01 دسمبر 2021
تازہ ترین
امیر ممالک کی آلودگی سے غریب ملکوں میں 20لاکھ افراد ہلاک

امیر ممالک کی آلودگی سے غریب ملکوں میں 20لاکھ افراد ہلاک

 ٹوکیوٜ جاپانی سائنسدانوں نے تخمینہ لگایا ہے کہ امیر ممالک کےلئے اشیائے صرف کی تیاری سے پیدا ہونے والی آلودگی، 2010ئ کے دوران غریب ملکوں میں 20لاکھ قبل از وقت اموات کی یقینی وجہ بن چکی ہے۔ یہ تحقیق دنیا کے امیر ترین ممالک کے گروپ جی 20 پر کی گئی ہے جس میں 19ملکوں کے علاوہ 27یورپی ملکوں کا اتحاد یورپین یونین بھی شامل ہیں۔ جی 20ممالک نہ صرف امیر ہیں بلکہ وہاں عام شہری کا معیارِ زندگی بھی اوسط اور کم آمدنی والے ملکوں کے شہریوں سے کہیں زیادہ بلند ہے جسے برقرار رکھنے کے تقاضے بھی بہت زیادہ ہیں۔ واضح رہے کہ فضائی آلودگی کے وہ ذرّات جن کی جسامت 2.5مائیکرومیٹر یا اس سے بھی کم ہو، انہیں ماحولیات کی اصطلاح میں پی ایم 2.5 کہا جاتا ہے۔ یہ ذرّات لمبے عرصے تک ہوا میں معلق رہ سکتے ہیں اور ہوا کے ساتھ ہزاروں میل دُور تک پہنچ سکتے ہیں۔ اسی بنائ پر یہ ماحول کے ساتھ ساتھ انسانی صحت کےلیے بھی شدید خطرناک ثابت ہوتے ہیں۔ اندازہ ہے کہ ہر سال دنیا بھر میں 40 لاکھ اموات کی وجہ یہی پی ایم 2.5 آلودگی بنتی ہے جبکہ ان مرنے والوں کی اکثریت غریب ملکوں سے تعلق رکھتی ہے۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟