے سے ان کا ذہنی تناؤ کم ہوتا ہے اور وہ سکون محسوس کرتے ہیں۔ 
news title here
ناشپاتی ہماری صحت کیلئے انتہائی فائدہ مند ہے،اگر ایک ناشپاتی کو روز کھایا جائے تو کینسر،موٹاپے اور بخار سمیت مختلف امراض سے بچاجا سکتا ہے ،فائبر، پوٹاشیم اور دیگر اہم اجزا سے بھرپور یہ پھل کم کیلوریز کے ساتھ جسم کو مختلف اینٹی آکسائیڈنٹس بھی فراہم کرتا ہے،ماہرین صحت کے مطابق ناشپاتی میں وٹامن 'سی'، وٹامن 'کے' اور کاپر جیسے اجزا موجود ہوتے ہیں، جو جسمانی خلیات کو نقصان پہنچانے والے مضر عناصر کی روک تھام کرکے جلد کی صحت کے لیے فائدہ مند ثابت ہوتے ہیں،ناشپاتی میں فائبر کافی مقدار میں ہوتا ہے جو جسم کے لیے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کمی لاکر امراض قلب سے تحفظ دیتا ہے، اسی طرح فائبر سے بھرپور غذائیں جیسے ناشپاتی کو روزانہ کھانا فالج کا خطرہ بھی 50 فیصد تک کم کردیتا ہے،ناشپاتی میں موجود فائبر ایسے خلیات کی روک تھام کرتا ہے جو آنتوں کے کینسر کا خطرہ بڑھاتے ہیں،ایک تحقیق کے مطابق روزانہ ایک ناشپاتی کھانا خواتین میں بریسٹ کینسر کا خطرہ 34 فیصد تک کم کرسکتا ہے، امریکا کی لوزیانے سٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ ناشپاتی فائبر اور وٹامن سی کے حصول کے لیے بہترین ذریعہ ہے، ماہرین کے مطابق آج کل ہڈیوں کے امراض کافی عام ہوچکے ہیں، اگر ہڈیوں کو صحت مند رکھنا چاہتے ہیں تو روزانہ ماہرین طب کی تجویز کردہ کیلشیئم کی مقدار کھانا بہت ضروری ہے، ناشپاتی کیلشیئم کو جسم میں آسانی سے جذب ہونے میں مدد دینے والا پھل ہے،ماہرین کا کہنا ہے فولک ایسڈ حاملہ خواتین کے لیے بہت اہم ہے تاکہ بچے پیدائشی معذوری سے بچ سکیں، ناشپاتی میں بھی فولک ایسڈ موجود ہے اور دوران حمل اس کا استعمال مفید ثابت ہوتا ہے،یہ پھل اپنی تاثیر میں ٹھنڈا ہوتا ہے اور یہ ٹھنڈک بخار کے علاج میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔