18 نومبر 2018
تازہ ترین
کڑوا خربوزہ ذیابیطس  کے مریضوں کیلئے مفید

ذیابیطس  ٹائپ 2 کے مریضوں کو اکثر خون میں شوگر کی سطح کو کم رکھنا پڑتا ہے۔ بلڈ شوگر کی سطح کو زیادہ رہنے دینا سنجیدہ نوعیت کی جان لیوا صورتحال جیسے کہ کوما یا پانی کا خشک ہوجانا، کا سبب بن سکتا ہے۔ ایسی صورت میں  ایک غذا ایسی ہے جو مریضوں میں  بلڈ شوگر کی زیادہ سطح کو کم کرنے میں مدد کر سکتی ہے۔ کچھ  تحقیقوں  میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ذیابیطس ٹائپ2 کے مریض  کڑوا خربوزہ استعمال کر کے بلڈ شوگر کو قابو کر سکتے ہیں۔ کڑوے خربوزے میں کم از کم تین ایسے اجزا موجود ہوتے ہیں جو انسداد، ذیابیطس خصوصیات کے حامل ہوتے ہیں۔ ان اجزا میں چیرنٹن، جو بلڈ شوگر کو کم کرتا ہے، ویسین اور  انسولین جیسا مرکب جو پولی پیٹائیڈ - پی کہلاتا ہے ، شامل ہوتے ہیں۔کڑوے خربوزے میں ایک لیکٹن موجود ہوتا ہے جو اطراف کے ٹشوز پر اثر کر کے اور بھوک مٹا کر بلڈ شوگر کم کرتی ہے۔ 2011میں شائع ہونے والی ایک تحقیق میں بتایا کہ چار ہفتوں تک روزانہ  دو ہزار ملی گرام  کڑوا خربوزہ کھانا ذیابیطس ٹائپ 2 کے مریضوں میں بلڈ شوگر کی سطح کم کرتا ہے۔ کسی بھی بات پر عمل کرنے سے قبل ڈاکٹر سے رجوع کریں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟