30 نومبر 2021
تازہ ترین
کشتی اب پانی پر اڑے گی بھی بادبان کھولے جانے پر یہ صرف 10 ناٹ رفتار سے چلنے والی ہوا سے پانی پر ’اُڑنے‘ لگے گی

کشتی اب پانی پر اڑے گی بھی بادبان کھولے جانے پر یہ صرف 10 ناٹ رفتار سے چلنے والی ہوا سے پانی پر ’اُڑنے‘ لگے گی

میلان(جہان نیوز)مختلف ممالک کے تین اداروں نے مشترکہ طور پر ایک ایسی جدید بادبانی کشتی ڈیزائن کر لی ہے جو پانی پر تقریباً اُڑتے ہوئے، تیز رفتاری سے آگے بڑھ سکے گی۔یہ کشتی جسے ’’پرسیکو ایف 70 ہائپربوٹ‘‘ کا نام دیا گیا ہے، پرسیکو میرین، کارکیک ڈیزائن پارٹنرز اور پینن فارینا ناٹیکا کے اشتراک سے ڈیزائن کی گئی ہے جس کی لمبائی 70 فٹ ہوگی۔یہ تفریحی مقاصد کے علاوہ بادبانی کشتیوں کی ریس میں بھی استعمال ہوسکے گی۔ اس پر لمبے بادبان نصب ہیں جنہیں ضرورت پڑنے پر کھولا اور بند کیا جاسکتا ہے۔کشتی کو ہر ممکن حد تک کم وزن اور مضبوط بنانے کےلیے اس میں کاربن کمپوزٹ کہلانے والے مادّے کا بھرپور استعمال کیا گیا ہے۔بادبان (فوائلز) کھولے جانے پر یہ صرف 10 ناٹ (18.5 کلومیٹر فی گھنٹہ) کی رفتار سے چلنے والی ہوا پر ’’فل فلائٹ موڈ‘‘ میں آجائے گی۔یہ تو معلوم نہیں کہ اس مرحلے پر کشتی کی رفتار کیا ہوگی، لیکن کمپنی پریس ریلیز میں اتنا ضرور بتایا گیا ہے کہ فل فلائٹ موڈ میں اس ’’ہائپربوٹ‘‘ کا بہت معمولی حصہ پانی کو چھو رہا ہوگا، یعنی یہ پانی پر اُڑتی ہوئی محسوس ہوگی۔لمبائی کے مقابلے میں اس کی چوڑائی خاصی کم ہے لیکن پھر بھی اس کا اندرونی حصہ بہت کشادہ اور آرام دہ ہے جہاں عملے کے افراد آرام سے رہ سکیں گے۔پرسیکو ایف 70 ہائپربوٹ میں بجلی سے چلنے والا انجن بھی نصب ہوگا لیکن وہ صرف شدید ضرورت پڑنے پر ہی استعمال کیا جائے گا۔یہ کہنا زیادہ بہتر رہے گا کہ اکیسویں صدی کی اس بادبانی کشتی میں ڈیزائن کی خوبصورتی، ساخت کی پائیداری اور آب حرکیات (ہائیڈرو ڈائنامکس) کے قوانین بیک وقت سمو دیئے گئے ہیں۔  


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟