دلچسپ و حیرت انگیز

ساتویں کلاس کے طالب علم کی زد آخر ماں نے پوری کر دی

سوشل میڈیا پر ان دنوں 12 سالہ جوڑے کی ویڈیوز کافی وائرل ہیں، جو کہ شادی کے کم عمری میں ہی جیون ساتھی بننے جا رہے ہیں۔

13 سالہ محمد قاعد نے 12 سالہ علیزے سے پسند کی شادی کرنے جا رہے ہیں، اب ظاہر ہے یہ خبر سوشل میڈیا صارفین کی توجہ حاصل نہ کرتی ایسا کیسے ممکن تھا، صارفین نے جوڑے کو دیکھ حیرانی کا اظہار کر دیا۔

دونوں کی بات پکی کرنے کی رسم سوشل میڈیا پر اپلوڈ ہوئی تھی، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ دونوں کے چہرے پر شرماہٹ خوب ہے، یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی تھی۔

تاہم اب دونوں کی شادی کی کہانی بھی سامنے آ گئی ہے، 13 سالہ دلہے نے والدہ سے مطالبہ کیا تھا کہ اگر میری شادی کرا دوگی، تو ہی میں پڑھائی کروں گا۔ عام طور پر جب بچے ایسی ضد کرتے ہیں، تو ماں کا ہاتھ ہوتا ہے اور بیٹے کا گال ہوتا ہے
اور پھر بیٹا خود بہ خود راہ راست پر آ جاتا ہے، لیکن یہاں ماں نے ہی بیٹے کی ضد کو پورا کر دیا، ماں نے بیٹے کی پڑھائی کی خاطر اس کی شادی ہی کرا دی۔

12 سالہ علیزے کہتے ہیں کہ مجھے محمد قاعد پسند ہیں، جب شادی کا پروپوزل آیا تو میں بس یہی سچ رہی تھی کہ کیا ہو رہا ہے، ابھی تو ایسی ہی زندگی چلے گی، میں تو کالج اور یونی ورسٹی کا سوچ رہی تھی۔
جبکہ جوڑے کا کہنا تھا کہ ہمیں وقت نہیں مل پا رہا ہے، ورنہ ہم وی لاگ ویڈیوز کو اپلوڈ کریں، ہماری ویڈیوز وائرل ہو رہی ہیں، ہمیں اچھا لگ رہا ہے۔

دلچسپ بات یہ بھی کہ علیزے ساتویں جماعت میں ہیں، جبکہ اس کے مقابلے میں محمد قاعد چھٹی جماعت میں ہیں۔ دوسری جانب والدین کے مطابق دونوں بچوں کی منگنی آنے والے دنوں میں منعقد ہونے جا رہی ہے۔
جبکہ مستقبل کی اہلیہ نے ابھی سے مطالبات بھی کرنا شروع کر دیے ہیں، علیزے کہتی ہیں کہ میں نے آئی فون 15 پرو میکس مانگا تو قاعد نے دینے کے لیے حامی بھر لی، لیکن ساتھ ہی کہا کہ مشکل ہے مگر میں کوشش کروں گا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button