تازہ ترینحالات حاضرہخبریںروس یوکرین تنازع

ان کا مقصد یوکرین کی ’عسکری صلاحیت کو ختم کرنا‘اور ’نازیوں کو ختم کرنا‘ ہے

یہ روسی آپریشن معمول کا نہیں ہے جس کا مقصد صرف روسی نواز باغیوں کے زیر انتظام مشرقی یوکرین کے علاقوں کو پھیلانا یا ان پر قبضہ کرنا نہیں ہے۔

روسی صدر ولادیمر پوتن کہہ چکے ہیں کہ ان کا مقصد یوکرین کی ’عسکری صلاحیت کو ختم کرنا‘اور ’نازیوں کو ختم کرنا‘ ہے۔ واضح رہے کہ یوکرین کے صدر زیلنسکی خود ایک یہودی ہیں اور انھوں نے پوتن کے اس بیان پر پوچھا کہ ’میں کیسے نازی ہو سکتا ہوں۔‘

ابھی تک روس کی جانب سے جارحیت فضائی حملوں سے اور میزائلوں سے ہوئی ہے لیکن روس کی اصل طاقت ان کی زمینی فوج میں ہے جو بہت مضبوط اور جدید اسلحے سے لیس ہے۔

روس کا مقصد شاید یہ ہو سکتا ہے کہ وہ یوکرینی دارالحکومت کیئو کو ملک سے کاٹ دیں اور مشرقی حصے میں موجود فوج کو تباہ کر دیں۔

ممکنہ طور یہ وجہ ہو کہ یوکرین کے مختلف حصوں میں ائیرپورٹس پر حملے کیے جا رہے ہیں تاکہ مغربی ممالک اسلحہ نہ فراہم کر سکیں۔

دوسری جانب روسی فوجی تربیت ٹراناسٹریا کے علاقے میں چل رہی ہیں جو کہ مولڈووا میں علحیدگی پسندوں کا علاقہ ہے۔ مولڈووا یوکرین اور رومانیہ کی سرحد سے منسلک ایک چھوٹا سا ملک ہے اور خدشات ہیں کہ روس ’نامکمل کام‘ کو وہاں بھی کرنا چاہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button