سپیشل رپورٹ

مغرب جنگ میں کودنا چاہتا ہے تو ہم بھی تیار ہیں، روس

روس نے مغرب کو خبردار کیا ہے کہ اگر وہ یوکرین کی جنگ میں کودنا چاہتا ہے تو پھر وہ بھی اس کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

غیرملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق قائم مقام روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے واضح کردیا ہے کہ اگر امریکا اور اس کے اتحادی چاہتے ہیں کہ یوکرین کے تنازع کا فیصلہ میدان جنگ میں ہی کرنا ہے تو ہم اس کے لیے تیار ہیں۔

اپنی دوبارہ تقرری کے روسی پارلیمنٹ کے ایوان بالا کے ارکان سے بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ہمارا اندازہ ہے کہ مغربی اقوام مذاکرات کے ذریعے دشمنی کے خاتمے کی کوئی خواہش نہیں رکھتیں۔

تجربہ کار سفارت کار کا کہنا تھا اگروہ چاہتے ہیں کہ فیصلہ میدان جنگ میں ہو، یہ ان کا حق ہے اور وہ اسے میدان جنگ میں ہی دیکھیں گے۔

سرگئی لاوروف کی جانب سے اس بات کا اعادہ کیا گیا کہ ماسکو یوکرین تنازع میں اپنے مقاصد کو سفارتی ذرائع سے حاصل کرنے کے لیے تیار ہے تاہم وہ فوجی کارروائی کے ذریعے بھی ایسا کرسکتا ہے۔

انھوں نے کہا فروری 2022 میں لڑائی شروع ہونے کے فوراً بعد ماسکو مغرب کے متعدد سابقہ فریبوں کے باوجود خیر سگالی کا مظاہرہ کرنے اور امن معاہدے پر دستخط کرنے کو راضی تھا۔ مغربی ممالک نے ہمیں دوبارہ دھوکہ دیا اور لڑنے پر مجبور کیا۔

اگر یہ معادہ ہوتا تو یہ کیف کے لیے کافی فائدہ مند تھا۔ تاہم پھر یوکرین کی حکومت نے پہلے سے منظور شدہ دستاویز کو ختم کر دیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button