تازہ ترینجرم کہانیخبریں

ماڈل ٹاؤن ڈویژن پولیس کی جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کریک ڈاؤن رپورٹ جاری

لاہور( میاں عمران ارشد ) ماڈل ٹاؤن ڈویژن پولیس کا جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کریک ڈاؤن ماہ اکتوبر کی کارکردگی رپورٹ جاری کر دی گئ

ایس پی ماڈل ٹاؤن حسن جاوید بھٹی نے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتلایا کہ ماڈل ٹاؤن ڈویژن پولیس نے ایک ماہ میں 898 ملزمان کو گرفتار کیا جن میں 137 اشتہاری، 468 عدالتی مفروران اور 168 ریکارڈ یافتہ مجرمان گرفتار کیے گئے۔ اے کیٹگری کے 19 اشتہاری مجرمانہ، عدالتی مفرور 27 جبکہ عادی ریکارڈیافتہ 53 ملزمان کو گرفتار کیا گیا

سنگین واردات کرنے والے 25 گینگزکو گرفتار کر کے ملزمان کے قبضہ سے لاکھ روپے کی کی ریکوری کی گئی ناجائز اسلحہ کے خلاف کاروائی کے دوران 130 مقدمات درج کیے اور ملزمان کے قبضہ سے 11 رائفل، 2 بندوق اور 102 پستول برآمد ہوئی منشیات فروشوں کے خلاف کاروائی کے دوران 189 مقدمات درج کیے گے 87 مقدمات شراب فروشی کے درج کیے ملزمان کے قبضہ سے 70 کلو سے زائد چرس 1512 بوتل شراب, 1 کلو گرام بھنگ, 30 گرام آئس, 330 گرام ہیروئن برآمد ہوئی ملزمان سے کروڑوں مالیت کی منشیات برآمد کی گئی ملزمان کو خصوصی کریک ڈاون کرتے تعلیمی اداروں کے گرد و نواح سمیت مختلف مقامات سے گرفتار کیا گیا,

قمار بازی ایکٹ کی خلاف ورزی کرنے پر 15 ملزمان کو گرفتار کیا گیا
نیشنل ایکشن پلان کو ملحوظ خاطر رکھتے کرایہ داری ایکٹ کی خلاف ورزی پر 324 مقدمات درج کیے حساس مقامات اور لاؤڈ سپیکر کی خلاف ورزی پر 152 مقدمات کا اندراج کیا گیا,

ایس پی ماڈل ٹاؤن حسن جاوید بھٹی نے انسداد پتنگ بازی کےحوالہ بتلایا کہ ڈویژن بھر میں کڑی نگرانی کرتے ہوئے 42 مقدمات کا اندراج کیا گیا, ملزمان کے قبضہ سے ہزاروں مالیت کی پتنگیں اور ڈور برآمد ہوئی,ہوائی فائرنگ اور آتش بازی کرنے پر 13 مقدمات درج کر کے ملزمان کو گرفتار کیا گیا
ون ویلنگ کرنے پر 37 مقدمات کا اندراج کر کے منچلوں کو گرفتار کیا گیا,گداگروں کے خلاف خصوصی کریک ڈاؤن کے دوران 113 مقدمات درج کیے گے مزید کاروائیاں عمل میں لائی جا رہی ہیں

قحبہ خانہ چلانے والوں کے خلاف کریک ڈاون کرتے 10 مقدمات درج کر کے 22 ملزمان کو گرفتار کیاپابندی کے باوجود بلیو لائٹ اور کالے شیشے استعمال کرنے پر 64 مقدمات کا اندراج کیا گیا

انسدادی کاروائیاں کرتے ہوئے 893 ملزمان کو گرفتار کیا گیا ۔ ایس پی ماڈل ٹاؤن حسن جاوید بھٹی کا کہنا تھا کہ امن و امان کی صورتحال کو بہتر رکھنے کے لیے روزانہ کی بنیاد پر سرچ آپریشنز کیے جا رہے ہیں جرائم کو کنٹرول کرنا اولین ترجیحات میں شامل ہے.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button