01 دسمبر 2021
تازہ ترین
انتہا پسندی کی وجہ مدارس نہیں، سکول، کالج ہیں، فواد چودھری

انتہا پسندی کی وجہ مدارس نہیں، سکول، کالج ہیں، فواد چودھری

اسلام آباد ٜ وزیر اطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ ریاست کا کام قانون کی عمل داری کو یقینی بنانا ہے لیکن ٹی ایل پی کیس میں ریاست کو پیچھے ہٹنا پڑا۔ نجی  ہوٹل  میں  پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف پیس سٹڈیز کے زیر اہتمام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا فواد حسین چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت و ریاست انتہا پسندی سے لڑنے کے لیے مکمل تیار ہیں، ریاست کا کام قانون کی عمل داری کو یقینی بنانا ہے لیکن ٹی ایل پی کیس میں ریاست کو پیچھے ہٹنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کا کنٹرول ختم ہونے پر جتھے قانون ہاتھ میں لے لیتے ہیں، حکومتی رٹ ختم ہوگی تو انتہا پسند حاوی ہوجائیں گے، نکتہ نظر ہر کسی کا حق ہے لیکن کسی پر زبردستی تھوپنا درست نہیں۔ وزیر اطلاعات نے کہا کہ ہمیں امریکہ، بھارت، یورپ سے کوئی خطرہ نہیں، ہمیں سب سے بڑا خطرہ اپنے آپ سے ہے، انتہا پسندی کی وجہ مدارس نہیں سکول اور کالج ہیں جہاں سے انتہا پسندی وجود میں آئی، سکول، کالجوں میں انتہا پسندی کی تعلیم دینے والے اساتذہ بھرتی کیے گئے اور مقامی انتظامی نظام کو بھی تباہ کر دیا گیا۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟