تازہ ترینخبریںپاکستان

لاہور ہائیکورٹ نے شہریوں کو لائسنس کے نام پر ہراساں کرنے سے روک دیا

لاہور ہائی کورٹ نے کم عمر ڈرائیورز کا کریمنل ریکارڈ بنانے کے خلاف درخواست پر تحریری حکم جاری کر دیا۔

جسٹس علی ضیاء باجوہ نے ایک صفحہ پر مشتمل تحریری حکم جاری کرتے ہوئے پولیس اہلکاروں کو شہریوں کو لائسنس کے نام پر ہراساں کرنے سے روک دیا۔

تحریری حکم میں کہا گیا ہے کہ عدالت پولیس کو کسی بھی شہری کو ہراساں کرنے کی اجازت نہیں دیتی۔

عدالت نے ایس پی سی آر او کو ہدایات لے کر تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ ایس پی سی آر او نے افسران سے ہدایات لے کر تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی مہلت طلب کی۔

تحریری حکم میں کہا گیا ہے کہ سی ٹی او نے بتایا کہ کم عمر اور بغیر لائسنس ڈرائیورز کے خلاف آپریشن جاری ہے، سی ٹی او کے مطابق آپریشن کے نتیجے میں بڑی تعداد میں شہریوں نے لائسنس حاصل کیے۔

لاہور ہائی کورٹ کا کہنا ہے کہ ایس پی آپریشن نے بتایا کہ بغیر لائسنس گرفتار ڈرائیورز کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہو گی، ڈی آئی جی آپریشن اور ڈی آئی جی انوسٹی گیشن شہریوں کو ہراساں نہ کرنے کو یقینی بنائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button