Uncategorized

ٹوکیو اولمپکس کے رنگا رنگ میلے کی افتتاحی تقریب کا آغاز

کورونا وائرس کے باعث ایک سال کی تاخیر کے بعد ٹوکیو اولمپکس کا آغاز متعدد پابندیوں کے تحت کردیا گیا۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کی رپورٹ کے مطابق عالمی کھیلوں کی افتتاحی تقریب کا آغاز رنگا رنگ تقریب سے ہوا جو اصل شیڈول سے 364 روز کی تاخیر کے بعد منعقد ہوئی۔
اولمپک اسٹیڈیم بڑے پیمانے پر خالی ہے اور اس کے داخلی دروازوں پر ٹوکیو 2020 کی یادداشت کا اسٹور بھی بند ہے۔
ان کھیلوں کے ٹریک اور فیلڈ ایونٹ اسٹیڈیم میں ہوں گے۔
اسٹیڈیم کے ٹریک پر ہونے والی افتتاحی تقریب میں رنگا رنگ گرافکس دکھائے جارہے ہیں جبکہ چند معززین اور مدعو کیے گئے مہمان اسٹیڈیم کی نشستوں پر موجود ہیں جن میں امریکی خاتون اول جِل بائیڈن بھی شامل ہیں۔
بہت سی باقی نشستوں پر پلے کارڈز آویزاں کیے گئے ہیں۔
25 نئے کیسز رپورٹ
ٹوکیو اولمپکس کے منتظمین نے 25 نئے کووڈ 19 کے کیسز رپورٹ کیے ہیں جن میں سے 3 کھلاڑی شامل ہیں۔
یکم جولائی سے جاپان میں اولپمکس کا حصہ بننے والے اب تک 110 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جن میں 13 کھلاڑی بھی شامل ہیں۔
اس کے علاوہ بیرون ملک سے جاپان آنے والے 3 میڈیا ورکرز بھی وائرس کا شکار ہوچکے ہیں۔
اولپمکس کی منسوخی کا مطالبہ
دوسری جانب تقریباً 50 سے زائد مظاہرین نے ٹوکیو میٹرو پولٹن کی عمارت کے باہر احتجاج کیا، جن کا مطالبہ ہے کہ اولمپکس کو منسوخی کیا جائے۔
مظاہرین ٹوکیو میٹرو پولیٹن گورنمنٹ کی عمارت کے باہر جمع ہوئے جہاں انہوں نے اولمپکس میں شرکت نہ کرنے اور لوگوں کی جانیں بچانے کے نعرے لگائے۔
100 امریکی کھلاڑیوں کو ویکسین نہیں لگی
ادھر امریکی اولمپک اور پیرا اولمپک کمیٹی کا کہنا تھا کہ اولمپکس کے لیے ٹوکیو جانے والے 613 امریکی کھلاڑیوں میں سے 100 کو ویکسینیشن نہیں ہوئی۔
میڈیکل ڈائریکٹر جوناتھن فننوف کا کہنا تھا کہ سفر کے لیے تیاری کرتے ہوئے 567 امریکی ایتھلیٹس نے اپنی صحت کی ہسٹری کو پُر کیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ 83 فیصد نے جواب دیا کہ انہیں ویکسین لگائی گئی ہے، 83 فیصد کافی تعداد ہے اور کمیٹی اس سے کافی خوش ہے۔
واضح رہے کہ امریکا میں قومی سطح پر 56.3 فیصد امریکیوں نے ویکسین کی کم از کم ایک خوراک حاصل کرلی ہے۔
بین الاقوامی اولمپک کمیٹی کا اندازہ ہے کہ اولمپک کے رہائشیوں میں سے تقریبا 85 نے ویکسینیشن مکمل کروالی ہے۔
اس بات کا انحصار اس پر ہے کہ ہر ایک ملک کی اولمپک کمیٹی انہیں رپورٹ کرتی ہے تاہم وہ آزادانہ طور پر تصدیق شدہ اعداد و شمار نہیں ہیں۔
پولینڈ کے 6 تیراکوں کی وطن واپسی
اولمپکس شروع ہونے سے پہلے ہی پولینڈ کے 6 تیراک وطن واپس لوٹ گئے، پولینڈ کی جانب سے غلطی سے زیادہ کھلاڑیوں کو ٹوکیو بھیجنے کے باعث ان کے خوابوں کو چکنا چور کردیا۔
پولینڈ کے صرف 17 تیراکوں نے ٹوکیو اولمپکس کے لیے کوالیفائی کیا تھا جبکہ ملک کی تیراکی کے فیڈریشن نے طیارے میں جاپان کے لیے 23 کھلاڑیوں کو روانہ کردیا تھا جس پر تنقید کی گئی اور بعد میں پولینڈ نے اپنے چند تیراکوں کو واپس بلالیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button