24 ستمبر 2018
تازہ ترین
چینی صدر کا فوجی افسران کو  نجی کاروبار بند کرنیکا حکم

 چین کے صدر شی جن پنگ نے فوجی افسران کو اپنے نجی کاروبار رواں سال کے آخر تک مکمل بند کرنے کی ہدایت کردی۔ چینی میڈیا کے مطابق صدر شی جن پنگ کے احکامات فوج میں کرپشن ختم کرنے کی مہم کا حصہ ہیں اور وہ فوج کو عالمی معیار کی لڑاکا فورس بنانا چاہتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق چینی صدر نے کہا کہ فوجی افسران رئیل سٹیٹ پروجیکٹس، سکول اور پبلشنگ سروسز چلانا بند کر دیں اور فوج اپنی اصل پیشہ وارانہ ذمہ داریوں پر توجہ مرکوز کرے۔ گوبل ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق چین کا سینٹرل ملٹری کمیشن (سی ایم سی) 2018 کے اختتام تک اپنے سارے کاروبار بند کر دے گا ،جبکہ فوج کے 94 فیصد نجی منصوبے پہلے ہی ختم کئے جاچکے ہیں۔ ایک فوجی افسر نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ چینی فوج 15 شعبوں میں خدمات فراہم کرتی ہے، جن میں سے 12 کو ختم کیا جا چکا ہے۔ ان 15 شعبوں میں نرسری تعلیم، پریس اینڈ پبلیکیشنز، کلچر اور کھیل، کمیونیکیشن، پرسنل ٹریننگ، بیرکس پروجیکٹس، اسٹوریج اور ٹرانسپورٹیشن، رئیل سٹیٹ، میڈیکل کیئر اور سائنٹیفک ریسرچ وغیرہ شامل ہیں۔ واضح رہے کہ چینی فوج نے 70 کی دہائی میں کمرشل سرگرمیاں شروع کی تھیں۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟