تازہ ترینجرم کہانیخبریں

امریکی نے ماں کو مچھلی کے شکار پر لے جا کر سمندر میں کیوں پھینکا؟

امریکی شہر رٹلینڈ میں ایک سفاک شخص نے اپنی ماں کو مچھلی کے شکار پر لے جا کر قتل کر کے سمندر میں پھینک دیا۔

تفصیلات کے مطابق ایک امریکی شہری 28 سالہ ناتھن کارمین نے خاندان کی جائیداد ہتھیانے کے لیے اپنی والدہ لِنڈا کارمین کو سمندر میں قتل کر کے پھینک دیا۔

امریکی محکمہ انصاف کے مطابق ناتھن کارمین کو منگل کو گرفتار کیا گیا ہے، اور اس پر 6 الزامات میں فرد جرم عائد کی گئی ہے۔

ناتھن کارمین نے 2016 میں اپنی ماں لِنڈا کارمین کو اس وقت قتل کر کے سمندر میں پھینک دیا تھا جب وہ دونوں ملک کے شمال مشرقی علاقے میں واقع ایک جزیزے پر ماہی گیری کے ایک ’ٹرپ‘ پر تھے۔

امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق کارمین اپنی والدہ کے ساتھ مچھلی پکڑنے کے ’ٹرپ‘ کے آٹھ دن بعد اکیلا پایا گیا تھا جب کہ اس کی والدہ کی لاش نہیں مل سکی۔

پراسیکیوٹرز نے ایک اور بیان میں کہا کہ کارمین نے اس سے قبل 2013 میں اپنے دادا جان چکالوس کو بھی ونڈسر میں واقع ان کے گھر میں گولی مار کر قتل کر دیا تھا، نئی فرد جرم میں کارمین پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ اس نے پیسے اور دیگر جائیداد حاصل کرنے کے لیے اپنے دو رشتہ داروں کو قتل کیا ہے۔

پراسکیوٹرز کے مطابق کارمین نے اس کمپنی کو بھی دھوکا دینے کی کوشش کی ہے جس سے اس نے اپنی کشتی کی انشورنس کرا رکھی ہے۔

پراسیکیوٹر کے مطابق اگر کارمین پر قتل کا الزام ثابت ہو گیا تو لازمی طور پر اسے عمر قید کا سامنا کرنا ہوگا، جب کہ دھوکا دہی کے الزامات میں سے ہر ایک میں اسے 30 برس تک قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

کارمین کو بدھ کو ورمونٹ کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button