تازہ ترینجرم کہانیخبریں

پولیس اہلکار کے تشدد کے خوف سے کنویں میں چھلانگ لگانے والا شخص ہلاک

صوبہ سندھ کے شہر ٹنڈو محمد خان میں پولیس اہلکار کے عتاب سے بچنے کے لیے ایک ہندو شخص زہریلے پانی کے حامل کنویں میں چھلانگ لگا کر ہلاک ہو گیا۔

متوفی کے اہل خانہ نے دعویٰ کیا کہ پولیس اہلکار کی جانب سے بدترین تشدد کا نشانہ بنائے جانے کے بعد اس نے انتہائی قدم اٹھایا۔

ٹنڈو محمد خان کے ذرائع نے بتایا کہ پریم کوہلی کے 35 سالہ بیٹے عالم سول ہسپتال گیا تھا جہاں اس کی وہاں ڈیوٹی پر موجود پولیس اہلکار قادر کے ساتھ تلخ کلامی ہوئی۔

عالم کے اہلخانہ نے دعویٰ کیا کہ پولیس اہلکار نے انہیں بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور ایک کلوز سرکٹ ٹیلی ویژن کیمرے نے اس واقعہ کو ریکارڈ کر لیا، کسی طرح عالم خود پولیس والے سے بچنے کے لیے ہسپتال سے بھاگا اور کنویں میں چھلانگ لگا دی جو اس کے لیے جان لیوا ثابت ہوئی۔

متوفی کے لواحقین نے احتجاج کرتے ہوئے حیدر آباد سجاول روڈ بلاک کر دی اور صحافیوں کو بتایا کہ بخار کی وجہ سے عالم دو روز سے ہسپتال میں زیر علاج تھا۔

انہوں نے پولیس اہلکار کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا، عالم پانڈھی واہ کا رہائشی تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button