تازہ ترینخبریںسیاسیات

الیکشن کمیشن نے بابر اعوان کے نشستوں سے متعلق بیان کو ’مضحکہ خیز‘ قرار دے دیا

الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے وکیل بابر اعوان کے قومی اسمبلی کی نشستوں سے متعلق حالیہ بیان پر ردعمل کا اظہار کر دیا۔

ترجمان الیکشن کمیشن نے کہا کہ بابر اعوان کا بیان مضحکہ خیز ہے اور خیبر پختونخوا کی نشستیں کم کرنے سے متعلق بیان حقائق کے منافی ہے، یہ عوام کے ذہنوں میں ابہام  پیدا کرنے کی ناکام کوشش ہے۔

الیکشن کمیشن نے کہا کہ سابق فاٹا کو ضم کرنے سے فاٹا کی 12 قومی اسمبلی کی نشستوں کو ختم کیا گیا جبکہ اس کے بعد صوبے کی قومی اسمبلی میں 6 نشستوں کا اضافہ کیا گیا، صوبے کی نشستیں بڑھ کر 39 سے 45 ہوگئیں، صوبائی اسمبلی میں 16 جنرل سیٹوں کا اضافہ کر کے 99 سے 115 کی گئیں۔

ترجمان نے کہا کہ بطور وکیل بابر اعوان کو کوئی بات آئین و قانون سے ہٹ کر نہیں کرنی چاہیے، قومی و صوبائی اسمبلیوں کی سیٹوں کا تعین پارلیمنٹ کا استحقاق ہے، آئین کے مطابق مختص سیٹوں کے مطابق الیکشن کمیشن نے حلقہ بندی  کی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے وکیل بابر اعوان نے کہا تھا کہ ہم ہر سیٹ سے الیکشن لڑیں گے اور سربراہ پی ٹی آئی خود امیدوار ہوں گے، آئین میں لکھا ہے قومی اسمبلی کی 342 سیٹیں ہوں گی انہوں نے کہا ہم نے 4 اڑا دیں۔

بابر اعوان نے کہا کہ یہ صوبائی خود مختاری میں مداخلت ہے جو نہیں ہونی چاہیے، آئین کے مطابق فاٹا کو خصوصی توجہ اور خصوصی رعایت ملنی چاہیے، فاٹا کے عوام نواز شریف کو ووٹ نہیں دیں گے اس وجہ سے ان کے ساتھ زیادتی کی گئی، فاٹا میں میرے آباؤ اجداد کی قبریں ہیں میں ان کے ساتھ ہوں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button