13 نومبر 2018
تازہ ترین
کراچی چیمبر نے بھی کاروبار اور شادی ہالز کی جلد بندش رد کردی

اس ضمن میں جمعرات کو ایوان تجارت و صنعت کراچی میں تاجرتنظیموں کے اجلاس کے بعدبزنس مین گروپ کے چیئرمین سراج قاسم تیلی نے کے سی سی آئی کے صدر شمیم احمد فرپو کے ہمراہ ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ کراچی شہر کے عوام کے طرز زندگی کو مدنظر رکھتے ہوئے 7بجے دکانوں اور مارکیٹوں کو بند کرنا فوری طور پر ممکن نہیں اس لیے حکومت سندھ کو چاہیے کہ وہ دکانوں کی بندش کے اوقات پر نظرثانی کرتے ہوئے اس میں 2گھنٹے کی توسیع کردے جبکہ شادی ہالز کے بند کرنے کے اوقات میں بھی 1 گھنٹے کا اضافہ کیا جائے۔

 

کراچی چیمبر میں منعقد اجلاس میں تمام تاجروں نے متفقہ رائے پر فیصلہ کیا کہ وہ دکانیں 9 سے 10 بجے تک بند کردینگے۔سراج قاسم تیلی نے تاجرنمائندوں کو بتایا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے اوقات کار کے تعین کیلیے صوبائی وزیر تجارت وصنعت منظوروسان کی سربراہی میں4 رکنی کمیٹی قائم کی ہے جس کے دیگر اراکین میں سینیٹر سعید غنی، مشیر اطلاعات مولا بخش چانڈیو اور مشیر قانون مرتضیٰ وہاب شامل ہیں جو ہمارے تجویز کردہ اوقات کار کے بارے میں فیصلہ کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کو آگاہ کریں گے جس کے بعدآئندہ 2 سے 3 روز بعد وزیراعلیٰ باضابطہ اعلان کریں گے۔

سراج قاسم تیلی نے حکومت سندھ سے کہا کہ کسی مارکیٹ کے دیر تک کھلنے کے خلاف پولیس براہ راست کاروائی کے بجائے کے سی سی آئی کی قیادت سے رابطہ کرے تاکہ متعلقہ ایسوسی ایشنز کے نمائندوں کو بلاکر اوقات کے فیصلے پر عملدرآمد یقینی بنایا جاسکے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟