23 ستمبر 2018
تازہ ترین
کینیڈا کا سعودی عرب سے  معافی مانگے سے انکار

کینیڈا اور سعودی عرب کے درمیان سفارتی کشیدگی میں سعودی عرب نے کہا ہے کہ ثالثی کی گنجائش نہیں اور کینیڈا کو معلوم ہے کہ بڑی غلطی کو درست کرنے کے لئے کیا کرنا ہے، جبکہ کینیڈا نے معافی مانگنے سے انکار کر دیا ہے۔ کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے سعودی عرب کے انسانی حقوق پر تشویش کا اظہار کرنے پر معافی مانگنے سے انکار کر دیا ۔ مونٹریال میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جسٹن ٹروڈو نے کہا کہ کینیڈا ہمیشہ بھرپور اور واضح انداز میں نجی اور سب کے سامنے انسانی حقوق کے سوال پر بولتا رہے گا۔ ہم سعودی عرب کے ساتھ خراب تعلقات نہیں چاہتے۔ کینیڈا تسلیم کرتا ہے کہ سعودی عرب نے انسانی حقوق کے معاملے پر کافی کام کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کینیڈا کی وزیر خارجہ کرسٹیا فریلینڈ کی سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر سے تفصیلی بات چیت ہوئی  تاکہ اس معاملے کو حل کیا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا  کہ سفارتی سطح پر بات چیت ہوتی رہے گی،  ضروری نہیں ہے کہ ہمارے سعودی عرب کے ساتھ خراب تعلقات ہوں۔ سعودی عرب دنیا کا ایک اہم ملک ہے جو انسانی حقوق کے حوالے سے کام کر رہا ہے۔  دوسری جانب  سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے  پریس کانفرنس میں کہا کہ  ثالثی کرنے کو کچھ نہیں ہے۔ ایک غلطی سرزد ہوئی اور اس غلطی کو درست کرنا ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مزید خراب ہونے کا عندیہ اس بات سے ملتا ہے کہ سعودی وزیر خارجہ نے کہا سعودی عرب کینیڈا کے خلاف مزید اقدامات لینے کے حوالے سے سوچ رہا ہے۔ تاہم انہوں نے تفصیلات نہیں دیں۔ 


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟