21 اپریل 2018
تازہ ترین
news title here
news title here
news title here
news title here
  چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کہاہے کہ پاکستان جمہوری ملک ہے اور کس میں ہمت ہے مارشل لا لگائے، سپریم کورٹ کے 17 ججز مارشل لا نہیں لگنے دیں گے۔ لاہور میں یوم اقبال کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ پاکستان ہمیں خیرات یا تحفے میں نہیں ملا، یہ ملک مستقل جدوجہد اور قربانیوں سے حاصل ہوا ہے۔ میری نظر میں سب سے اہم چیز تعلیم ہے، تعلیم سے متعلق کسی چیز پر سمجھوتا نہیں کروں گا، قوم کی بقا کے لیے تعلیم بہت ضروری ہے، کیا ہم نے ایسے موقع پیدا کیے جو بچہ ڈاکٹر بن کے ملک کی خدمت کرنا چاہتا ہے اسے بلا سفارش یا ایسا تعلیمی نظام میسر ہو جہاں جاکر وہ تعلیم حاصل کرسکے۔ ہمارے ملک میں یہ تعلیم کا عالم ہے، بلوچستان میں 6 ہزار پرائمری سکول پانی اور بیت الخلا کے بغیر چل رہے ہیں، بچیاں حاجت کے لیے فصلوں میں جاتی ہیں، پینے کے لیے پانی میسر نہیں، پنجاب میں اسی طرح کی صورتحال ہے، کے پی میں بتایا گیا وہاں بہت سکول ہیں جہاں پانی اور چار دیواری تعمیر نہیں ہوسکی، یہ کون دے گا؟ ہمارا ٹیکس کا پیسہ تعلیم پر خرچ نہیں ہوتا تو کہاں ہوتا ہے۔ پہلے اپنے اوپر وہ کیفیت طاری کریں جس میں قوم کی خدمت کا جذبہ ہو، بنیادی حقوق دینے کا جذبہ ہو۔ امتیازی کلچر کو ختم کرنا ہوگا، بنیادی حقوق کی ذمہ داری کس کی ہے، کیا وہ پوری کی گئی، یہ میری ڈیوٹی ہے اور اس پر پرفارم کرنے کو تیار ہوں، اس میں میری مدد کریں اگر فیل ہوجائوں تو اپنے آپ کو ساری زندگی معاف نہیں کر پائوں گا۔ یہ میری نسل اور قوم کا حق ہے، اس حق کو استعمال کریں، کہیں ہمیں تعلیم چاہیے، جو والدین اپنے بچوں کو تعلیم دینے میں کوتاہی کر رہے ہیں وہ مجرم ہیں۔ انسان کی زندگی بہت نایاب اور قیمتی ہے، ہم کیڑے مکوڑ ے نہیں، کیا یہ زندگی بے چارگی، مار کھانے، کسمپرسی اور ناجائز قید و بند کی صعوبتیں برداشت کرنے کے لیے ہے یا منہ بندی کرنے کے لیے ہے، زندگی بولنے کے لیے ہے لیکن جب کوئی بولنے کی کوشش کرتا ہے اسے بولنے نہیں دیا جاتا۔ زندگی صحت کے ساتھ جڑی ہوئی، جس ہسپتال میں گیا وہاں ایم آر آئی مشین نہیں، سی سی یو نہیں، کہیں الٹرا سائونڈ نہیں، خیبرپختونخوا میں الٹرا سائونڈ کرنے کے لیے لیڈی ڈاکٹر کی ضرورت ہے، کیا یہ رائٹ ٹو لائف ہے؟ 1300 دوائیاں جو ہسپتال میں مفت تقسیم کی جانی چاہئیں وہ نہیں مل رہیں۔ جس ووٹ کی قدر اور عزت کے لیے فرماتے ہیں اس کی عزت یہ ہے کہ لوگوں کی عزت کریں ان کو وہ حق دیں جو آئین نے ان کو فراہم کیا، میں نے بنیادی حقوق کے لیے کام کیا، کیا کوئی غلط کام کیا۔ عدلیہ مکمل آزاد ہے، میرا وعدہ ہے ہم کسی کا دبا¶ قبول نہیں کریں گے، سن کر حیرت ہوتی ہے، جب کچھ اینکروں کو بھونچال آتا ہے کہ مارشل لا آرہا ہے، کون لگا رہا ہے مارشل لا ؟ کس نے لگانے دینا ہے؟ کس میں ہمت ہے؟ یہ ملک صرف جمہوری ہے، قائداعظم اور علامہ اقبال کا تصور جمہوریت تھا اور ملک میں صرف جمہوریت رہے گی۔ پہلے میں نے کہا کہ اگر ایسا ہوا تو میں نہیں ہوں گا لیکن اب کہتا ہوں کہ جس دن شب خون مارا گیا تو سپریم کورٹ کے 17 ججز نہیں ہوں گے، یہ 17 ججز مارشل لا نہیں لگنے دیں گے، جب کہ کسی جوڈیشل مارشل لا کا تصور ذہن میں ہے نہ آئین میں ہے، یہ کسی کے دل کی خواہش یا اختراع ہوسکتی ہے، کیوں لوگوں کو اضطراب میں ڈالنے کی کوشش کی جاتی ہے، ماورائے آئین کچھ کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ قوم کے تعاون سے آپ کے حقوق کے لیے لڑرہے ہیں، جس دن محسوس کیا اس حیثیت اور طاقت میں نہیں رہے، سمجھ آئی قوم سپورٹ نہیں کررہی تو کام نہیں کریں گے۔ ہر عدالت میں جارہا ہوں، دیکھ رہے ہیں کیسی کارکردگی ہے، یہاں کوئی وضاحت دینے کے لیے نہیں آیا، کسی ذمہ داری سے اپنے آپ کو نہیں چھڑانا چاہتا، لیکن کیا انصاف کرنا عدلیہ کی ہی ذمہ داری ہے، ہر جس ادارے میں بے انصافی ہو ان کی ڈیوٹی ہے وہاں انصاف کریں کیونکہ جتنے لوگوں کے حقوق مارے جائیں گے اتنے ہی لوگ عدالت میں آئیں گے۔ قانون جدید تقاضوں کے تحت ہوتا ہے وہ قانون بدل دیں، مقننہ نے اس بارے میں کوئی قانون بنایا، سندھ میں پولیس لا 1861 کا ہے، میرے پاس کوئی وسائل نہیں کہ ججز کی تعداد بڑھائوں یا بلڈنگ بنائوں ، مجھے وسائل دیں۔ ہم پر الزام ہے عام کیسز کو ڈیل نہیں کر رہے، ہم عام کیسز کو ڈیل کر رہے ہیں، اپنی ذات کے لیے کچھ نہیں کرر ہا ہے، اپنی ذات پر لعنت بھیجتا ہوں، میں کوئی عوامی چیف جسٹس نہیں، میں اس ملک اور قوم کا چیف جسٹس ہوں۔ کسی صوبے کی بات نہیں کررہا، اپنی مرضی سے وائس چانسلر لگادیا جاتا ہے، کسی جگہ وی سی ڈھائی سال سے نہیں لگا کسی جگہ تین ماہ سے نہیں لگا، میرٹ کا کوئی تعلق نہیں، سنیارٹی کو مد نظر نہیں رکھا جاتا، یہ وہ وجوہات ہیں جس کی وجہ سے عدالتوں پر بوجھ بڑھ رہا ہے، اگر کام ٹھیک ہوں تو عدالتوں پر بوجھ نہیں آئے گا۔
news title here
شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان نے ایٹمی اور میزائل تجربات روکنے اور آج سے میزائل ٹیسٹ سائٹ بند کرنے کا اعلان کردیا۔ خبر رساں ادارے کے مطابق کم جونگ ان نے کہا کہ ایٹمی یا میزائل تجربات کی اب ضرورت نہیں۔ آج سے ایٹمی ہتھیاروں کی تجربات کے لیے قائم تنصیبات کو بند کیا جارہا ہے اور پیونگ یانگ اب مزید کسی قسم کے ایٹمی یا میزائل تجربات نہیں کرے گا۔ اب شمالی کوریا دنیا بھر میں ایٹمی تجربات ختم کرنے کی عالمی کوششوں کا حصہ بنے گا۔ شمالی کوریا کے سربراہ کی جانب سے ایٹمی اور میزائل تجربات روکنے کے اعلان کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اہم پیش رفت اور ساری دنیا کے لیے اچھی خبر قرار دے دیا ۔ اب انہیں کم جونگ ان سے ملاقات کا انتظار ہے۔

بھارتی سپریم کورٹ نے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہو ئے دائود ابراہیم کی تمام املاک کو ضبط اور جائیداد کی قرقی کا حکم برقرار رکھا ہے ۔بھارتی ٹی وی کے مطابق دائود ابراہیم کی والدہ امینہ بی اور بہن حسینہ ابراہیم پارکر کے وکیل کی جانب سے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی گئی تھی ، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ مذکورہ جائیداد اور املاک ان کی ذاتی جائیداد ہے، دائود ابراہیم سے اس کا تعلق نہیں، املاک کی ضبطی اور جائیداد کی قرقی غیر قانونی ہے،غیر قانونی اقدام سے انتظامیہ کو روکا جائے۔بھارتی عدالت کے جج آر کے اگروال نے دائود ابراہیم کی والدہ امینہ بی اور بہن حسینہ ابراہیم پارکر کے وکیل کے موقف کو تسلیم نہیں کیا ،عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ املاک اور جائیداد دائود ابراہیم سے حاصل کی گئیں ،سپریم کورٹ نے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہو ئے مرکزی حکومت کو حکم دیا کہ دائودابراہیم کی تمام املاک و جائیداد ضبط کر لی جائیں۔

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
فلم سٹار میرا نے فلم انڈسٹری میں لڑکیوں کے ساتھ ہونے والے جنسی استحصال بارے کتاب لکھنے کا فیصلہ کیا ۔ اداکارہ میرا نے  نجی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ فلم انڈسٹری میں ہر لڑکی کو بلیک میل کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور یہاں خواتین کے ساتھ وہ کچھ ہوتا ہے جو ناقابل بیان ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بازار حسن کے علاوہ اچھی فیملی سے تعلق رکھنے والی لڑکیاں یہاں آنا پسند نہیں کرتیں ۔ میرا کا کہنا تھا کہ میں اس بارے میں بہت جلد کتاب لکھوں گی جس میں وہ تمام راز افشا کروں گی ، جو آج تک میرے سینے میں دفن ہیں، میری کتاب میں بہت سے ایسے لوگوں کے چہرے سامنے آئیں گے، جو بظاہر بہت شریف ہیں۔ اور جب میرا منہ کھلے گا پھر سب کے منہ بند ہوجائیں گے اور لوگوں کے سامنے تمام حقائق آئیں گے۔ اداکارہ نے مزید کہا کہ شوبز کی لڑکیوں کو جنسی طور پر نہ صرف پاکستان بلکہ انڈیا میں بھی ہراساں کیا جاتا ہے، لیکن پہلے لڑکیاں خاموش رہتی تھیں اور اب وہ بولنا شروع ہوگئی ہیں اور میرے خیال میں یہ بالکل درست ہے، جو لوگ شوبز کی لڑکیوں کے ساتھ ایسا کرتے ہیں ان کے بارے میں سب کو پتہ چلنا چاہئے، تاکہ دوبارہ کسی کو ایسا کرنے کی ہمت نہ ہو۔ میرا نے کہا کہ شوبز کے علاوہ زندگی کے مختلف شعبوں میں بھی یہ سلسلہ بہت پرانا ہے۔ مگر اب سوشل میڈیا کی بدولت خواتین کو آواز بلند کرنے کا ایک بہترین سہارا میسر آچکا ہے اور اب اس سے خواتین کو بہت فائدہ پہنچے گا۔
news title here
news title here
news title here

قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ فواد عالم کو سلیکٹ کرنے کیلئے ہی کیمپ میں بلایا تھا لیکن ٹور کیلئے 25 میں سے صرف 16 لڑکے ہی منتخب کرنے ہوتے ہیں۔ اگر کوئی اس ٹور میں منتخب نہیں ہوسکا تو اگلی بار ٹیم کا حصہ بن جائے گا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے دورہ انگلینڈ اور  آئر لینڈ کے حوالے سے ٹیم پلان اور لڑکوں کی سلیکشن پر بریفنگ دی۔ ٹیم کی سلیکشن اچھی ہوئی ہے ، ہمیں امید ہے کہ دورہ کامیاب رہے گا۔ ہر کھلاڑی کو میرٹ پر سلیکٹ کیا ہے، ٹیم میں نئے لڑکے ہیں جو اچھا پرفارم کرنے کی کوشش کریں گے۔ کوشش کر رہے ہیں کہ ٹیم کو زیادہ سے زیادہ اعتماد دیا جائے۔ فواد عالم کی عدم سلیکشن کے سوال پر سرفراز احمد نے کہا کہ فواد کو پرفارمنس دیکھ کر ہی کیمپ میں بلایا تھا لیکن ٹیم میں ہر کوئی سلیکٹ نہیں ہوتا، انکی تکنیک کا کوئی مسئلہ نہیں ہے لیکن ٹیم کیلئے 16 کھلاڑیوں کا انتخاب کرنا ہوتا ہے، میرا بس چلے تو 25 کو منتخب کرلوں ۔ تمام 25 لڑکے ٹیم کا حصہ ہیں کوئی اگر اس ٹور میں منتخب نہیں ہوسکا تو اگلے ٹور میں منتخب ہوجائے گا۔ سرفراز احمد کا مزید کہنا تھا کہ یاسر شاہ ان فٹ ہے ، انگلش کنڈیشنز کے مطابق اگر ہمارے پاس یاسر ہوتا تو اسے لئے کر جاتے ۔ اسکی غیر موجودگی میں ہم نے 4  سپنرز بلائے اور ان میں سے شاداب خان کو چنا کیونکہ اس کی گیند بازی میں ورائٹی موجود ہے، انگلینڈ میں حارث سہیل اور اسد شفیق کا بھی استعمال کر سکتے ہیں ۔ پہلے بیٹنگ آتی ہے اور اگر تسلی بخش سکور نہیں کر پاتے تب بھی ہماری بائولنگ میں اتنا دم ہے کہ ہم میچ میں فائٹ کر سکیں ۔

news title here

ٹی ٹونٹی کرکٹ میں سب سے زیادہ رنز اور 21سنچریاں بنانے والے کرس گیل کنگز الیون پنجاب کے ٹیم ڈائریکٹر وریندر سہواگ کے شکر گزار ہیں جنہوں نے ان کو نیلامی کے دوران آخری لمحات میں ٹیم کیلئے خرید کر آئی پی ایل کو بچا لیا۔ 11ویں ایڈیشن کے اولین سنچری میکر آئی پی ایل میں کھلاڑیوں کی نیلامی کے دوران2 مرتبہ بولی نہ لگنے پر کسی ٹیم کا حصہ نہیں بن سکے تھے لیکن دو مسلسل میچز میں مرد میدان کا ایوارڈ لے کر انہوں نے اپنا انتخاب درست ثابت کر دیا۔ کرس گیل کے مطابق انہیں نیلامی میں نظر انداز کئے جانے کا کوئی دکھ نہیں ہوا بلکہ وہ ثابت قدم رہے اور لوگوں کی اس بات سے متفق نہیں کہ انہیں خود کو ثابت کرنا ہے۔ جارحانہ بیٹسمین کے مطابق وہ خود کو ہر سطح پر ثابت کر چکے جس کا ثبوت ان کی کارکردگی ہے۔ 

news title here

پاکستان سے کرکٹ تعلقات کے حوالے سے بھارتی ڈھٹائی برقرار ہے ، زرتلافی کے کیس میں مضبوط پاکستانی پوزیشن کو دیکھتے ہوئے تاخیری حربے بھی استعمال کرنا شروع کر دیئے گئے ، بی سی سی آئی کی کوشش ہے کہ سماعت کی تاریخ آگے بڑھا دی جائے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان نے باہمی سیریز کھیلنے کے معاہدے کی پاسداری نہ کرنے پر آئی سی سی کی تنازعات کمیٹی میں بھارت کیخلاف70 ملین ڈالر ہرجانے کا کیس کیا ، جس کیلئے کمیٹی قائم کردی گئی ، جبکہ سماعت اکتوبر میں ہوگی۔ٍ ذرائع نے بتایا کہ بھارتی ڈھٹائی برقرار ہے، زرتلافی کے کیس میں مضبوط پاکستانی پوزیشن کو دیکھتے ہوئے اب اس نے تاخیری حربے بھی استعمال کرنا شروع کر دیئے ہیں، بی سی سی آئی کی کوشش ہے کہ سماعت کی تاریخ آگے بڑھا دی جائے، ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ بی سی سی آئی اس ایک نقطے پر اپنا کیس لڑے گاکہ  پاکستان سے معاہدہ بگ تھری کی حمایت کے بدلے سیریز کھیلنے پر تھا اب چونکہ وہ ماڈل نہیں رہا اور اس کی وجہ سے ہمیں مالی نقصان بھی ہوچکا، اس لئے پی سی بی سے کنٹریکٹ بھی ختم ہوچکا۔ بھارتی حکام نے کیس ہارنے سے بچنے کیلئے اپنی تیاریاں شروع کردی ہیں۔ اس سلسلے میں قائم مقام سیکریٹری امیتابھ چوہدری نے 2014 کے بعد بی سی سی آئی کے اہم عہدوں پر کام کرنے والے تمام آفیشلز کو خطوط بھیجے ہیں، سب سے کہا گیا کہ اپنے دور میں پاکستان کرکٹ بورڈ سے ہونے والی بات چیت کے جتنے بھی شواہد اور ریکارڈ موجود ہیں وہ ان سے بورڈ کو آگاہ کریں، ان حکام میں آئی سی سی کے موجودہ چیئرمین ششانک منوہر، این سری نواسن، سنجے پٹیل، انوراگ ٹھاکر اور آئی پی ایل کے سابق چیف آپریٹنگ آفیسر سندر رامن شامل ہیں۔ بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق امیتابھ چوہدری نے آئی سی سی کو بھی ایک خط بھیجا جس میں اس سے بورڈ میٹنگز کے دوران پاکستان اور بھارت کی باہمی کرکٹ سے متعلق ہونے والی بات چیت کا ریکارڈ فراہم کرنے کو کہا گیا۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ بی سی سی آئی کو ابھی تک سابق سربراہان کی جانب سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا مگر اس بات کا امکان موجود ہے کہ جلد ہی سب مل کر اپنا موقف پیش کردیں گے، پاکستان کے ساتھ اس معاملے کو سپریم کورٹ کی مقرر کردہ کمیٹی آف ایڈمنسٹریٹرز نہیں بلکہ خود بی سی سی آئی حکام ہی دیکھ رہے ہیں۔ امیتابھ چوہدری نے رابطہ کرنے پر دعویٰ کیا کہ بھارت کا پاکستان بورڈ کے خلاف کیس مضبوط ہے۔ دریں اثنا پی سی بی کے چیئرمین نجم سیٹھی اور چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد کے دورہ بھارت کا وقت بھی آ گیا ہے، دونوں ہفتے سے کولکتہ میں شروع ہونے والی آئی سی سی میٹنگز میں شریک ہوں گے، ڈھائی برس میں یہ پہلا موقع ہے جب پی سی بی کا وفد بھارت کا دورہ کررہا ہے، آخری مرتبہ 2015 میں اس وقت کے پی سی بی سربراہ شہریار خان ممبئی گئے تھے، مگر انتہا پسندوں کے بی سی سی آئی ہیڈکوارٹر میں گھسنے کے بعد بھارتی بورڈ حکام سے ان کی بات چیت نہیں ہوسکی تھی، اس بار پی سی بی حکام کی کوشش ہوگی کہ اپنا موقف بھرپور انداز میں پیش کیا جائے۔

news title here

 بالی وڈ اداکارہ پریٹی زنٹا کی معروف ویسٹ انڈین کرکٹر کرس گیل کے ساتھ سیلفی سامنے آئی ہے۔ یہ سیلفی  پریٹی نے انڈین پریمیئرلیگ کے کرک میش ایونٹ کے دوران لی ہے جب ان کی ٹیم نے مخالف ٹیم کو شکست دےکر ایک ٹرافی جیتی تھی۔ اس میں پریٹی ٹرافی تھامے موجود ہیں۔ یہ سیلفی سوشل میڈیا پر مقبول ہورہی ہے۔ آئی پی ایل کے گزشتہ ایڈیشنز میں جارح مزاج بلے باز کرس گیل رائل چیلنجر بنگلور کا حصہ رہے ہیں تاہم اس سال وہ کنگز الیون پنجاب کا حصہ ہیں جس کی مالک پریٹی زنٹا ہیں۔

news title here
news title here
ناسا کی سینئر خاتون انجینئر کا کہنا ہے کہ چاند پر پہلا قدم ایک مرد نے رکھا تھا، تاہم اب مریخ میں پہلا انسانی قدم کسی خاتون خلا نورد کا ہونا چاہئے۔ ناسا کے شعبہ انجینئرنگ کی سینئر خاتون رکن نے بین الاقوامی نشریاتی ادارے سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ناسا میں کئی خواتین خلا نورد اپنی خدمات انجام دے رہی ہیں،  لیکن اس کے باوجود کسی خاتون کو چاند پر نہیں بھیجا گیا بلکہ اب تک چاند پر بھیجے جانے والے درجنوں خلا نورد مرد ہی ہیں اس لئے اب مریخ پر بھیجے گئے مشن کے لئے کسی خاتون خلا نورد کو منتخب کرنا چاہئے۔ خاتون انجینئر الیسن مک انتارے نے کہا کہ چاند پر درجنوں مرد چہل قدمی کر چکے ہیں، لیکن اب مریخ پر پہلا انسانی قدم کسی خاتون کا ہونا چاہئے، ناسا میں اہل خواتین کی بڑی تعداد موجود ہے بلکہ میرے شعبے کے ڈائریکٹر کے عہدے پر بھی ایک خاتون کام کر چکی ہیں،  اسی طرح ڈویږن انچارج کی ذمہ داریاں بھی ایک خاتون نبھا رہی ہیں اور ناسا میں کئی خواتین خلائ نورد بھی موجود ہیں جو مریخ پر بھی خدمات انجام دے سکتی ہیں۔ انہوں نے شکوہ کیا کہ ناسا نے 40 سال قبل خاتون خلا نورد کو اپنی ٹیم میں شامل کرنے کا آغاز کیا تھا لیکن اب تک کسی ایک کو بھی چاند پر نہیں بھیجا گیا، جس سے گمان ہوتا ہے کہ شاید میرا ادارہ بھی مرد کی حاکمیت کے تصور کی پیروی کرتا ہے، جہاں خواتین کو آگے بڑھنے کے کم مواقع فراہم کئے جاتے ہیں یا شاید خواتین خلا نوردوں کو سب سے بلند مدار پر بھیجنے کے قابل نہیں سمجھا جاتا۔ واضح رہے کہ خاتون خلا نورد کیرن نیبرگ ناسا کے انٹر نیشنل سپیس سٹیشن پر چھ ماہ تک ایک تحقیقاتی مہم کا حصہ رہی ہیں، جہاں انہوں نے مرد خلا نوردوں کے ساتھ کام بھی کیا،  لیکن اس کے باوجود تاحال کسی خاتون خلا نورد کو چاند پر نہیں بھیجا گیا۔ ناسا کی خاتون انجینئر کی جانب سے خاتون خلا نورد کو مریخ پر بھیجنے کی تجویز کا تمام ہی حلقوں کی جانب سے خیر مقدم کیا گیا اور گمان ہے کہ اس پر عمل بھی کرلیا جائے گا۔

news title here
news title here
دنیا میں دوسرے سب سے بڑے اور 700 سالہ درخت کا انسانوں اور جانوروں کی طرح ڈرپ لگا کر علاج کیا جارہا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ جس طرح ہم رگوں میں سوئی لگاکر ڈرپ کی دوائی داخل کرکے شفا پاتے ہیں، عین اسی طرح درختوں کو ڈرپ لگا کر انہیں تندرست کرنا ممکن ہے یا کم از کم اس تجربے سے یہی ثابت ہوا ۔ اس درخت کو پیرلامری کا نام دیا گیا ، جو بھارتی شہر محبوب نگر میں موجود ہے۔ تین ایکڑ وسیع رقبے پر پھیلا ہوا یہ درخت اپنی نوعیت کا عجیب درخت ہے جو دنیا میں برگد کا دوسرا بڑا درخت بھی ہے۔ ایک عرصے سے دیمک اسے چاٹ رہی اور اس کی تندرست شاخیں کمزور ہو کر گر رہی ہیں۔ گزشتہ برس دسمبر میں اس درخت تک عوامی رسائی روک دی گئی جو اسے دور دور سے دیکھنے آتے تھے۔ اس کے بعد ماہرین نے اس کا علاج شروع کیا۔ سب سے پہلے درخت میں باریک سوراخ کرکے ایک اس میں کیڑے مار دوا کلوروپائریفوس داخل گئی لیکن اس سے کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ اس کے بعد درخت کے متاثرہ حصوں میں جگہ جگہ ڈرپ لگائی گئی، جن کی بوتلوں میں ہلکی شدت کی کلوروپائریفوس موجود تھی۔

news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
news title here
آئل گلینڈ بلاک ہونے کی وجہ سے آنکھ پر خصوصاً پلکوں کے آس پاس سرخ رنگ کا دانہ نکل آتا ہے ۔ یہ دانہ بیکٹیریا کی وجہ سے بھی ہو سکتا ہے ۔ اکثر ان دانوں کا صحت پر کوئی اثر مرتب نہیں ہوتا  اور کسی طبی علاج کی ضرورت نہیں پڑتی، لیکن اس کا ہونا چہرے پر بد نما لگتا ہے اور تکلیف کا باعث بھی بنتا ہے ۔ آنکھ کا دانہ خود ہی ٹھیک بھی ہوجاتا ہے لیکن اگر صفائی کا خیال اور احتیاط نہ رکھی جائے تو یہ بگڑ کر بینائی کو بھی متاثر کر سکتا ہے ۔ آنکھ میں دانہ ہوجائے تو آنکھ کو مسلنے سے گریز کریں ۔ ماہرین اس عمل کو خطرناک قرار دیتے ہیں ۔ ایسا کرنے سے آپ کی آنکھ کی بینائی متاثر ہونے کے خطرات بڑھ جاتے ہیں ۔ اگر ایسا کرنا ضروری ہے تو پہلے ہاتھوں کو اچھی طرح دھو لیں، پھر نرمی سے آنکھوں پر انگلیوں کی مدد سے مساج کریں۔ آنکھوں کو ٹھنڈے پانی سے اچھی طرح دھوئیں ۔ آنکھوں کو بہتے پانی سے دھوئیں یعنی نلکے کے نیچے آنکھ کر لیں ۔ کپڑا نیم گرم کر کے آنکھ پہ رکھ لیں۔ شہد کو سرمے والی سلائی کی مدد سے آنکھوں میں لگائیں۔ عرق گلاب آنکھوں میں ڈال کر کچھ دیر کے لئے آنکھیں بند کر لیں ۔ ہلدی ایک قدرتی اینٹی بائیوٹک ہے ایک چائے کا چمچ ہلدی کو دو کپ پانی میں ڈال کے اتنا ابالیں کے پانی آدھا رہ جائے اس محلول کو بریک کپڑے سے چھان لیں اور ٹھنڈا ہونے پرآئی ڈراپر کے ساتھ دن میں تین بار آنکھوں میں ڈالیں ۔ ایک چائے کا چمچ دھنیے کے بیج کو ایک کپ پانی میں ڈال کے ابالیں،  پانی کو ٹھنڈا کر لیں چوبیس گھنٹے میں تین بار اس پانی سے آنکھ کو دھویں۔ ٹی بیگز کو گرم پانی میں ڈالیں پھر اسے ٹھنڈا ہونے دیں اور آنکھ پر لگائیں دانہ ٹھیک ہو جائے گا ۔ آنکھ کے دانے کے لئے ایلوویرا کا پتا انتہائی مفید ہے۔ ایلوویرا کو کاٹ کر اس کے مادے کو آنکھ میں دانے والی جگہ پر لگائیں جلد اپنی مشکل سے نجات پائیں۔ کسی صاف کپڑے کو گرم پانی میں بھگو کر اسے اپنی آنکھ پر دانے والی حصے پر لگائیں۔ اس بات کا خیال رہے کہ پانی بہت زیادہ گرم نہ ہو۔ گرم پٹی کو 5سے10منٹ تک آنکھ پر لگا رہنے دیں، اس کی وجہ سے نہ صرف آپ کا دانہ جلد ٹھیک ہوجائے گا بلکہ آپ کو وقتی سکون بھی ملے گا۔ ایک آلو کو اچھی طرح دھونے کے بعد باریک کاٹ لیں اسے کسی باریک کپڑے میں ڈالیں اور کپڑے کو آنکھ پر چند منٹ تک لگائیں۔ اس کے بعد آنکھ کو نیم گرم پانی سے دھو لیں یہ عمل دن میں دو سے تین بار کریں۔ امرود کے چند پتوں کو دھوئیں اور گرم پانی میں بھگو کر آنکھ کے اوپر لگائیں۔ دس منٹ تک لگا رہنے دیں یہ عمل بھی دن میں دو سے تین بار کرنے سے آپ کا دانہ ٹھیک ہوجائے گا۔
news title here
ایک کامیاب انسان بننے کیلئے ضروری ہے  کہ آپ کی ذہنی صحت بھی  اچھی ہو۔ ذہنی صحت  کے بہتر ہونے سے آپ کو بے چینی سے نجات ملتی ہے اور آپ کے ذہن کو فیصلے لینے میں آسانی ہوتی ہے۔ جہاں ایک انسان کی دماغی صحت کئی طریقوں سے بہتر کی جاسکتی ہے ، سائنسدانوں نے ایک آسان طریقہ ڈھونڈ نکالا جس کی مدد سے دماغی صحت کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔ ایک نئی ریسرچ کے مطابق  وہ لوگ  جو کچا کھانا کھاتے ہیں، ان میں ڈپریشن اور دماغی بیماریاں کم پائی جاتی ہیں۔ چار سو سے زائد لوگوں کو  پھل اور سبزیاں کھانے کا کہا گیا جن کی عمر 18 سے 25 کے درمیان تھی، نتیجے میں یہ پتا لگا کہ وہ لوگ جنہوں نے کچے پھل اور سبزیاں کھائیں ان کی دماغی صحت دوسرے  لوگوں کے مقابلے میں زیادہ بہتر دیکھی گئی۔  سائنسدانوں کے مطابق گاجر، کیلے، سیب، mہری سبزیاں، mچکوترا ، mپالک، سٹرس پھل،  mتازہ بیریز، ککڑی کھانے سے ہماری دماغی صحت بہتر ہوسکتی ہے۔ اجوائن، گوبھی، لال پیاز، ٹماٹر، mmمشروم مزاج کو بہتر بناتے ہیں۔ مطالعے میں لکھا گیا کہ کچے پھل اور سبزیاں  آپ کے جسم اور ذہن کو زیادہ نیوٹریشن فراہم کرتی ہیں جس کی مدد سے آپ کی دماغی صحت اور مزاج  میں بہتری آتی ہے۔

عوامی سروے

سوال: آپ کے خیال میں پاکستان کا اگلا وزیراعظم کون ہونا چاہیے؟