سیاسیات

غیر شرعی نکاح کیس: عمران، بشریٰ پر فرد جرم عائد

غیرشرعی نکاح کیس میں بانی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان اور بشریٰ بی بی پرفرد جرم عائد کر دی گئی۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز کورٹ کے سینئر سول جج قدرت اللہ نے اڈیالہ جیل میں سماعت کی۔

ابتدائی طور پر بانی پی ٹی آئی اور بشری بی بی عدالت میں پیش ہوئے تاہم وکلا غیر حاضر رہے۔

وکلاء کے عدالت پہنچنے پر بشریٰ بی بی عدالت سے اُٹھ کر چلی گئیں، وکیل عثمان گل نے عدالت کو بتایا کہ بشری بی بی کی طبیعت ٹھیک نہیں تھی، وہ جیل سے ہسپتال روانہ ہوگئیں۔

جج قدرت اللہ نے استفسار کیا کہ بشری بی بی عدالت میں حاضر تھیں، کیا انہوں نے کسی سے باہر جانے کی اجازت لی تھی؟ مزید ریمارکس دیے کہ عدالت سے واپس جانے کا ایک طریقہ کار ہوتا ہے، آپ تو وکیل ہیں آپ کو نہیں پتا؟

جج قدرت اللہ نے وکیل عثمان گِل سے مکالمہ کیا کہ آپ نے آج تک کبھی کوئی کمٹمنٹ پوری کی ہے؟ مزید کہا کہ گزشتہ سماعت پر ہم نے وارنٹ گرفتاری جاری کیے، لطیف کھوسہ کا بھرم رکھتے ہوئے واپس لیے۔

وکیل عثمان گل نے بشری بی بی کی حاضری سے استثنا کی درخواست دائر کر دی، وکیل استغاثہ راجا رضوان عباسی نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کی مخالفت کردی۔

وکیل رضوان عباسی نے کہا کہ انہوں نے جو میڈیکل رپورٹ دی اس میں کسی قسم کا طبی مسئلہ نہیں ہے، بشری بی بی کورٹ میں موجود تھیں اس طرح کسی کو چکمہ نہیں دیا جا سکتا۔

جج قدرت اللہ نے ریمارکس دیے کہ استثنیٰ کی درخواست اس کی دی جاتی ہے، جو عدالت میں موجود نہ ہو، بشریٰ بی بی عدالت میں موجود تھیں، اجازت کے بغیر عدالت سے چلی گئیں۔

جج قدرت اللہ نے جیل حکام سے استفسار کیا کہ بشری بی بی کے جیل میں داخلے اور اخراج کے کیا اوقات ہیں؟

یاد رہے کہ گزشتہ روز اسلام آباد ہائی کورٹ نے غیر شرعی نکاح کیس کے خلاف بشریٰ بی بی کی درخواست پر ان کے سابق شوہر خاور مانیکا سے جواب طلب کیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button