تازہ ترینخبریںپاکستان سے

اپوزیشن نے اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہیٰ کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرادی

اپوزیشن نے اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہیٰ کے خلاف تحریک عدم اعتماد پنجاب اسمبلی کے اسپیشل سیکریٹری چوہدری عامر حبیب کو جمع کروادی۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہیٰ کے خلاف جمع کرائی گئی قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ چوہدری پرویز الہیٰ پر اس ایوان کی اکثریت کا اعتماد نہیں رہا، صوبہ پنجاب کے معاملات آئین پاکستان کے مطابق نہیں چلائے جا رہے ہیں، اسپیکر پنجاب اسمبلی نے صوبہ پنجاب میں جمہوری روایات کا قلع قمع کیا ہے۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع کروانے اپوزیشن کے اراکین اسمبلی سمیع اللہ، طاہر خلیل سندھو، پیر اشرف رسول، خواجہ سلمان رفیق، مرزا جاوید اور میاں عبدالرؤف اسمبلی پنجاب اسمبلی پہنچے تھے۔

اس موقع پر چیف وہپ پنجاب اسمبلی خلیل طاہر سندھو کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کل بھی ہم عدم اعتماد کی تحریک جمع کروانے آئے تو ہمارے ساتھ برا سلوک ہوا، آج کے بعد اسمبلی کا تمام اسٹاف اسپیکر کا کوئی حکم ماننے کا پابند نہیں، پرویزالہی نے پنجاب کا وزیر اعلی نہیں بننا۔

خلیل طاہر سندھو کا کہنا تھا کہ منتخب وزیراعلی گورنر راج لگا سکتا ہے، اسکے لئے ثابت کرنا ہو گا کہ صوبے میں امن و امان کی صورتحال نہایت خراب ہے۔

اس موقع پر بات کرتے ہوئے رہنما ن لیگ خواجہ سلمان رفیق کا کہنا تھا کہ آج عدم اعتماد کی تحریک جمع کروا دی ہے، پرویزالہی عمران خان کی ایما پر غیر آئینی کام کر رہے ہیں۔

تحریک عدم اعتماد جمع کروانے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے سمیع اللہ خان کا کہنا تھا کہ یہ عدم اعتماد پرویز الہیٰ کی چالیس سالہ سیاست میں آخری کیل ٹھونک دے گی، قاف لیگ اپنے گھر میں بھی تقسم ہوگی، عدم اعتماد کی تحریک کے بعد وزیراعلی بننے کا صرف خواب رہے گا۔

دوسری جانب ترجمان چوہدری پرویز الہی فیاض الحسن چوہان کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان میں وفاق و پنجاب میں ہارس ٹریڈنگ میں پی ایچ ڈی کرنے والی آل شریف چیٹنگ و آئین شکنی کررہی ہے، جس طرح لوگوں کو خریدا جا رہاہے وہ سب کے سامنے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گلبرگ کا ہوٹل آل شریف کی دیانت کو منہ چڑھا رہاہے ووٹ کو عزت دو کے نظریے کو طمانچے مار رہاہے، اب لوگوں کی تین کروڑ میں خریدو فروخت کا میلہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے۔

فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ ہمارے ممبرز اعلان کرتے ہیں ن لیگ میں شامل ہو گئے ہیں تو ان پر تریسٹھ اے آرٹیکل لگتا ہے، ہمارے اتحادیوں نے ساری ضروریات پوری کر لی ہیں، نوٹس چلے گئے ہیں کل آخری تاریخ ہے، اگر پی ٹی آئی کے منحرف ارکان نے کل تک جواب نہ دیا تو ڈیفیکشن کلاز ان پر لگ جائیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرانے کے لیے صوبائی اسمبلی پہنچے تھے۔

تاہم رہنماؤں کے پہنچنے پر اسمبلی کا گیٹ بند کردیا گیا تھا جس کے باعث اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع نہیں کرائی جاسکی تھی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button