تازہ ترینخبریںسیلاب

انٹرنیشنل پنجابی فاؤنڈیش کی پاکستان میں سیلاب متاثرین کے لیے امدادی سرگرمیاں

بھارتی نژاد کینیڈین شہری گروچرن سنگھ بنویت سیلاب سے متاثرہ افراد کی مدد کے لیے کینیڈا سے پاکستان پہنچ گئے ۔

واضح رہے کہ موسلا دھار بارشوں کے نتیجے میں آنے والے تباہ کن سیلاب نے پاکستان میں تباہی مچا دی جس سے تقریباً 33 ملین افراد بے گھر ہو گئے۔ جون کے وسط سے اب تک تقریباً 1,600 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جب کہ ہزاروں زخمی ہوئے ہیں۔

گروچرن سنگھ کا کہنا ہے کہ ان کی تنظیم، انٹرنیشنل پنجابی فاؤنڈیشن، دنیا کے کئی ممالک میں فلاحی خدمات میں مصروف ہے، ہم یہ امداد سکھ مذہب کے بانی بابا گرو نانک کی تعلیمات کی روحانی روشنی میں سرحدوں کی پرواہ کیے بغیر کر رہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ میں کسی ملک یا مذہب کا نمائندہ نہیں ہوں۔ میں جو کچھ کرتا ہوں وہ بابا گرو نانک اور ’واہ گرو‘ کی تعلیمات سے رہنمائی کرتا ہوں،‘ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ ضرورت کی اس گھڑی میں اپنے پاکستانی بھائیوں اور بہنوں کی مدد کرنے آئے ہیں۔

فاؤنڈیشن نے پاکستان میں سکھ بھائیوں اور سندھ اور بلوچستان کے متاثرہ علاقوں میں حکومتی نمائندوں کی رہنمائی میں سینکڑوں خاندانوں میں خیمے، راشن، ادویات اور نقدی تقسیم کی ہے۔”

گروچرن سنگھ نے کہاکہ یہاں کی صورتحال انتہائی تشویشناک ہے، لوگوں کو بہت مدد کی ضرورت ہے،” انہوں نے کہا کہ گھروں کی تعمیر اور بحالی میں کئی ماہ لگ سکتے ہیں۔ ’’اس کے لیے بہت زیادہ رقم درکار ہے۔‘‘

انہوں نے دنیا بھر میں پھیلی سکھ برادری اور بین الاقوامی فلاحی تنظیموں سے پاکستانی قوم کا ساتھ دینے کی اپیل کی۔انہوں نے کہا کہ وہ امدادی سرگرمیوں کی اجازت دینے پر حکومت پاکستان کے شکر گزار ہیں۔ پاکستانی قوم نے مجھے بہت پیار دیا ہے۔

گروچرن سنگھ نے عزم کا اظہار کیا کہ ان کی تنظیم سیلاب متاثرین کی مدد اس وقت تک جاری رکھے گی جب تک کہ تمام متاثرہ خاندان اپنے گھر واپس نہیں آ جاتے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button