19 ستمبر 2018
  154 ارب   کے  18 منصوبے منظور

۔ منگل کو وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات احسن اقبال کی زیر صدارت سینٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کا اجلاس پلاننگ کمیشن میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں وفاقی اور صوبائی محکموں کے اعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں کراچی میں کوسٹل پاور پلانٹ سے بجلی کو قومی گرڈ میں شامل کرنے  کے لئے 5 اعشاریہ 6   ارب روپے کا منصوبہ منظور کیا گیا۔ اجلاس میں پورٹ قاسم کے قریب 350 میگا واٹ کے صدیق سنز انرجی کول فائرڈ پاور پلانٹ سے بجلی کو قومی گرڈ میں شامل کرنے کےلئے 2983 ملین روپے کا منصوبہ منظور، اورکزئی ایجنسی کے علاقے گلجو میں 66کے وی  کے تباہ شدہ گرڈ اسٹیشن کی بحالی کا 145 ملین روپے کا منصوبہ منظور، بلوچستان میں خاران گرڈ اسٹیشن سے مال گرڈ تک 132 کے وی کی ٹرانسمیشن لائن بنانے کےلئے 650 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، اس منصوبے سے 6 فیصد لائن لاسز میں کمی ہو گی۔ اجلاس میں تھر میں شنگھائی الیکٹرک پاور پلانٹ سے بجلی کو قومی گرڈ میں شامل کرنے کے لئے 23 بلین روپے کی مالیت کا منصوبہ منظور، چکوال میں 500 کے وی کے سب اسٹیشن کی تعمیر کا 7027 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، لوئر دیر میں 48 اعشاریہ8 میگا واٹ کا کوٹو ہائیڈروپاور پراجیکٹ کا 14 بلین روپے کا  نظر ثانی شدہ منصوبہ منظور، جھلکڈ سے چلاس تک 71 کلومیٹر سٹرک کی تعمیر کا 7807 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، روہڑی õکوئٹہ۔کوہی õتفتان تک پہلے سے موجود ریلوے لائن کی اپ گریڈیشن کی فیزیبلٹی سٹڈی کا 292 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، اس منصوبے سے کوئٹہ کو پشاور سے ریلوے کے ذریعے ملایا جا سکے گا۔ اجلاس میں وزارت ریلوے کا آپریشنل سٹاف کے لئے کمیونیکیشن سسٹم کی اپ گریڈیشن کا 737 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، آر سی سی کندوس پل سے نلتر ائیر فورس بیس کیمپ تک سڑک کی اپ گریڈیشن کا 2714 ملین کی لاگت کا منصوبہ منظور، صاف ستھرا سندھ پروگرام کا 1523 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، پنجاب میں زراعت کو بہتر کرنے کے 80 بلین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، ایئر یونیورسٹی اسلام آباد میں اکیڈمک اور ریسرچ کی سہولت فراہم کرنے کے لئے 1240 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور کیا گیا۔ اجلاس میں کے کے ایچ پر جی ایس ایم نیٹ ورک کی سہولت فراہم کرنے کے لئے اور جی بی میں جی ایس ایم نیٹ ورک کی اپ گریڈیشن کے لئے 3310  ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ ایکنیک کو بھجوا دیا گیا۔ پلاننگ کمیشن کی کارکردگی کو بڑھانے کے لئے 200 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور، گرین پاکستان پروگرام کے تحت پاکستان میں جنگلات کی زندگی کی حیات نو کے لئے 1124 ملین کامنصوبہ منظور، پاکستان میں زوالوجیکل سروے کے لئے 99 ملین کا منصوبہ بھی منظور کیا گیا۔    


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟