پاکستان

ہمیں کہاجا رہا ہےکہ پگڑیوں کو فٹبال بنائیں گے، ایسا کہنے والے خود کو ایکسپوز کررہے ہیں، جسٹس اطہر من اللہ

جسٹس اطہر من اللہ نے نیب ترامیم کیس میں ریمارکس دیئے کہ ہمیں کہاجا رہا ہےکہ پگڑیوں کوفٹبال بنائیں گے، ایسا کہنے والے درحقیقت خود کو ایکسپوز کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں نیب ترامیم کالعدم قراردینےکیخلاف انٹراکورٹ اپیلوں پر سماعت ہوئی۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسی کی سربراہی میں 5رکنی لارجر بینچ سماعت  کی، جسٹس امین الدین،جسٹس جمال مندوخیل ،جسٹس اطہر من اللہ ،جسٹس حسن رضوی بینچ کا حصہ ہیں۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے وکیل خواجہ حارث سےمکالمہ آپ کہیں جا رہےہیں تو خواجہ حارث نے جواب دیا میں ادھر ہی ہوں۔

جسٹس اطہرمن اللہ مرکزی درخواست گزاربھی کہیں نہیں جا رہےکیونکہ وہ اڈیالہ میں قیدہیں، جسٹس اطہرمن اللہ کے ریمارکس پرکمرہ عدالت میں قہقہے لگ گئے۔

جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے ہمیں کہاجا رہا ہےکہ پگڑیوں کوفٹبال بنائیں گے، ایساکہنے والےدرحقیقت خود کو ایکسپوز کررہے ہیں، کیا آپ اپنی پراکسیز کے ذریعے ہمیں دھمکا رہے ہیں۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ نہ ایساہو رہا ہےاورنہ ہی ایسا ہونا چاہیے، عدالت نے آئندہ سماعت پربھی بانی پی ٹی آئی کو ویڈیولنک کی سہولت فراہم کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے کہا کہ کیس کی سماعت کی آئندہ تاریخ کا اعلان بینچ کی دستیابی کی صورت میں ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button