17 اگست 2019
تازہ ترین
عدالت کا دی لیجنڈ آف مولاجٹ کو بدنام کرنے سے روکنے کا حکم

عدالت کا دی لیجنڈ آف مولاجٹ کو بدنام کرنے سے روکنے کا حکم

سندھ ہائیکورٹ نے فلم دی لیجنڈ آف مولاجٹ اور اس کے پروڈیوسرز کو بدنام کرنے سے روکنے کا حکم جاری کیا ہے۔ پاکستانی سپر سٹار فواد خان اور ماہرہ خان کی فلم دی لیجنڈ آف مولاجٹ اپنے اعلان کے بعد سے ہی مسلسل تنازعات کا شکار ہے۔ فلم کے پروڈیوسرز بلال لاشاری اور عمارہ حکمت فلم کے آغاز سے ہی 1979 میں ریلیز ہوئی مولاجٹ کے پروڈیوسرز کی جانب سے کاپی رائٹ کی خلاف ورزی کے الزامات کا شکار ہیں۔ فلم دی لیجنڈ آف مولاجٹ رواں سال عید الفطر کے موقع پر ریلیز کی جانی تھی لیکن مختلف تنازعات کے باعث فلم کے پروڈیوسرز نے ریلیز کی تاریخ آگے بڑھادی ہے۔ اوریجنل فلم  مولاجٹ کے پروڈیوسرز سرور بھٹی اور دی لیجنڈآف مولاجٹ کے پروڈیوسرز بلال لاشاری اور عمارہ حکمت کے درمیان جنگ عدالت تک پہنچ چکی ہے۔ کچھ عرصہ قبل لاہور ہائی کورٹ نے نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ فلم کے خلاف کوئی حکم امتناعی جاری نہیں ہوا ۔ دی لیجنڈ آف مولاجٹ کی پروڈیوسرعمارہ حکمت کے ٹویٹ کے مطابق اب سندھ ہائی کورٹ نے اوریجنل  مولاجٹ کے پروڈیوسرز یعنی مسٹر بھٹی اور ان کے ساتھیوں کے خلاف حکمِ امتناعی جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ  دی لیجنڈ آف مولاجٹ اور اس کے فلم سازوں کو بدنام کرنے سے باز رہیں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟