18 ستمبر 2019
تازہ ترین
لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم، سپریم کورٹ نے نجی سکولز  کو فیسوں میں سالانہ صرف5 فیصداضافے کی اجازت دی

لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم، سپریم کورٹ نے نجی سکولز  کو فیسوں میں سالانہ صرف5 فیصداضافے کی اجازت دی

سپریم کورٹ نے نجی سکولز کے حق میں لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے حکم جاری کیا ہے کہ پرائیویٹ سکولز فیس میں سالانہ پانچ فیصد ہی اضافہ کر سکتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ پرائیویٹ سکولز کی فیس میں سالانہ 5 فیصد سے زیادہ اضافہ نہیں ہوگا۔ نجی اسکولز کے حق میں لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دیدیا گیا۔ اس کے علاوہ سندھ ہائی کورٹ فل بنچ کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے فیسوں میں 20 فیصد کمی سمیت تمام عبوری حکم واپس لے لیے گئے۔ عدالت نے نجی سکولز کو فیس میں کمی سے لے کر آج تک کم شدہ فیس بطور بقایا جات لینے سے روک دیا۔ عدالت عظمیٰ نے فیصلے میں کہا ہے کہ نجی سکولز اگر فیس میں 5 کے بجائے 6 سے 8 فیصد تک سالانہ اضافے کریں گے تو انہیں اس کیلئے جواز پیش کرنا ہوگا۔ مختصر فیصلہ جسٹس اعجاز الاحسن نے پڑھ کر سنایا۔ جسٹس فیصل عرب نے فیسوں میں 5 فیصد اضافے کی حد مقرر کرنے سے اختلاف کیا۔ تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟