20 اکتوبر 2020
تازہ ترین
سیاستدانوں کو عدالت یا ڈنڈے سے چلایا گیا تو کمپنی نہیں چلے گی، بلاول بھٹو

سیاستدانوں کو عدالت یا ڈنڈے سے چلایا گیا تو کمپنی نہیں چلے گی، بلاول بھٹو

 پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ سیاستدانوں کو عدالت یا ڈنڈے سے چلایا گیا تو کمپنی نہیں چلے گی، زبردستی اور غیرقنانونی طریقے کی قانون سازی کا کوئی مستقبل نہیں، 18ویں ترمیم اور این ایف سی حکومتی نشانے پر ہیں، پارلیمنٹ میں ہمارے ووٹ نہیں گنے جائیں گے تو ہمیں بھی سوچنا ہوگا۔   انہوں نے پاکستان بار کونسل کے زیراہتمام آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ پاکستان ایک ایسے وقت سے گزر رہا ہے، جہاں ہمیں بتایا جاتا ہے کہ ہم ریاست مدینہ میں ہیں، لیکن حال یہ ہے کہ موٹروے پر ایک خاتون کی بچوں کے سامنے ریپ ہوتا ہے۔ جن کی ذمہ داری ہے کہ خواتین کو حقوق کا تحفظ دلایا جائے وہ ظالم پر نہیں مظلوم پر سوال اٹھاتے ہیں۔   آج یہ حال ہے کہ سیلاب سے کسانوں کی فصلیں تباہ ہوگئیں۔   2011ء میں بھی جب سیلاب آیا تھا تو وفاق نے صف اول کا کردار ادا کیا تھا۔ آج ہمارے سیلاب متاثرین لاوارث ہیں۔ ہم اپنے آپ کو مدینہ کی ریاست کہتے ہیں؟


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟