21 ستمبر 2018
تازہ ترین
چینی آبی ذخیرے پر 37میل لمبی موٹر وے

 آج کی  ترقی پذیر دنیا میں  مسابقت کی جو دوڑ چلی ہوئی ہے   اس میں فن تعمیر کا شعبہ بطور خاص نمایاں نظر آتا ہے  اور  اس حوالے سے چین کی  ترقی مثالی  قرار دی جارہی ہے۔ اس  ترقی کی ایک مثال یہاں ایک آبی ذخیرے پر تعمیر ہونے والا پل ہے۔  اس کی  لمبائی 37میل بتائی جارہی ہے  او رجو حسین و خوبصورت ہونے کے علاوہ انتہائی قابل دید اور  قابل تقلید بھی ہے۔ تفصیلات کے مطابق اس آبی ذخیرے پر بنے ہوئے پل کے ذریعے جیانگږی کے  دو علاقوں  یونگ ږی یو اور  ووننگ کائونٹیز کو  ایک دوسرے کے ذریعے ملا دیا گیا ۔  عجیب و  غریب اور خوبصورت پل کی تعمیر کی  بنیاد  17زیر آب پلوں پر رکھی گئی ، جو آس پاس کی پہاڑیوں کے ساتھ بل کھاتی ہوئی چلتی ہے۔ آس پاس کے دوسرے چھوٹے جزیرے  بھی اس کے حسن میں اضافہ کرتے ہیں۔ تعریف تو یہ ہے کہ یہ ساری چیزیں اس خوبصورتی سے تعمیر کی گئی ہیں کہ سب ایک  دوسرے میں  مدغم نظر آتی ہیں، جیسے کسی پینٹنگ کے مختلف مناظر ایک دوسرے سے  منسلک نظر آتے ہیں۔ بہت سے لوگ اس پل سے  بطور ضرورت آمد ورفت کر رہے ہیں مگر ایک  بڑی تعداد  ان  لوگوں کی بھی ہے جو محض پل اور اطراف کا جائزہ لینے کیلئے اس شاہراہ پر سے گزر  رہے ہیں۔ یہ شاہراہ جس آبی ذخیرے پر بنی ہے  وہ ږیلین جھیل کے نام سے مشہور ہے اور لوشان پہاڑی علاقے کے قریب ہے۔  یہ  راستہ انتہائی حسین ہونے کے ساتھ حیران کن بھی ہے۔ جھیل کی چوڑائی 248مربع کلو میٹر بتائی جاتی ہے  اور  اس میں 8ارب مکعب میٹر پانی کی گنجائش ہے۔  اس علاقے میں آنے والے جھیل کے  صاف شفاف اور نیلے پانی کو  دیکھ کر حیران  و ششدر ہوجاتے ہیں۔ اس ہائی وے کی تعمیر 2011 میں شروع ہوئی تھی اور  چند ماہ قبل مکمل ہوئی۔ جس کے بعد سے اس پر  ٹریفک بحال کردی گئی ۔   واضح ہو کہ یہ جھیل لوشان پہاڑی  کے  قریب ہے  جسے یونیسکو  1996 میں عالمی ثقافتی ورثہ قرار دے چکی ہے  اور یہ  علاقہ صدیوں سے اپنے خوبصورت مناظر ،  تہذیب و  ثقافت کے حوالے سے مشہور ہے۔


عوامی سروے

سوال: کیا پی ٹی آئی انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کر پائے گی؟