18 اکتوبر 2019
تازہ ترین
 پیازموسمیاتی الرجی کو کم کرنے میں مددگار

 پیازموسمیاتی الرجی کو کم کرنے میں مددگار

لاہور  جب غذائی الرجی کا تذکرہ ہوتا ہے تو چند غذائوں سے پرہیز کا خیال ذہن میں آتا ہے۔ موسمیاتی الرجیز اور غذائوں کا تعلق تو ہوتا ہے لیکن ایسی غذائیں زیادہ نہیں ہیں۔ دوسری جانب وہ غذائیں ہیں جو الرجیز سے محفوظ رکھنے میں معاون ہیں۔ الرجی کی بہت سی علامات کی وجہ سوزش ہوتی ہے جیسے ناک کی نالی، آنکھوں اور گلے میں سوجن اور جلن وغیرہ۔ ادرک ان علامات کو کم کرنے میں مدد دیتی ہے۔ شہد کی مکھیاں پھولوں کے پولن کو جمع کرتی ہیں۔ یہ انسانوں کے لئے بے حد مفید ہوتے ہیں۔ ان میں اینزائمز، رس، شہد وغیرہ سب جمع ہو جاتے ہیں اور انہیں بازار سے خریدا جا سکتا ہے۔ جانوروں پر ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق ان سے وہ خلیے متحرک ہوتے ہیں جو الرجی کے خلاف موثر ہیں۔ ترش پھلوں میں وٹامن سی بہت زیادہ مقدار میں ہوتی ہے جو نزلہ زکام کے ساتھ الرجی میں بھی مفید ہے۔ جب الرجی کا موسم چل رہا ہو تو وٹامن سی کا استعمال بڑھا دینا چاہئے۔ یہ سنگترے، لیموں، گریپ فروٹ اور سرخ مرچ میں خاصی مقدار میں ہوتا ہے۔ سوزش کے خلاف ہلدی کی خصوصیات سے بیشتر افراد واقف ہیں۔ الرجی سے مقابلہ کرنے کے لئے ہلدی کو بطور خوراک لینے کے ساتھ چائے میں بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔ وٹامن سی کی کثیر مقدار رکھنے کی وجہ سے ٹماٹر بھی الرجی کے خلاف موثر ہیں۔  ایسے شواہد ملے ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ مچھلیوں میں پائے جانے والے اومیگا3 فیٹی ایسڈز الرجی کے خلاف مزاحمت پیدا کرتے ہیں۔ پیاز کوئیرسیٹن کا بہترین قدرتی ذریعہ ہے۔ تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ یہ عنصر موسمیاتی الرجی کی علامات کو کم کرتا ہے۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟