تازہ ترینخبریںفن اور فنکار

جسمانی کشش دیکھ کر کسی سے شادی کا فیصلہ کیا جائے

اداکارہ یاسرہ رضوی نے کہا ہے کہ جب بھی کوئی شخص شادی کرنے کا سوچے تو وہ پہلے اپنے ہونے والے شریک حیات کے ساتھ ذہنی ہم آہنگی اور جسمانی کشش سے متعلق سوچے۔

یاسرہ رضوی نے ’فوچیا میگزین‘ کے ساتھ بات کرتے ہوئے خود سے 10 سال کم عمر شخص سے شادی کے معاملے پر کھل کر بات کرنے سمیت لوگوں کو بھی شادی کے حوالے سے تجاویز دیں۔

یاسرہ رضوی نے بتایا کہ ان کی شادی کو 5 سال سے زائد عرصہ گزر چکا ہے اور اب وہ 40 سال کی ہونے لگی ہیں مگر ابھی تک ان کی شادی چل رہی ہے۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ ان کی شادی کے فوری بعد لوگوں نے کہنا شروع کیا تھا کہ ان کا شوہر کم عمر ہے اور وہ اہلیہ کے بوڑھے ہونے پر ان سے بھاگ جائے گا۔

ان کے مطابق جب وہ چالیس سال کی عمر میں بچے کی ماں بن سکتی ہیں اور ان کی شادی کامیاب ہو سکتی ہے تو باقی لوگوں کی کیوں نہیں ہوسکتی؟

یاسرہ رضوی کے مطابق ہمارے سماج میں شادی سے متعلق لوگوں کے الگ اور غلط پیمانے ہیں، لوگ شادی سے قبل ایسی چیزوں کے مطالبات کرتے ہیں جو کہ دراصل کسی انسان کے ہاتھ میں ہوتے ہی نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جب انہوں نے خود سے کم عمر لڑکے سے شادی کی، تب ان کا شوہر ایم بی اے کر رہا تھا اور ہر کسی نے انہیں کہا کہ وہ کیا کمائے گا؟ اور ان کے اخراجات کیسے برداشت کرے گا مگر اب ان کے تمام اخراجات ان کے شوہر اٹھاتے ہیں۔

یاسرہ رضوی کے مطابق رزق اور روزی دینا شوہر یا کسی اور کا کام نہیں، یہ معاملات خدا کے ہیں اور وہ ہی ان چیزوں کا ذمہ دار ہے، اس لیے لوگوں کو ایسے مطالبے اور سوچ رکھنی ہی نہیں چاہیے۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ آج کل شادی کے لیے لڑکے والے گوری چٹی، تعلیم یافتہ، نوجوان اور خوبصورت لڑکی کے مطالبے کرتے ہیں جب کہ لڑکی والے بہت سارے پیسے کمانے والے لڑکے کا مطالبہ کرتے ہیں جو کہ درحقیقت غلط ہے۔

ان کے مطابق شادی کے وقت ان کی یہ ترجیحات تھی ہی نہیں کہ شوہر کو دولت مند ہونا چاہیے، بس انہوں نے ذہنی ہم آہنگی کا سوچا تھا۔

انہوں نے کہا کہ شادی کے وقت ان کے شوہر کوئی ملازمت نہیں کرتے تھے، اس لیے انہوں نے حق مہر میں ان سے دو رکعت فجر کی نماز پڑھنے کا مطالبہ کیا تھا، کیوں کہ فجر کی نماز رزق کی ضمانت ہوتی ہے۔

اداکارہ نے کہا کہ بچپن سے وہ نماز پڑھنے کی کوشش کرتی آئی ہیں اور ان کی جستجو رہتی ہے کہ ان سے فجر کی نماز نہ چھوٹے، کیوں کہ اس وقت خدا رزق تقسیم کر رہے ہوتے ہیں۔

خود سے کم عمر لڑکے سے شادی کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ دراصل ان کے شوہر ڈراما پروڈیوسر عبدالہادی ان کی دوست اور اداکارہ جانان کے بھائی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ جس وقت انہوں نے شادی کی تھی، اس وقت ان کے شوہر لاہور سے تعلیم کے لیے کراچی آئے تھے اور ایک طرح سے وہ اپنے شوہر کی استانی تھیں۔

یاسرہ رضوی کے مطابق چند سال تک ایک ساتھ رہنے کے بعد انہوں نے اچانک ایک دن عبدالہادی سے پوچھا کہ وہ ان سے شادی کریں گے؟ جس پر انہوں نے ہاں کی اور آدھے گھنٹے میں دونوں نے گھر والوں کو اپنے فیصلے سے آگاہ کرنے کے بعد اسی مہینے خاموشی سے شادی کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button