تازہ ترینخبریںدنیا سے

عالمی یوم قدس ، صیہونیوں کے خلاف ملت اسلامیہ کے اتحاد کا مظہر

آج عالمی یوم القدس ہے اور دنیا بھر کے مسلمان اس دن مظلوم فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور ظالم صیہونی حکومت کے خلاف اپنی نفرت کا بھر پور انداز میں اظہار کر رہے ہیں۔ جس کی خبریں پاکستان ، ہندوستان ، افغانستان اور ترکی سمیت دنیا کے مختلف ممالک سے موصول ہورہی ہیں۔ اسلامی جمہوریہ ایران میں بھی اسی تناظر میں ایک کانفرنس کا انعقاد عمل میں لایا گيا ۔ مقررین نے عالمی یوم القدس کی اہمیت اور مسئلہ فلسطین کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کرنے کے سلسلے میں بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی رح کے کردار پر روشنی ڈالی۔

مقررین نے کہا ہے کہ حضرت امام خمینی (رح) نے یوم قدس کو عالمی کرنے کے ساتھ مسئلہ فلسطین کو عالم اسلام کی ترجیحات میں سے قرار دیا۔ مقررین نے آج تھران میں علاقائی سیاست و سیکورٹی میں رونما ہونے والی تبدیلیوں کے پرتو میں عالمی یوم القدس کے حوالے سے منعقدہ خصوصی پریس کانفرنس میں عالمی یوم القدس کو بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی (رح) کی فکر کی علامت قرار دیا اور کہا کہ امام خمینی نے مسئلہ فلسطین کو عرب قومیت کے دائرے سے نکال کر ملت اسلامیہ کے مسئلے میں تبدیل کردیا اور تین سو ملین عرب فوج کو مل اسلامیہ کی ڈیڑھ ارب فوج میں بدل دیا۔

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ میں قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے سربراہ نے مزید کہا کہ اسلام میں قدس شریف اور اس کا اعلی و ارفع مقام سرحدوں سے بالاتر رہا ہے اور قدس کا تعلق ساری ملت اسلامیہ سے ہے۔ مقررین نے کہا کہ حضرت امام خمینی (رح) نے اسلامی انقلاب کی کامیابی کے بعد اور مسئلہ فلسطین اور اس مسئلے کو علاقائی و عالمی سطح پر ہمیشہ باقی و زندہ رکھنے کے لئے جمعۃ الوداع کو یوم القدس کے طور پر منانے کا اعلان کیا۔اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ میں قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے سربراہ نے عالم اسلام اور علاقے میں رونما ہونے والی تبدیلیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے تاکید کی کہ تسلط پسند نظام اس کوشش میں ہے کہ سازشوں اور خطرناک منصوبوں پر عمل درآمد کے ساتھ اسلامی ملکوں میں خانہ جنگی شروع کروادے تاکہ ملت اسلامیہ کی توانائیوں اور صلاحیتوں پر ضرب لگا کر ان کو ماضی سے زیادہ کمزور کردے۔ مقررین نے مزید کہا کہ جب سے فلسطین کی سرزمین میں صیہونیوں کو لا کر بسایا جانا شروع کیا گيا ہے اسے زمانے سے ملت فلسطین مسلمانوں کے ان دشنموں کے خلاف برسرپیکار ہے۔

اس کانفرنس میں فلسطینی شخصیات نے بھی عالمی یوم القدس کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالی اور صیہونیوں کے خلاف مسلمانوں کو متحد کرنے کے سلسلے میں بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی رح کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔

بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی (رح)نے مسلمانوں کے قبلۂ اول بیت المقدس کو صیہونیوں کے چنگل سے آزاد کرانے، عالمی سطح پر اس مسئلے کو اجاگر کرنے اورمسلمانوں کے خلاف صیہونیوں کی سازشوں کو طشت از بام کرنے کیلئے ماہ رمضان المبارک کے جمعتہ الوداع کو عالمی یوم القدس کا نام دیا ہے اوراس روز دنیا بھرکے حریت پسند اس فرمان پر لبیک کہتے ہوئے امریکہ مردہ باد،اسرائیل مردہ باد اورعالمی صہیونیزم مردہ باد کے فلک شگاف نعرے لگا کر قبلئہ اول کی آزادی کیلئے گھروں سے باہر نکلتے ہیں۔

یوم القدس کے دن تمام مسلمان گھروں سے باہر نکل آئیں گے اور ان کا نعرہ ایک ہوگا، انکی آواز ایک ہوگی، ان کا دشمن ایک ہوگا، اور انکا ہدف ایک ہوگا، اور یہ یوم القدس مسلمانوں کے درمیان اتحاد و وحدت کا پیکر بن کر سامنے آئے گا۔ یوم القدس منانے کے مقاصد میں سے ایک مقصد لوگوں کی توجہ مسلمانوں کے اتحاد اور بیت المقدس کی جانب مبذول کرانا ہے، الحمداللہ اب روز بہ روز یوم القدس اپنی بلندیوں کو چھوتا ہوا نظر آرہا ہے۔ اگر مسلمانان عالم کا یوم القدس منانے کا انداز اسی طرح اور اسی سطح پر بڑھتا رہا تو عنقریب ہم فلسطین اور قبلہ اول کو آزاد ہوتا ہوا دیکھیں گے۔ انشاءاللہ

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ مجلس شورائے اسلامی کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے رہنما خلیل الحیہ سے تہران میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ فلسطین اور بیت المقدس کو اسلامی جمہوریہ ایران میں بنیادی حیثیت حاصل ہے ۔ انھوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے بانی حضرت امام خمینی رح نے بیت المقدس اور مسئلہ فلسطین کو عالم اسلام کا سب سے بڑا مسئلہ قرار دیا اور آپ نے اپنی درایت و بصیرت سے رمضان المبارک کے آخری جمعے کو یوم القدس قرار دیا تاکہ بیت المقدس اور فلسطین کا مسئلہ مسلمانان عالم اور دنیا کی تمام حریت پسند قوموں کے اذہان میں ہمیشہ زندہ رہے۔

ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا کہ امت مسلمہ، مزاحمتی گروہوں اور عالم اسلام کے سبھی ملکوں کو چاہئے کہ غاصب صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات کی مخالفت میں سنجیدگی کا مظاہرہ کریں ۔ انھوں نے کہا کہ یقینی طور پر فلسطینی گروہوں میں اتحاد و یکجہتی انھیں کامیاب بنانے میں بہت زیادہ موثر واقع ہوگی۔

فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے رہنما خلیل الحیہ نے بھی اس ملاقات میں کہا کہ غاصب صیہونی اس بات کی کوشش کر رہے ہیں کہ مسلمانوں سے مسجد الاقصی چھین کرپورے بیت المقدس میں غاصب صیہونیوں کو آباد کر دیا جائے مگر مدافعین حرم، عوام اور مزاحمتی گروہوں کی سعی و کوشش اور جدوجہد سے بیت المقدس اور مسجد الاقصی مزاحمت کے محور و مرکز کی حیثیت سے ہمیشہ باقی رہے گی۔

انھوں نے ایران کی سپاہ قدس کے شہید کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کی غاصب صیہونیوں کے خلاف جدوجہد میں شجاعت ودلیری کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ا‎سی شجاعت و بہادری کے نتیجے میں مزاحمتی گروہوں کی صورت حال بہتر ہوئی ہے ۔

فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے رہنما خلیل الحیہ اسلامی جمہوریہ ایران کے اعلی حکام سے ملاقات و گفتگو کے لئے بدھ کو ایران کے دورے پر تہران پہنچے۔

دریں اثنا ایران کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے ترجمان محمود عباس زادہ مشکینی نے بھی خانہ ملت نیوز ایجنسی سے گفتگو میں عالمی یوم القدس کے موقع پر ملین مارچ اور وسیع پیمانے پر کئے جانے والے مظاہروں کی اہمیت کے بارے میں کہا ہے کہ اس دن دنیا کی حریت پسند قومیں سامراج و استکبار کی شرمناک پالیسیوں کے خلاف احتجاج اور ان پالیسیوں سے اپنی نفرت و بیزاری کا اظہار کریں گی۔

تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سربراہ آیت اللہ صادق آملی لاریجانی نے بھی عالمی یوم القدس کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے مسئلہ فلسطین اور بیت المقدس کو عالم اسلام کا سب سے اہم مسئلہ قرار دیا اور کہا کہ یوم القدس عالم اسلام کی مزاحمت کا مظہر ہے ۔ انھوں نے کہا کہ مسلم دنیا نے رمضان المبارک کے جمعتہ الوداع کو عالمی یوم قدس قرار دینے میں امام خمینی رح کی حکمت و خرد مندی اور بصیرت کی گہرائی کو ماضی سے کہیں زیادہ درک کرلیا ہے۔

ایران کی آئین کی نگراں کونسل کے سیکریٹری آیت اللہ احمد جنتی نے بھی عالمی یوم القدس کی آمد کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی یوم القدس اور فلسطینیوں کی مزاحمت کی بدولت غاصب صیہونیوں سے عالمی نفرت و بیزاری مسلسل بڑھتی جا رہی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button