تازہ ترینجرم کہانیخبریں

نوعمر لڑکی فازیہ جکھرانی کا کیس نیا رخ اختیار کر گیا

نوعمر لڑکی فازیہ جکھرانی کا ایشو نیا رخ اختیار کر گیا ہے۔ پولیس کو ملنے والی نو عمر لڑکی سے متعلق میڈیکل رپورٹ جاری کر دی گئی۔

پولیس کے مطابق دارلامان منتقل کی گئی نوعمر لڑکی کی زیادتی کے باعث حالت خراب ہوئی، لڑکی کی زیادہ خون بہنے سے حالت خراب ہوئی ہے۔ لڑکی کو کاروکاری الزام میں قتل کرنے کے لیے مبینہ طور پر بااثر گروپ سرگرم ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کو مبینہ طور پر زہر دے کر اور فائرنگ کر کے کہیں ہی قتل کیا جا سکتا ہے، لڑکی کی جان بچانے کے لیے خصوصی اقدامات کرنا ہوں گے۔

واقعے کو 24 گھنٹے گزرنے کے باوجود پولیس مقدمہ درج کرنے سے قاصر ہے۔ کل سول لائن تھانے کی حدود کی رہائشی لڑکی پسند کی شادی کے لیے گھر سے نکلی تھی۔

پولیس کے مطابق لڑکی نے پولیس ہیڈ کوارٹر میں اپنے دوست کو تلاش کیا، دوست نہ ملنے پر لڑکی اوباش نوجوان کے ہتھے چڑھ گئی، اوباش نوجوان لڑکی کو اس کے دوست سے ملانے کا جھانسہ دے کر ساتھ لے گیا، اوباش نوجوان نے لڑکی کو اپنے کوارٹر میں زیادتی کا نشانہ بنایا۔

زیادتی کے بعد لڑکی نے اوباش نوجوان سے شادی کا کہا تو اس نے انکار کر دیا۔ لڑکی کی چیخ و پکار پر اہل محلہ اور پولیس نے پہنچ کر تھانے منتقل کیا۔ پولیس نے مقدمہ درج کرنے کی بجائے لڑکی اسٹیشن روڈ سے ملنے کی کارروائی بنا دی۔ لڑکی کو عدالت میں پیش کیا گیا تو میڈیکل چیک اپ اور دارالامان منتقل کا حکم جاری ہوا۔ دارالامان میں لڑکی کی حالت خراب ہوگئی۔

پولیس نے تاحال مقدمہ درج نہیں کیا۔ پولیس نے زیادتی کے الزام میں 2 افراد کو حراست میں لے کر نامعلوم مقام منتقل کر دیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button