تازہ ترینخبریںسیاسیات

پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی آج سے روزانہ کی بنیاد پر سماعت ہو گی

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان آج سے روزانہ کی بنیاد پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے خلاف غیرملکی فنڈنگ ​​کیس کی سماعت کرے گا۔

 الیکشن کمیشن آف پاکستان نے گزشتہ ہفتے اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم کے مطابق مقدمے کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کے فیصلے کا اعلان کیا تھا جہاں اسے 30 دن میں معاملہ نمٹانے کی ہدایت کی گئی تھی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے یہ حکم اس وقت جاری کیا جب اس نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے حکم کے خلاف پی ٹی آئی کی دو درخواستوں کو مسترد کردیا تھا، الیکشن کمیشن نے غیر ملکی فنڈنگ ​​کیس کو خارج اور اس کے درخواست گزار اکبر ایس بابر کو مقدمے سے الگ اور پی ٹی آئی کی دستاویزات کو خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد کردی تھی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے اپنے تفصیلی حکم نامے میں پی ٹی آئی کی درخواست کو مسترد کر دیا تھا کیونکہ قانون اکبر ایس بابر کو مقدمے کی کارروائی میں حصہ لینے کی اجازت دیتا ہے اور عدالت نے قرار دیا تھا کہ ایک آئینی ادارے کے طور پر الیکشن کمیشن آف پاکستان کو مقدمے کی خوبیوں کی بنیاد پر اکبر ایس بابر سے مدد لینے اور کسی نتیجے پر پہنچنے کا حق حاصل ہے۔

اگر ممنوعہ اور غیرقانونی ذرائع سے فنڈنگ ​​ثابت ہوتی ہے تو اس سے پی ٹی آئی اور اس کے چیئرمین کی ساکھ متاثر ہوگی۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کو ایک ماہ میں کیس کو ختم کرنے کی ہدایت کرنے کے علاوہ تفصیلی حکم نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن پر آرٹیکل 17(3) کے مطابق تفویض کردہ ڈیوٹی کے مینڈیٹ تک پہنچنے کے لیے انکوائری، تفتیش، جانچ پڑتال کے کسی بھی عمل کو اپنانے پر کوئی پابندی نہیں لگائی جا سکتی، اگر اس کو پی پی او 2002 کی فعال دفعات کے ساتھ پڑھیں تو اگر پارٹی کی کوئی فنڈنگ ​​ممنوعہ ذرائع سے حاصل کی گئی ہو، تو اس سے اس کے چیئرمین سمیت ایسی سیاسی جماعت کی ساکھ متاثر ہوگی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button