تازہ ترینخبریںپاکستان سے

پاک فوج کا ‘ادارے اور سوسائٹی ’میں تقسیم سے متعلق پروپیگنڈا مہم پر نوٹس

پاک فوج نے ادارے کے خلاف سوشل میڈیا پر چلنے والی حالیہ پروپیگنڈا مہم پر نوٹس لیتے ہوئے اس کو ادارے اور سوسائٹی کے درمیان تقسیم قرار دیا اور قیادت کی جانب سے ‘آئین اور قانون کی بالادستی قائم رکھنے کے عزم’ پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق جنرل ہیڈکوارٹرز میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیرصدارت 79 ویں فارمیشن کمانڈرز کانفرنس منعقد ہوئی جہاں کورکمانڈرز، پرنسپل اسٹاف افسران اور تمام فارمیشن کمانڈرز نے شرکت کی۔

بیان میں کہا گیا کہ ‘کانفرنس میں چند حلقوں کی جانب سے پاک فوج کو بدنام کرنے کے لیے کی گئی حالیہ پروپیگنڈا مہم اور ادارے اور سوسائٹی کے درمیان تقسیم پیدا کرنے کی کوشش پر نوٹس لیا گیا’۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ ‘پاکستان کی قومی سلامتی مقدم ہے، پاک فوج ہمیشہ ریاستی اداروں کی حفاظت کے لیے ان کے ساتھ کھڑی رہی ہے اور کسی شرط کے بغیر ہمیشہ رہے گی’۔

بیان میں کہا گیا کہ کانفرنس کے شرکا نے قیادت کے ہرقیمت میں آئین اور قانون کی بالادستی برقرار رکھنے کے لیے مؤقف پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا گیا۔

خیال رہے کہ رواں ہفتے سابق وزیراعظم عمران خان خان کو تحریک عدم اعتماد ذریعے عہدے کے ہٹائے جانے کے بعد فوج پر تنقید کی گئی تھی اور ٹوئٹر فوج اور فوجی قیادت کے خلاف بدترین سرگرمیاں دیکھی گئی تھیں اور ٹرینڈ چلائے گئے تھے۔

عمران خان کو وزارت عظمیٰ سے ہٹانے کے ایک روز بعد اتوار کو ملک گیر احتجاج کے دوران فوج کے حوالے سے سخت نعرے لگائے گئے تھے۔

آئی ایس پی آر نے اجلاس کے حوالے سے بتایا کہ سوشل میڈیا پر چلنے والی مہم پر نوٹس لینے کے علاوہ فوجی قیادت کو پیشہ ورانہ امور، قومی سلامتی کو درپیش چیلنجز اور روایتی اور غیرروایتی خطرات سے نمٹنے کے لیے انسدادی اقدامات پر بھی بریفنگ دی گئی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button