ہیٹ سٹروک کی علامات اور بچائو

 ہیٹ سٹروک کی علامات اور بچائو

دن بدن بڑھتی ہوئی تپش اور جھلسانے والی گرمی میں باہر نکلنا خطرناک ثابت ہوسکتا ہے، اس سے نہ صرف ہیٹ سٹروک ہوسکتا ہے ۔ سم گرما میں جب درجہ حرارت40ڈگری سینٹی گریڈ سے بڑھ جاتاہے تو شدید گرمی اور چلچلاتی دھوپ کی وجہ سے ہیٹ سٹروک کا خدشہ بڑھ جاتاہے اور اگر حفاظتی اقدامات پر فوراً عمل نہ کیا جائے تو جان سے جانے کا خطرہ ہوتاہے۔ تاہم  چند احتیاططی تدابیر سے گرمی کی اس شدید لہر سے  محفوظ رہا جا سکتا ہے  ۔  اس سے بچنے کیلئے کار میں بہت زیادہ دیر تک نہ بیٹھے رہیں ۔ ڈھیلے ڈھالے اور ہلکے کپڑے پہنیں ۔ mکوشش کریں کہ زیادہ سے زیادہ سائے میں رہیں ۔   بار بار پانی پیتے رہیں ۔ mباہر نکلیں تو گیلے تولیے سے سر اور چہرے کو ڈھک کر رکھیں۔ mبلا ضرورت گھر سے باہر نہ نکلیں ۔ mچائے ، کافی اور کولڈ ڈرنک کا استعمال کم سے کم کریں ۔ ہیٹ سٹروک کی علامات میں شدید سردرد، بہت زیادہ پسینہ آنا، mسانس کا تیز تیز چلنا اور دل کی دھڑکن بڑھ جانا، mغشی طاری ہونا یا متلی ہونا، mپٹھوں یا بدن میں کھنچائو پیدا ہونا، mجلد خشک یا سرخ ہو جانا شامل ہیں۔ اگر ان علامات یا کیفیت میں سے کوئی ایک بھی نظرآئے تو متاثرہ فرد کو کسی سایہ دار جگہ یا ٹھنڈے کمرے میں لے جائیں۔ اسے لٹا کر ٹانگیں اونچی رکھیں۔ متاثرہ فرد کو ٹھنڈا پانی پلائیں اور اس کے جسم پر بھی ڈالیں۔ تیز پنکھا چلادیں ، لیکن ان تمام اقدمات کے  ساتھ ڈاکٹر سے رجوع کرنا نہ ہرگز مت بھولیں۔گ رمی میں چٹ پٹے، مصالحے والے کھانوں اور تلی ہوئی اشیا کے بجائے سادہ غذائیں استعمال کریں۔ دہی اور لسی بہترین ہیں۔ کھیرے کا جوس، ناریل کا پانی اور لیمن جوس وغیرہ بھی استعمال کئے جاسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ سوڈا مشروبات سے مکمل اجتناب کریں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟