ڈنمارک ، نقاب پر پابندی کیخلاف  شدید احتجاج

 ڈنمارک میں نقاب پر پابندی کیخلاف ہزاروں افراد نے شدید احتجاج کیا اور اسے مذہبی آزادی کی کھلی خلاف ورزی قرار دیا۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن میں مسلمان خواتین کے نقاب پر پابندی کے خلاف ہزاروں افراد نے ریلی نکالی اور احتجاجی مظاہرہ کیا۔ ریلی میں خواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ مظاہرین نے ماسک، برقعے پہن کر اور چہروں کو ڈھانپ کر حکومت کے خلاف احتجاج کیا۔ احتجاج کرنے والوں نے حکومت کے خلاف نعرے لگائے اور مغرب پر مسلمانوں سے امتیازی سلوک کا الزام عائد کیا۔ ریلی کے شرکا نے کہا کہ مغربی حکومتیں سیکولرازم کا پرچار کرتے ہوئے تمام مذاہب کے ماننے والوں کو آزادی دینے کا دعویٰ کرتی ہیں۔ لیکن مسلمانوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے، انہیں اپنے عقائد کے مطابق زندگی گزارنے کی اجازت نہیں اور مذہبی لباس تک پر پابندی عائد کردی جاتی ہے۔ مئی میں ڈنمارک کی حکومت نے نقاب پر پابندی کا قانون منظور کیا تھا جس کا اطلاق گزشتہ روز سے ہوگیا ہے۔  قانون کے تحت کوئی بھی خاتون عوامی مقامات پر نقاب نہیں کرسکتی اور پولیس اہلکاروں کو اختیار حاصل ہوگیا ہے کہ وہ سرعام کسی بھی خاتون کا نقاب اتروا سکتے ہیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟