19 جنوری 2019
تازہ ترین
ڈریکولا چیونٹی دنیا کا تیز رفتار جانور قرار

ماہرین نے ایک مشہور مگر بدنام چیونٹی کو دنیا کا تیز رفتار ترین جانور قرار دیا ہے لیکن اس کی برق رفتاری چیتے کی طرح دوڑنے میں نہیں بلکہ اپنے جبڑے کو بند کرنے میں پوشیدہ ہے۔برٹش رائل اوپن جرنل میں شائع تحقیق کے مطابق ڈریکولا چیونٹیاں افریقا میں عام پائی جاتی ہیں اور وہ 320 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے اپنا جبڑا بند کرتی ہیں جو انسانی آنکھ جھپکنے سے بھی 5 ہزار گنا تیز عمل ہے۔ ڈریکولا چیونٹیوں کی جسامت محض چند ملی میٹر ہوتی ہیں لیکن قدرت نے انہیں غیر معمولی تیز رفتار جبڑے دیئے ہیں۔

افریقا کے علاوہ ڈریکولا چیونٹیاں، آسٹریلیا اور جنوب مشرقی ایشیا میں بھی پائی جاتی ہیں۔ اپنے تیز جبڑوں کی وجہ سے ماہرین نے انہیں تیز ترین جانور قرار دیا ہے۔اپنے جبڑے کی قوت سے یہ ایک کن کھجورے اور دیگر کیڑوں کو بآسانی دو ٹکڑوں میں تقسیم کردیتی ہیں اور اپنے بچوں کو کھلانے کے لیے انہیں اپنے گھر تک لے جاتی ہیں۔ لڑائی کے دوران یہ دشمن چیونٹیوں کو دھکیل کر دور پھینکنے کے لیے بھی مشہور ہے جس میں ان کے جبڑے اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

یونیورسٹی آف الینوائے کے پروفیسر اینڈریو سوریز کے مطابق یہ حیرت انگیز جانور ہے جو دیگر کیڑوں کو اپنی اس صلاحیت سے حیران کرنے، دور بھگانے اور انہیں پرے دھکیلنے کا کام کرتے ہیں۔ یہ چیونٹی 23 مائیکرو سیکنڈ میں اپنے جبڑے قینچی کی طرح بند کرکے شکار کو کاٹ ڈالتی ہے۔

اس ضمن میں اسمتھ سونین اور دیگر جامعات کے سائنس دانوں نے تحقیق کی ہے اور انہوں نے ویڈیو بنا کر اس چیونٹی کی حیرت انگیز صلاحیت کا مشاہدہ کیا ہے


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟