Welcome to JEHANPAKISTAN   Click to listen highlighted text! Welcome to JEHANPAKISTAN
بلاگتازہ ترینخبریں

پنجاب کے ضمنی الیکشن میں عمران خان کا بیانیہ جیت گیا

اسلام آباد(محمد عاصم جیلانی )وطن عزیز کے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے ضمنی الیکشن میں چئیرمین تحریک انصاف عمران خان کا بیانیہ جیت گیا جبکہ مسلم لیگ(ن) اور ان کے اتحادیوں کی جانب سے نظریاتی رہنماوں کو نظر انداز کرکے پی ٹی آئی کے منحرف ارکان کو میدان میں اتارنے کا فیصلہ انہیں لے ڈوبامسلم لیگ(ن) کے پالیسی سازوں کے اس فیصلے نے پنجاب میں اپنی پارٹی پوزیشن کو مضبوط کرنے کے بجائے مزید کمزور کردیا ہے اور ان کے نظریاتی کارکن اور پارٹی رہنما بھی اس فیصلے سے ناراض تھے ۔

پنجاب کے بیس حلقوں میں اتوار کو ہونے والے الیکشن میں غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کو واضح برتری سے کامیابی ملی ہے اور تحریک انصاف دوبارہ پنجاب میں اپنی حکومت بنانے کی پوزیشن میں آگئی ہے ،تحریک انصاف کے وزیراعلی کے امیدوار چوہدری پرویز الہی ،پنجاب کے نئے وزیر اعلی ہونگے،

انتخابی مہم کے دوران چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے غیر ملکی سازش اور ان کے خلاف قائم ہونے والے اتحاد پرکھل کر تنقید کی اور ان کی وفاق اور پنجاب میں قائم حکومت کو خاتمے کرنے میں اہم کرداروں کو بے نقاب کرنے کا بھی عندیہ دیا اور پنجاب کے عوام نے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی بیانیے پر اعتماد کرتے ہوئے واضح برتری دلوائی ۔چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے اس برتری کے بعد آج تین بجے بنی گالہ میں کور کمیٹی کا اہم اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں پنجاب میں دوبارہ حکومت سازی سمیت اہم فیصلے متوقع ہیں ۔

ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی اور ان کے اتحادی مختلف آپشن پر غور کر رہی ہے کہ دوبارہ سے پنجاب میں حکومت بنا کر پالیسیوں کے تسلسل کو جاری رکھا جائے یا وزیراعلی کے انتخاب کے بعد پنجاباور خیبر پختونخوا کی حکومتوں کو ختم کر دیا جائے اور بلوچستان سے بھی حکومت کے خاتمے کے لئے بات چیت کی جائے تاکہ ملک میں نئے عام انتخابات کی راہ ہموار کی جا سکے ۔

چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کی جانب سے پی ٹی آئی کو چھوڑ کر مسلم۔لیگ ن اور دیگر جماعتوں کا ساتھ دینے والے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی کو ”لوٹے” قرار دیا تھا ان منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کی پنجاب میں تو سیاست کا تقریبا خاتمہ ہو گیا ہے اور جن ارکان قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی۔حکومت گرانے میں پی ڈی ایم کا ساتھ دیاتھا ان کا سیاسی مستقبل بھی ان ضمنی الیکشن میں منحرف اراکین سے تعبیر کیا جاسکتا ہے اور دیکھنا یہ۔ہوگا کہ آیا ایسی شکست کے بعد مسلم لیگ ن اور ان کی اتحادی جماعتیں عام انتخابات میں ان منحرف اراکین قومی اسمبلی کو ٹکٹ دیںگی یا نہیں ؟ کیونکہ اگر انہیں ٹکٹ دیا۔گیا تو پوزیشن اس ضمنی الیکشن جیسی ہو سکتی ہے۔

ضمنی الیکشن کے دوران اور اس سے قبل پنجاب میں پی ٹی آئی کے خلاف انتقامی کارروائیوں پر عمران خان نے پولیس افسران اور بیوروکریسی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ایسے افسران کے نام نوٹ کر رہے ہیں جو غیر قانونی اقدامات کر رہے اب دیکھنا یہ ہے کہ دوبارہ پی ٹی آئی حکومت قائم ہونے پر آیا ایسے افسران کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں لائی جائےگی ہا نہیں ؟

ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کی برتری کے بعد وفاقی کابینہ کے حالیہ اجلاس کے دوران عمران خان ،قاسم خان سوری و دیگر کے خلاف آرٹیکل 6کے تحت کارروائی کے لئے قائم کی۔جانے والی کمیٹی کی کارروائی بھی رسمی ہو۔سکتی ہے کیونکہ پنجاب میں کامیابی کے بعد اگر وفاقی حکومت کوئی کارروائی عمل میں لاتی ہے تو اس سے عوام میں پی ٹی آئی کے لئے مزید ہمدریاں پیدا ہونگی اور اس کا نقصان ن لیگ اور اتحادیوں کو ہو سکتا ہےدوسری جانب پی ٹی آئی کی کامیابی کو مسلم لیگ ن نے تسلیم کر لیا ہے اور ن لیگ اور اتحادیوں کا بھی جلد اجلاس متوقع ہے جس میں اہم فیصلے کیے جا سکتے ہیں ۔

پی ٹی آئی اور حکومتی اتحاد کے سنجیدہ رہنما مل بیٹھ کر عام انتخابات کرانے کے لئے انے والے دنوں میں ملاقاتیں بھی کر سکتے ہیں تاکہ اس صورتحال سے نکلا جا سکے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Click to listen highlighted text!