25 اگست 2019
تازہ ترین
 قبائلی اضلاع کو قومی دھارے میں لانے کیلئے بڑا قدم، انتخابات آج ہونگے

 قبائلی اضلاع کو قومی دھارے میں لانے کیلئے بڑا قدم، انتخابات آج ہونگے

قبائلی اضلاع میں الیکشن کے دوران پریذائیڈنگ افسروں کو مجسٹریٹ کے اختیارات مل گئے، 1896 پولنگ سٹیشنز قائم، پانچ سو چون انتہائی حساس قرار، سی سی ٹی وی کیمرے نصب کر دیئے گئے۔ خیبر پختونخوا اسمبلی کی سولہ نشستوں پر دو خواتین سمیت 282 امیدواروں میں مقابلہ ہوگا جبکہ 27 لاکھ، 98 ہزار ووٹرز حق رائے دہی استعمال کرنے کے اہل ہونگے۔ الیکشن کمیشن حکام نے انتخابات کے نتائج واٹس ایپ پر ٹرانسفر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ الیکشن کمیشن کے ترجمان ندیم قاسم اور اے ڈی جی الیکشنز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کے انتخابات ہوں گے جس کی تیاریاں مکمل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ پولنگ کا عمل صبح آٹھ بجے سے شام پانچ بجے تک جاری رہے گا۔ پولنگ کے لیے کل 1896 پولنگ سٹیشنز بنائے گئے ہیں۔ پاک فوج کے جوان انتہائی حساس 554 پولنگ سٹیشنز کے اندر اور باہر جبکہ دیگر تمام پولنگ سٹیشنز کے باہر تعینات ہوں گے۔ ووٹرز کے لئے اٹھائیس لاکھ اکانوے ہزار بیلٹ پیپرز چھاپے گئے ہیں۔ الیکشن کمیشن حکام کا کہنا ہے کہ سیکورٹی کے حوالے سے صوبائی حکومت بھی بھرپور تعاون کر رہی ہے۔ مجموعی طور پر 28 لاکھ سے ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے، جن میں 16 لاکھ سے زائد مرد جبکہ 11 لاکھ سے زائد خواتین ووٹرز شامل ہیں۔ پریزائیڈنگ افسروں کو مجسٹریٹ درجہ اول کے اختیارات سونپے گئے ہیں۔ پولنگ سٹیشن پر پولیس، لیویز، خاصہ دار اور پاک فوج کے دستے بھی تعینات ہوں گے۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟