تازہ ترینجرم کہانیخبریں

شرمناک واقعہ ، دکاندار چوری کے الزام پر خواتین کو بازار میں گھسیٹتے رہے

پنجاب کے ضلع بہاولنگر کے بازار میں خواتین پر چوری کا الزام لگا کر دکانداروں نے شرمناک سلوک کیا اور انہیں دوپٹے سے باندھ کر بازار میں گھسیٹتے رہے۔

صوبہ پنجاب کے ضلع بہاولنگر کے علاقے ہارون آباد میں شرمناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں شہر کے مرکزی بازار میں خواتین پر چوری کا الزام لگا کر انہیں ہراساں کیا گیا ہے اور دکاندار ان خواتین کو دوپٹے سے باندھ کر ننگے سر بازار میں گھسیٹتے رہے، اس دوران خواتین خود کو چھڑانے کی کوشش کرتی رہیں، واقعے کا وزیراعلیٰ پنجاب اور آئی جی نے نوٹس لے لیا ہے

مذکورہ خواتین کو لیڈیز پولیس اہلکاروں کی عدم موجودگی میں پیدل تھانے لے جایا گیا، پولیس کے مطابق مذکورہ خواتین پر چائے کی پتی کے دو پیکٹ چوری کرنے کا الزام ہے، معاملے کی تحقیقات کررہے ہیں اور قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

اس حوالے سے ایس ایچ او ہارون آباد سجاد سندھو نے کہا کہ پولیس کے علم میں پہلے چوری کی واردات تھی تاہم ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد حقائق کا پتہ چلا اور پولیس نے ذمے داروں کے خلاف کارروائی شروع کردی ہے۔ ایک دکان کے مالک کو پکڑ لیا گیا ہے جب کہ دیگر ذمے داروں کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں

ان کا کہنا تھا کہ خواتین کے بیانات بھی لیے جائیں گے، ملزم چاہے چور ہی کیوں نہ ہوں لیکن اس کے ساتھ یہ رویہ کسی صورت قابل قبول نہیں ہے۔

دوسری جانب خواتین کو ہراساں کیے جانے کے واقعے کا وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز اور آئی جی پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے۔

وزیراعلیٰ حمزہ شہباز نے واقعے کے ذمے داروں کیخلاف قانونی کارروائی کا حکم دیتے ہوئے آئی جی پنجاب سے واقعے کی ہر پہلو سے انکوائری رپورٹ طلب کرلی ہے جب کہ آئی جی نے آر پی او بہاولپور سے واقعے کی رپورٹ طلب کرنے کے علاوہ ڈی پی او بہاولنگر کو ذاتی نگرانی میں واقعے کی انکوائری کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین پر ظلم و تشدد کرنیوالے کسی رعایت کےمستحق نہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button