تازہ ترینخبریںپاکستان سے

آئی ایم ایف کا ٹیکس اصلاحات جاری رکھنے کا مطالبہ

نیویارکٜ آئی ایم ایف نے پاکستان سے متعلق چھٹے اقتصادی جائزے کی منظوری دے دی جس کے تحت ایک ارب ڈالر قرض مل سکے گا۔

آئی ایم ایف کی نائب ایم ڈی انٹونی سایہ نے پاکستان کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ قرض پروگرام کے ذریعے کرونا کے باعث متاثر ہونے والی پاکستان کی معیشت بحال ہورہی ہے اور مالی اثاثے مستحکم ہورہے ہیں۔

آئی ایم ایف نے ساتھ ہی خبردار بھی کیا کہ کرنٹ اکائونٹ خسارے میں اضافے اور روپے کی قدر میں کمی سے مقامی قیمتوں پر دبا¶ برقرار ہے۔

رواں سال پاکستان کی جی ڈی پی 4فیصد تک پہنچنے کی توقع ہے لیکن کرونا کے دھچکوں، سخت عالمی معاشی حالات، جغرافیائی سیاسی کشیدگیوں میں اضافے اور معاشی اصلاحات کے نفاذ میں تاخیر سے پاکستان کی معیشت بدستور نازک صورتحال سے دوچار ہے۔

آئی ایم ایف نے سٹیٹ بینک ترمیمی بل کی منظوری کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ قیمتوں اور مالی استحکام کے لیے سٹیٹ بینک کی خود مختاری ضروری ہے۔

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے پاکستان پر زور دیا کہ وہ ذاتی انکم ٹیکس میں اصلاحات اور جنرل سیلز ٹیکس میں ہم آہنگی کی رفتار کو برقرار رکھے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button