13 اکتوبر 2019
تازہ ترین
فون استعمال کرتے ہوئے سونا موٹاپے کا سبب

فون استعمال کرتے ہوئے سونا موٹاپے کا سبب

امریکا کے نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ کے سائنسدانوں کے مطابق رات میں سوتے وقت مصنوعی روشنی کا استعمال خواتین کے وزن میں اضافے کا سبب بن سکتا ہے۔ حالیہ تحقیق کے مطابق رات میں خواتین کا ٹی وی دیکھتے دیکھتے یا موبائل فون استعمال کرتے ہوئے سونے سے مصنوعی روشنی صحت پر مضر اثرات ڈالتی ہے اور موٹاپے یا وزن میں اضافے کا سبب بنتی ہے۔ ماہرین نے اس تحقیق کے بعد کچھ پہلو سامنے رکھے جس میں بتایا گیا ہے کہ کس درجہ کی مصنوعی روشنی نقصان کا باعث بنتی ہے۔ اگر کمرے میں معمولی اور دھیمی روشنی میں سویا جائے گا تو اس سے وزن پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، جبکہ وہ خواتین جو موبائل اور ٹیلی ویږن کی روشنی کی موجودگی میں سوتی ہیں ان میں وزن بڑھنے اور موٹاپے کے امکانات 17 فیصد ہوتے ہیں۔ سسٹر سٹڈی کے نام سے کی گئی تحقیق میں ٹیم نے 43,722 خواتین کا ڈیٹا سوالنامہ کے ذریعے حاصل کیا، جس میں خواتین میں ہونے والے بریسٹ کینسر اور دیگر بیماریوں کے خطرات کی جانچ پڑتال کی گئی۔ سوالنامے میں حصہ لینے والی خواتین جن کی عمر 35 سے 75 سال کے درمیان تھی ان کے ماضی میں کینسر اور دل کی بیماریوں کی کوئی تاریخ نہیں تھی۔  سوالنامے میں تمام خواتین سے یہ پوچھا گیا تھا کہ آیا وہ اندھیرے میں سوتی ہیں، ہلکی پھلکی روشنی میں یا تو کمرے میں ٹی وی کی روشنی میں سوتی ہیں؟ سائنسدانوں نے ان تمام خواتین کے وزن اور بنیادی پیمائش کو دیکھتے ہوئے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ وہ خواتین جو اندھیرے میں سوتی ہیں ان خواتین کے مقابلے میں کم وزن رکھتی تھیں جو کہ ٹی وی یا موبائل کی روشنی میں سوتی تھیں۔ ماہرین کے مطابق قدرت نے انسان کے جسم کو اس طرح سے تخلیق کیا ہے کہ وہ دن کی روشنی میں اور رات کے اندھیرے میں جو کام کرتا ہے وہ مصنوعی چیزوں کے ساتھ نہیں کر سکتا، اگر انسان اس میں ردوبدل کرنے کی کوشش کرتا ہے تو اس میں خود کا ہی نقصان ہوتا ہے۔ شہر کے لوگوں کی زندگیاں زیادہ تر مصنوعی چیزوں کے گرد ہی گھومتی ہے یہی وجہ ہے کہ دیہی علاقوں میں بسنے والے افراد شہر میں رہنے والوں سے سے زیادہ صحت مند ہوتے ہیں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟