تازہ ترینخبریںدلچسپ و حیرت انگیز

اسکول میں موجود بچے کی گھر بیٹھے نگرانی کرنے کا سائنسی طریقہ

اسکولوں میں طلبہ کینٹین سے کھانے پینے کی اشیاء خریدنے کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کرسکیں گے جبکہ والدین اپنے بچوں کی خریداری کو گھر بیٹھے کنٹرول کرسکیں گے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایجوکیشن ٹیکنالوجی ڈویلپمنٹ کمپنی نےعندیہ دیا ہے کہ وہ جلد اسمارٹ بریسلٹ جاری کرے گی جس کے ذریعے طلبہ کے والدین سکول میں بچوں کے مالی معاملات کو کنٹرول کرسکیں گے۔

ایجوکیشن ٹیکنالوجی ڈویلپمنٹ کمپنی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے ماتحت ہولڈنگ کمپنی ہے۔ جس نے یہ سمارٹ بریسلٹ تیار کیا ہے۔ اسمارٹ بریسلٹ کے ذریعے اسکول کینٹین سے25 ریال مالیت تک کی اشیاء خریدی جا سکیں گے۔

ایجوکیشن ٹیکنالوجی ڈویلپمنٹ کمپنی کی اسکیموں کے گروپ کے ڈائریکٹر محمد بن عبداللہ المغشی نے اس حوالے سے بتایا کہ ریاض میں جاری تعلیم کی عالمی کانفرنس اور نمائش میں بریسلٹ کے حوالے سے تفصیلات دی جارہی ہیں۔

سمارٹ بریسلٹ کی مدد سے والدین ہر روز اپنے بچے کے اخراجات کی تمام تفصیلات گھر بیٹھے جان لیں گے۔ اسمارٹ بریسلٹ سکیم نرسری سے لے کر ثانوی کلاس تک تمام طلبہ کے لیے ہوگا۔

المغشی نے کہا کہ سمارٹ بریسلٹ میں سالانہ 500 ریال جمع کرائے جاسکتے ہیں۔ یومیہ 10 ریال تک استعمال کرنے کی پابندی بھی عائد کی جاسکتی ہے۔ بریسلٹ کے ذریعے سکول کینٹین موبائل کے ذریعے کھانے پینے کی چیز کی قیمت وصول کرسکے گی۔

رقم کی ادائیگی الیکٹرانک ذرائع مثلا ایپل پے، ویزہ، ماسٹر یا مدی کارڈ کے ذریعے کی جاسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سمارٹ بریسلٹ ہر طالب علم کے ہیلتھ ریکارڈ سے مربوط ہوگا جس سے یہ پتا لگایا جاسکے گا کہ متعلقہ طالب علم کو کس قسم کے کھانے پینے سے الرجی ہے۔

اگر وہ الرجی پیدا کرنے والی کھانے پینے کی کوئی چیز خریدنا چاہے گا تو اسے اس کی اجازت نہیں ہوگی۔ اسمارٹ بریسلٹ کے ذریعے خریداری کا دائرہ صرف سکول کینٹین تک ہی محدود ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button