تازہ ترینجرم کہانیخبریں

‘میرے برتن سے پانی کیوں پیا’؟ استاد کے بہیمانہ تشدد سے بچے کی موت ہوگئی

بھارتی ریاست راجھستان میں دل دہلا دینے والا واقعہ رونما ہوا ہے جس کے نتیجے میں دلت بچے کی موت واقع ہوگئی ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق راجستھان کے ضلع جالور میں ایک دل دہلا دینے والا واقعہ سامنے آیا ہے جہاں مٹکے سے پانی پینے پر استاد نے تیسری جماعت کے دلت طالب علم اندرکمار سرسوتی پرانسانیت سوز تشدد کیا۔

سفاک اور تنگ نظر استاد کے بدترین تشدد کے نتیجے میں بچے کے کان اور آنکھیں شدید متاثر ہوئیں اور وہ بیس دن تک زندگی وموت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد دم توڑ گیا۔

غمزدہ لواحقین کے مطابق واقعہ بیس جولائی کو پیش آیا تھا،دلخراش واقعے کے بعد لواحقین نے سائلا تھانے میں
رپورٹ میں بتایا گیا کہ بیس جولائی کو اندر کمار پڑھنے کے لیے اسکول گیا اس دوران ناراض ٹیچر چل سنگھ نے برتن سے پانی پینے پر اندرا کمار کی پٹائی کی۔

رپورٹ میں الزام لگایا گیا کہ ٹیچر کے برتن سے بچے کے پانی پینے پر ٹیچر نے تھپڑ مارا جس سے بچے کے دائیں کان اور آنکھ پر اندرونی چوٹیں آئیں۔

لواحقین کے مطابق کان میں شدید درد کی وجہ بچے کو بگوڈا، بھنمل، ڈیسا، مہسانہ، ادے پور کے نجی اسپتالوں میں علاج کے داخل کیا گیا۔

بعد ازاں علاج کے لیے سول اسپتال احمد آباد منتقل کیا گیا جہاں وہ دوران علاج دم توڑ گیا۔

مقدمہ درج ہونے کے بعد مقامی پولیس نے ملزم ٹیچر کو حراست میں لے لیا ہے۔

واضح رہے کہ مودی کے بھارت میں اقلیتوں پر بہیمانہ تشدد کے تاریخ رقم ہورہی ہے مگر حالیہ واقعے پر بھارتی میڈٰیا بھی چلا اٹھا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button