تازہ ترینخبریںپاکستان سے

اسلام آباد ہائی کورٹ کا ممنوعہ فنڈنگ کیس میں لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے، اسلام آباد ہائی کورٹ نے ممنوعہ فنڈنگ کیس میں لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق آج منگل کو الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف پی ٹی آئی کی درخواست پر اسلام آباد ہائی کورٹ میں سماعت ہوئی، عدالت نے کیس میں لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ کر لیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کا لارجر بینچ 18 اگست سے ممنوعہ فنڈنگ کیس کی سماعت کرے گا، کیس 18 اگست کو باقاعدہ سماعت کے لیے مقرر کر دیا گیا۔

وکیل پی ٹی آئی انور منصور نے عدالت سے کہا کہ پی ٹی آئی نے جن اکاؤنٹس کی معلومات فراہم کی تھیں وہ فیصلے میں موجود ہی نہیں، الیکشن کمیشن کو بتایا کہ کچھ اکاؤنٹس کی معلومات کچھ وجوہ کی بنا پر ضروری نہیں ہے، مرکزی اکاؤنٹس سے کچھ رقوم صوبائی سربراہان کو بھیجے گئے۔

جسٹس عامر فاروق نے کہا جہاں تک مجھے یاد پڑتا ہے یہ ولی خان کیس کے بعد اس نوعیت کا پہلا کیس ہے، اُس کیس میں ریفرنس بھیج دیا گیا تھا اِس کیس میں ابھی ریفرنس نہیں بھیجا گیا۔

انور منصور نے استدعا کی کہ الیکشن کمیشن کو پی ٹی آئی کے خلاف کسی بھی کارروائی سے روکا جائے، جسٹس عامر فاروق نے کہا میں نے اسی لیے لارجر بنچ بنا دیا ہے، کل کیس کی سماعت کریں گے۔

پی ٹی آئی وکیل کی استدعا تھی کہ شوکاز نوٹس کی حد تک کوئی ایکشن نہ لیا جائے، عدالت نے ریمارکس دیے کہ اسٹے آرڈر بھی لارجر بنچ ہی دیکھے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button