01 دسمبر 2021
تازہ ترین
حکومت سینیٹ میں بھی کامیاب، 4بل منظور

حکومت سینیٹ میں بھی کامیاب، 4بل منظور

اسلام آبادٜ حکومت کو سینیٹ میں کامیابی مل گئی،4بل ایوان سے منظور کرانے میں کامیاب ہوگئی، جن میں ہائر ایجوکیشن کمیشن بل، صحافیوں کے حقوق کے تحفظ کا بل اور قومی احتساب ترمیمی بل 2021 بھی شامل ہیں۔ صادق سنجرانی کے زیر صدارت سینیٹ اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر شیریں مزاری نے ملازمتی مقامات پر خواتین کو ہراساں کئے جانے کے خلاف تحفظ ترمیمی بل 2021، نظام عدل برائے نو عمر افراد ترمیمی بل، قومی کمیشن برائے حقوق تحفظ ترمیمی بل، اسلام آباد دارالخلافہ تحفظ طفل ترمیمی بل ایوان میں پیش کئے۔ چیئرمین سینٹ نے تمام بلز کو متعلقہ کمیٹیوں کے سپرد کر دیا۔ چیئرمین سینیٹ کی جانب سے حکومتی بلز کمیٹی کو بھجوانے پر وزیر مملکت علی محمد خان نے شکوہ کرتے ہوئے چیئرمین سینیٹ کو شعر سنا دیا۔ دیکھا جو تیر کھا کے کمین گاہ کی طرف ۔ اپنے ہی دوستوں سے ملاقات ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے ہم نے آپ کو ووٹ ہی نہیں دیا، آج تو لگتا ہے آپ صرف اپوزیشن کے چیئرمین ہیں، حکومت کے تمام بل کمیٹی کو بھجوائے جارہے ہیں۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ میں پورے ایوان کا چیئرمین ہوں، اپوزیشن کا بھی اور حکومتی سائیڈ کا بھی، میرے لئے تمام ارکان قابل احترام ہیں۔ قائد ایوان ڈاکٹر شہزاد وسیم نے کہا کہ اپوزیشن کہتی ہے کہ ہمیں چیئرمین کا احترام ہے، شکر ہے کہ یہ احترام کرتے ہیں لیکن ان کا احترام بھی سلیکٹڈ ہے، جب انکے حق میں فیصلہ ہو تو اسے تسلیم کرتے ہیں، لیکن اکثریت کو بلڈوز کرنا کہتے ہیں۔ پھر وزیرمملکت علی محمد خان نے ہائر ایجوکیشن کمیشن سے متعلق ترمیمی بل ایوان میں پیش کئے جو کثرت رائے سے منظور کر لئے گئے۔ اس کے بعد حکومت کی جانب سے ایوان میں ضمنی ایجنڈا پیش کیا گیا تو اپوزیشن نے احتجاج اور شور شرابہ کیا۔ ارکان نے چیئرمین کے ڈائس کے سامنے احتجاج کیا۔ حکومت نے ضمنی ایجنڈے پر صحافیوں کے تحفظ کا بل پروٹیکشن آف جرنلسٹس اینڈ میڈیا پروفیشنلز بل 2021سینیٹ میں پیش کیا تو اپوزیشن نے اس بل کی مخالفت کرتے ہوئے متعلقہ قائمہ کمیٹی کو بھیجنے کا مطالبہ کیا۔ تاہم چیئرمین نے اس بل پر ووٹنگ کرائی تو ایوان نے کثرت رائے سے صحافیوں کے تحفظ کا بل منظور کرلیا۔ جرنلسٹ پروٹیکشن بل کے حق میں 35اور مخالفت میں 29ووٹ آئے۔ وزیر قانون فروغ نسیم نے نیب ترمیمی بل 2021ایوان میں پیش کیا جو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا۔ اپوزیشن نے ایجنڈا کی کاپیاں پھاڑ کر چیئرمین کی طرف لہرا دیں اور شدید احتجاج کیا۔ چیئرمین نے  اجلاس غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کر دیا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟