جرم کہانی

چوہنگ میں لوگوں کو زندہ نگل لینے والا آتشزدگی کا واقعہ حادثہ نہیں تھا، تہلکہ خیز انکشاف

لاہور کے علاقے چوہنگ میں دو روز قبل گھر میں لگنے والی آگ کے واقعے کی حقیقت سامنے آگئی، پولیس نے مدعی مقدمہ کی بیوی اور بیٹی سمیت تین افراد کو حراست میں لے لیا، ملزمان نے مدعی مقدمہ کی ماں اور بہن کو قتل کیا اور گھر آگ لگا دی۔

ڈان نیوز ٹی وی کے مطابق 30 دسمبر کی صبح کو لاہور کے علاقے چوہنگ کے ایک گھر میں اچانک آگ بھڑک اٹھی تھی، جس کے نتیجے میں میاں (سید افتخار حسین)، بیوی (ثمینہ) اور ان کی بیٹی (ارم) جاں بحق ہوگئے تھے۔

جاں بحق ہونے والی خاتون ثمینہ لیڈی ہیلتھ ورکر تھی جو اپنے میاں اور بیٹی کے ساتھ مکان میں رہائشی پذیر تھی جبکہ اس کے دو بیٹے راولپنڈی میں کام کرتے ہیں۔بعدازاں پولیس نے متوفی افتخار حسین کے بیٹے وقار کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا، ایف آئی آر کے مطابق نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر آگ لگائی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اب واقعے میں اہم پیشرفت ہوئی ہے جس کے مطابق مقدمہ کے مدعی وقار کی بیوی فرح اور بیٹی علینہ کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ فرح اور اس کے پہلے شوہر سے بیٹی علینہ راولپنڈی سے لاہور آئیں، فرح نے اپنی بیٹی اور نامعلوم شخص کے ساتھ مل کر افتخار، اس کی بیوی اور بیٹی کو قتل کیا۔

پولیس کے مطابق قتل کو آتشزدگی کا رنگ دینے کے لیے بعد ازاں گھر کو آگ لگا دی گئی، پولیس نے تمام ملزمان کو حراست میں لے لیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button