25 ستمبر 2018
تازہ ترین
گیس ٹیرف میں 30فیصد اضافے کی تجویز مسترد

برآمد کنندہ صنعتی شعبے نے اوگرا کی جانب گیس کے ٹیرف میں 30 فیصد اضافے کی تجویز پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے مسترد کر دیا۔ پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے چیف کوآرڈینیٹر و محمد جاوید بلوانی کی جانب سے نگراں وزیراعظم کو بھیجے گئے مکتوب میں کہا گیا کہ برآمدی صنعتوں کے گیس ٹیرف میں اضافے کے بجائے کمی کی جائے تاکہ مقامی ٹیرف حریف ممالک کے برابر لائے جاسکیں اور ملکی برآمدات میں اضافہ ممکن ہو۔ انہوں نے کہا کہ ایکسپورٹ میں بتدریج اضافہ ہو ا اور ہر ماہ کارکردگی بہتر ہو رہی ہے ، تاہم گیس ٹیرف میں اضافہ اس میں بڑی رکاوٹ بن جائے گا، برآمدی صنعتوں کو پہلے ہی متعدد چیلنجز اور مشکلات کا سامنا ہے، پاکستان میں گیس ٹیرف 6.59 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو ہیں جبکہ بنگلہ دیش میں یہ 3.22ڈالر اور بھارت میں 4.66ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو ہیں۔ اسی طرح پاکستان میں بجلی کے ٹیرف 0.10 ڈالر فی کلو واٹ جبکہ بنگلہ دیش اور بھارت میں 0.09ڈالر ہیں، اسی طرح پاکستان میں پانی 0.50 ڈالر سے2 ڈالر فی ہزار گیلن اور لیبر کی اجرت 123.45ڈالر ماہانہ ہے، جبکہ بنگلہ دیش میں اجرت 65 ڈالر ماہانہ ہے۔ جاوید بلوانی نے نگران وزیراعظم سے اپیل کی کہ اوگرا کی سفارشات پر ایکسپورٹ انڈسٹری کا گیس ٹیرف بڑھانے کے بجائے کمی کرتے ہوئے خطے میں حریفوں ممالک کے برابر لایا جائے اور برآمدی شعبے کے لئے علیحدہ گیس ٹیرف متعارف کرائے جائیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟