تازہ ترینخبریںٹیکنالوجی

دیوہیکل سیارچہ زمین کی طرف بڑھ رہا ہے

امریکی خلائی ادارے ناسا نے خبردار کیا ہے کہ ایک دیوہیکل سیارچہ زمین کی طرف بڑھ رہا ہے۔

ناسا کے سائنسدانوں کے مطابق، دیوہیکل سیارچہ 388945 (2008 TZ3) 16مئی کو 2 بجکر 48 منٹ پر ہمارے سیارے کے بہت قریب ہوگا، اس سیارچےکی چوڑائی 1,608 فٹ ہے۔

ناسا نے یہ بھی بتایا کہ اگر کوئی سیارچہ زمین سے ٹکراتا ہے تو زبردست نقصان پہنچ سکتا ہے، لیکن خلائی سائنسدانوں کے حساب سے 16 مئی کو سیارچہ زمین سے تقریباً 25 لاکھ میل کے فاصلے سےگزرے گا۔

بظاہر سننے میں یہ فاصلہ بہت زیادہ لگ رہا ہے، لیکن خلا میں یہ فاصلہ زیادہ نہیں ہے اور اسی لیے ناسا کی جانب سے کہا گیا ہے کہ یہ سیارچہ زمین کے بہت قریب سے گزرے گا۔

خیال رہے کہ ایسا پہلی بار نہیں ہوا کہ سیارچہ 388945 (2008 TZ3) زمین کے اتنا نزدیک آیا ہو بلکہ مئی 2020 میں بھی یہی سیارچہ زمین کے بہت قریب سے یعنی 1.7 ملین میل کے فاصلے سے گزرا تھا۔

خلائی سائنسدانوں کے مطابق، یہ سیارچہ عام طور پر زمین کے پاس سے سورج کے مدار میں ہر دو سال بعد گزرتا ہے۔

اگلی بار یہ سیارچہ مئی 2024 میں زمین کے قریب سے تقریباََ 6.9 ملین میل کے فاصلے سے گزرے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button