خبریںدلچسپ و حیرت انگیزپاکستان سے

انسانی تاریخ کی پہلی ہڑتال  فرعون کے دور میں ہوئی

اگر آپ سمجھتے ہیں کہ ہڑتالوں کا سلسلہ چند سو سال قبل شروع ہوا ہے تو یہ آپ کی غلط فہمی ہے بلکہ انسانی تاریخ میں جو پہلی ہڑتال کا ریکارڈ ملتا ہے، وہ قدیم مصر میں فرعون کے دور سے جُڑا ہے۔
انسانی تاریخ میں سب سے پہلی ہڑتال فرعون رامسس IIIکے دور میں ہوئی، تاریخ 14نومبر 1152قبل مسیح ہے۔
ہڑتال کیوں اور کیسے ہوئی، اس سے پہلے یہ عام غلط فہمی دور کرنا ضروری ہے کہ دورِ فراعنہ میں اکثر کام غلاموں سے لیا جاتا تھا، ایسا ہرگز نہیں۔
اگرچہ دورِ فراعنہ میں غلاموں کی کثرت تھی لیکن قدیم مصر کی جو اصل افرادی قوت تھی وہ معمار، کاریگر اور سامان کے نقل و حمل پر مامور افراد پر مشتمل تھی جو باقاعدہ اپنے کام کی اجرت لیا کرتے تھے،
دوسرے الفاظ میں مزدور۔ آج کے مصر سے ہزاروں سال قبل کی تعمیرات یا اشیا جو دریافت ہورہی ہیں اور وہ بھی بہترین حالت میں، یہ انہی مزدوروں کی محنت کا نتیجہ ہے نا کہ غلاموں کا۔
تاہم نومبر 1152قبل مسیح میں مزدوروں نے اپنی اصل طاقت کا مظاہرہ کیا۔ مصر کے قدیم گاوں دیئر المدینہ میں شاہی قبرستان کی تعمیر جاری تھی لیکن معمار اپنے آجروں سے ناخوش تھے۔
انہیں لگ رہا تھا کہ انہیں اجرت ایک تو دیر سے دی جارہی ہے اور دوسرا ناکافی ہے۔
اپنے اس مطالبے کیلئے انہوں نے ہڑتال کی کال دے دی اور شاہی حکم کے فرمان کی تعمیل رُک گئی۔
اُس وقت کی فرعونی حکومت نے ان مزدوروں سے نہ صرف بات چیت کی بلکہ ان کی تنخواہیں بھی بڑھا دیں جس کے بعد مزدوروں نے بھی تعمیراتی کام دوبارہ شروع کر دیا۔
آج بھی اگر آپ مصر میں دیئر المدینہ جائیں تو شاہی قبرستان کے آثار بہترین حالت میں پائیں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button