21 اگست 2019
تازہ ترین
فرشتہ قتل کیس: معطل تفتیشی افسر اور ایس ایچ او گرفتار، مقدمہ درج

فرشتہ قتل کیس: معطل تفتیشی افسر اور ایس ایچ او گرفتار، مقدمہ درج

اسلام آباد میں اغوا کے بعد قتل ہونے والی بچی فرشتہ کی گمشدگی کی ایف آئی آر درج نہ کرنے والے ایس ایچ او اور تفتیشی افسر کو گرفتار کر لیا گیا۔ دونوں معطل پولیس اہلکاروں کے خلاف مقتول بچی کے والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق شہر اقتدار میں فرشتہ مہمند نامی بچی سے مبینہ زیادتی کے بعد قتل کے بعد مجرمانہ غفلت کے مرتکب معطل ایس ایچ او شہزاد ٹائون اور تفتیشی افسر کے خلاف مقدمہ درج کرکے انھیں گرفتار کر لیا گیا ہے۔ آئی جی پولیس عامر ذوالفقار خان دیگر پولیس افسران کے ساتھ مقتولہ بچی فرشتہ کے گھر پہنچے۔ انہوں نے ایس ایچ او شہزاد ٹائون کیخلاف مقدمہ کی کاپی متاثرہ خاندان کو دی اور مجرمان کو کیفر کردار تک پہنچانے کی یقین دہانی کرائی۔ دوسری جانب پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمان اور امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے بھی مقتولہ بچی کے گھر جا کر تعزیت کی اور غمزدہ خاندان کو انصاف دینے اور مجرموں کو نشان عبرت بنانے کا مطالبہ کیا۔ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر شیری رحمان نے بچی کے والد کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ کیا یہ نیا پاکستان ہے؟ ریاستِ مدینہ میں ایسا واقعہ اور لواحقین سے جو پولیس نے کیا، کبھی نہیں ہو سکتا۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں معصوم بچی کے ساتھ جو ظلم ہوا، وہ حکومت سمیت سب کے لئے باعث شرم ہے۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟